ایس ایس ایل سی پری پریٹری امتحان کا کوئی پرچہ افشا نہیں ہوا: وزیرتعلیم سریش کمار

Source: S.O. News Service | Published on 24th February 2020, 12:04 PM | ریاستی خبریں |

بنگلورو،24/فروری(ایس او  نیوز) ریاستی وزیربرائے بنیادی وثانوی تعلیم ایس سریش کمارنے کہا کہ ایس ایس ایل سی پری پریٹری امتحانات کے پرچے افشا نہیں ہوئے،طلبہ کو خدشات اوراندیشوں میں مبتلاہونے کی ضرورت نہیں ہے۔اپنے فیس بک میں وزیرتعلیم نے اے ویڈیوپیغام کے ذریعہ وائرل افواہوں پروضاحت کرتے ہوئے کہا کہ ریاست میں 15ہزارہائی اسکول ہیں،2ہزارسے زائد ہائی اسکولوں میں میرمعلمین سنگھا نے ایس ایس ایل سی پری پریٹری امتحان منعقدکیا ہے،بقیہ اسکولوں میں ایس ایس ایل سی ایگزامنیشن بورڈکی جانب سے امتحانات منعقد کئے جارہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ امتحان سے تین دن قبل ہی سوالیہ پرچے متعلقہ اسکولوں میں پہنچادیئے گئے ہیں،اورانہیں اسکولوں میں جوابی پرچوں کی جانچ بھی ہوگی، اس بنیادپر بچوں کوسالانہ امتحان کے لیے تیارکیاجاتاہے،اس کو پیپر لیک یا افشاباورکرتے ہوئے طلبہ الجھن کا شکارنہ ہوں۔

خیال رہے کہ چہارشنبہ کو ہوئے ایس ایس ایل سی پری پریٹری امتحان کے انگریزی پرچہ افشا ہونے کی خبر تھی اوریہ حساب کا پرچہ افشاء ہونے کے ایک دن بعد ہوا تھا۔سرکلر میں کہا گیا ہے کہ امتحان کی کوئی بھی بدعنوانی جیسے سوالنامے کا افشاء ہونا، امتحان میں نقل کرنا، تصویریں لے کر سوشیل میڈیا پر گشت کرنا، امتحان گاہ میں چٹھیاں آگے بڑھانا،کرناٹک تعلیمی قانون کے تحت کارروائی کے مستحق ہے۔

کرناٹک ایجوکیشن ایکٹ کے مطابق اگردرج بالا واقعات ثابت ہوجائیں تو کسی بھی شخص کو پانچ سال کی سزائے قیداور 5 لاکھ روپیوں کا جرمانہ ہو سکتا ہے۔پرنسپلوں اور ڈپٹی ڈائرکٹروں کو اطلاع دی گئی ہے اورایسے واقعات کو روکنے کے لئے کہا گیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ امتحانات ٹائم ٹیبل کی مطابق ہوں گے۔کرناٹک کے اسو سی اینڈ مینجمنٹس آف پرائمری اینڈ سکینڈری اسکولس نے الزام لگایا ہے کہ امتحان کا پرچہ ہیلو ایپ کے ذریعہ افشاء ہو اہے۔ کے اے ایم ایس کے جنرل سکریٹری نے کہا کہ ایسا لگتا ہے آنے والے سائنس اور ہندی کے سوالنامے بھی ہلیو ایپ گشت کرائے جا رہے ہیں۔لیکن اس کی تصدیق نہیں ہوئی کہ آیا یہ حقیقی سوالنامے ہیں۔

ایک نظر اس پر بھی

کرناٹک میں عالمی وباء سے ایک ہی دن 54 ؍افراد لقمہ اجل، 24 گھنٹوں کے دوران بنگلورو میں 1148 سمیت ریاست بھر میں 2062 پوزیٹیو کیس

عالمی وباء کو رونا وائرس کا قہر ہنوز جاری ہے ریاست میں ایک ہی دن کورونا وائرس کے 2062 کیس درج ہوئے ہیں۔ اب تک کی یہ ریکارڈ تعداد ہے۔ گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران کووڈ۔19 کی زد میں آکر بنگلورو میں 13 سمیت ریاست بھر 54 ؍افراد لقمہ اجل بن گئے ہیں۔

اُلال کے رکن اسمبلی یوٹی قادر سے ایس ڈی پی آئی کا مطالبہ

جنوبی کینرا بنٹوال تعلقہ کے سجی پانڈو دیہات میں ہر سال بارش کے موسم میں گزشتہ 30 برسوں سے لوگوں کو ہمیشہ  پریشانی کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ یہ علاقہ اُلال کے رکن اسمبلی یوٹی قادر کے حلقہ میں آتا ہے اور یہاں مسلمانوں کی کثیر آباد ی ہے۔

منگلورو۔کاسرگوڈ سرحد پر مسافروں کیلئے پریشانی

ریاست میں گزشتہ ماہ اپریل سے ہی کورونا وائرس پھیلنے کے نتیجہ میں کیرالہ ۔ کرناٹک کی سرحد پر واقع کاسرگوڈ اور منگلورو کے درمیان روازنہ ملازمت اور تعلیم کے سلسلہ میں آنے جانے والے لوگوں کیلئے ہر دن نت نئی پریشانیوں کا سامنا کرناپڑرہا ہے۔

کرناٹک میں کووڈ۔19 کمیونٹی پھیلاؤ کا کوئی امکان نہیں، مرکزی ٹیم کا چیف منسٹر و عہدیداروں کے ساتھ تبادلہ خیال؛ سری راملو کی پریس کانفرنس

کرناٹک نے منگل کے روز مرکز ی ٹیم کو بتایا کہ ریاست میں کووڈ۔19 کے کمیونٹی پھیلاؤ کا کوئی امکان نہیں ہے۔ریاستی وزیر صحت و خاندانی بہبود بی سری راملو نے میڈیا سے کہا ’’ ہم نے یہ واضح کردیا ہے کہ یہاں کمیونٹی پھیلاؤ کا امکان نہیں ہے۔ ہم ، دوسرے اور تیسرے مرحلہ کے درمیان ہیں‘‘۔

کرناٹک میں کورونا کا قہر جاری؛ پھر 1498 نئے معاملات، صرف بنگلور سے ہی سامنے آئے 800 پوزیٹیو

کرناٹک میں کورونا کا قہر جاری ہے اور ریاست  میں روز بروز کورونا کے معاملات میں اضافہ دیکھا جارہا ہے، ریاست کی راجدھانی اس وقت  کورونا کا ہاٹ اسپاٹ بنا ہوا ہے جہاں ہر روز  سب سے زیادہ معاملات درج کئے جارہے ہیں۔ آج منگل کو پھر ایک بار کورونا کے سب سے زیادہ معاملات بنگلور سے ہی ...

کورونا: ہندوستان میں ’کمیونٹی اسپریڈ‘ کا خطرہ، اموات کی تعداد 20 ہزار سے زائد

  ہندوستان میں کورونا انفیکشن کے بڑھتے معاملوں کے درمیان کمیونٹی اسپریڈ یعنی طبقاتی پھیلاؤ کا  اندیشہ بڑھتا نظر آرہا ہے۔ بالخصوص کرناٹک  میں کورونا انفیکشن کے کمیونٹی اسپریڈ کا اندیشہ ظاہر کیا جارہا ہے ۔ کرناٹک کے علاوہ گوا، پنجاب و مغربی بنگال کے نئے ہاٹ اسپاٹ بننے کے ...