ایس ایس ایل سی پری پریٹری امتحان کا کوئی پرچہ افشا نہیں ہوا: وزیرتعلیم سریش کمار

Source: S.O. News Service | Published on 24th February 2020, 12:04 PM | ریاستی خبریں |

بنگلورو،24/فروری(ایس او  نیوز) ریاستی وزیربرائے بنیادی وثانوی تعلیم ایس سریش کمارنے کہا کہ ایس ایس ایل سی پری پریٹری امتحانات کے پرچے افشا نہیں ہوئے،طلبہ کو خدشات اوراندیشوں میں مبتلاہونے کی ضرورت نہیں ہے۔اپنے فیس بک میں وزیرتعلیم نے اے ویڈیوپیغام کے ذریعہ وائرل افواہوں پروضاحت کرتے ہوئے کہا کہ ریاست میں 15ہزارہائی اسکول ہیں،2ہزارسے زائد ہائی اسکولوں میں میرمعلمین سنگھا نے ایس ایس ایل سی پری پریٹری امتحان منعقدکیا ہے،بقیہ اسکولوں میں ایس ایس ایل سی ایگزامنیشن بورڈکی جانب سے امتحانات منعقد کئے جارہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ امتحان سے تین دن قبل ہی سوالیہ پرچے متعلقہ اسکولوں میں پہنچادیئے گئے ہیں،اورانہیں اسکولوں میں جوابی پرچوں کی جانچ بھی ہوگی، اس بنیادپر بچوں کوسالانہ امتحان کے لیے تیارکیاجاتاہے،اس کو پیپر لیک یا افشاباورکرتے ہوئے طلبہ الجھن کا شکارنہ ہوں۔

خیال رہے کہ چہارشنبہ کو ہوئے ایس ایس ایل سی پری پریٹری امتحان کے انگریزی پرچہ افشا ہونے کی خبر تھی اوریہ حساب کا پرچہ افشاء ہونے کے ایک دن بعد ہوا تھا۔سرکلر میں کہا گیا ہے کہ امتحان کی کوئی بھی بدعنوانی جیسے سوالنامے کا افشاء ہونا، امتحان میں نقل کرنا، تصویریں لے کر سوشیل میڈیا پر گشت کرنا، امتحان گاہ میں چٹھیاں آگے بڑھانا،کرناٹک تعلیمی قانون کے تحت کارروائی کے مستحق ہے۔

کرناٹک ایجوکیشن ایکٹ کے مطابق اگردرج بالا واقعات ثابت ہوجائیں تو کسی بھی شخص کو پانچ سال کی سزائے قیداور 5 لاکھ روپیوں کا جرمانہ ہو سکتا ہے۔پرنسپلوں اور ڈپٹی ڈائرکٹروں کو اطلاع دی گئی ہے اورایسے واقعات کو روکنے کے لئے کہا گیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ امتحانات ٹائم ٹیبل کی مطابق ہوں گے۔کرناٹک کے اسو سی اینڈ مینجمنٹس آف پرائمری اینڈ سکینڈری اسکولس نے الزام لگایا ہے کہ امتحان کا پرچہ ہیلو ایپ کے ذریعہ افشاء ہو اہے۔ کے اے ایم ایس کے جنرل سکریٹری نے کہا کہ ایسا لگتا ہے آنے والے سائنس اور ہندی کے سوالنامے بھی ہلیو ایپ گشت کرائے جا رہے ہیں۔لیکن اس کی تصدیق نہیں ہوئی کہ آیا یہ حقیقی سوالنامے ہیں۔

ایک نظر اس پر بھی

نظام الدین کے اجتماع میں شریک حضرات جانچ کروالیں: اقلیتی بہبود کے سکریٹر اے بی ابراہیم کی اپیل

ریاستی محکمہ اقلیتی بہبود کے سکریٹر اے بی ابراہیم نے اپنے ایک اخباری بیان میں تبلیغی مرکز نظام الدین کے اجتماع میں مارچ کے دوران شرکت کرنے الوں سے اپیل کی ہے کہ وہ اپنے ضلع یا تعلقہ میں محکمہ صحت سے رابطہ کر کے اپنی جانچ کروالیں۔

کرناٹک سے درجنوں افراد نے مرکز نظام الدین کے اجتماع میں شرکت کی؛ کورونا سے ایک کی موت، باقی کی نشاندہی کر کے کورانٹائن، 13/ افراد میں وائرس نہ ہونے کی تصدیق

دہلی کے مرکز نظام الدین میں 10/ مارچ کو ہوئے اجتماع میں شریک افراد میں سے 24 کے کورونا وائرس کا شکار ہوجانے اور ان میں سے6/افراد کی موت کی خبروں کے بعد اس مرکز کے اجتماع میں شرکت کے بعد اپنے اپنے مقامات پر لوٹنے والے افراد کی نشاندہی کر کے انہیں کورانٹائن کرنے کا سلسلہ شروع ہوا ہے۔

بھٹکل: کوروناوائرس کی روک تھام اور لاک ڈاون میں مزید سختی برتنے اب اُڑائے جائیں گے ڈرون کیمرے؛ گلی کوچوں میں آوارہ گردی کرنے والے ہوشیار

صرف کرناٹک ہی نہیں بلکہ ملک بھر میں بھٹکل کو لے کر تشویش پائی جارہی ہے کیونکہ  اتنے چھوٹے سے علاقہ میں  کورونا وائرس سے متاثرہ لوگوں کی تعداد  بڑھتی جارہی ہے۔چونکہ یہاں کے اکثر لوگ بیرون ممالک میں رہتے ہیں، اس لئے یہ وائرس دوسرے ملکوں سے یہاں آرہی ہے۔  ہمیں دہلی سے فون بھی ...