مرسی مشن کی کورونا متاثرین کیلئے خدمات کے 6 ماہ مکمل، ضرورت مندوں کی مدد کے لئے جوش کے ساتھ سلیقہ مندی کے امتزاج کی انوکھی مثال

Source: S.O. News Service | Published on 29th October 2020, 10:43 AM | ریاستی خبریں |

بنگلورو،29؍اکتوبر(ایس او نیوز) شہر بنگلورو میں جب سے کورونا وائرس کے واقعات نے سر اٹھانا شروع کیا، اس وقت سے ہی شہر کے نوجوانوں کی ٹیم ضرورت مندوں کی مختلف زاویوں سے ہر ممکن مدد کرنے کے لئے متحرک رہی ہے اور مرسی مشن کے بینر تلے20سے زائد ادارو ں کا ایک وفاق قائم کر کے اس ٹیم نے کورونا لاک ڈاؤن کے ذریعہ اپنی خدمات کا آغاز شہر کے معروف ڈاکٹر طٰہٰ متین کی نگرانی میں شروع کیا اور رفتہ رفتہ ان نوجوانوں نے اپنے مشن کو مرسی مشن کا نام دے کر اپنی خدمات کے دائرے کو اس قدر وسعت دی ہے کہ ہر حلقہ سے ان خدمات کی پذیرائی ہو رہی ہے۔

مرسی مشن نے کووِڈ کے خلاف جنگ کے میدان میں مختلف اہم ترین شعبوں کو چنا اور ہر شعبہ میں اس ٹیم کے نوجوان کام میں اس قدر منہمک ہو گئے کہ کامیابی حاصل کرنے تک اپنی جستجو کو جاری رکھا۔ چہارشنبہ کے روز شہر کے ساؤتھ اینڈ سرکل میں بنگلورو ہاسپٹل کے عقب میں واقع سی ایم اے بوائزہاسٹل کی عمارت جہاں مرسی مشن نے اپنی خدمات کا ہب قائم کیا ہے وہاں کا سابق مرکزی وزیر و سینئر کانگریس رہنما ڈاکٹر کے رحمن خان نے دورہ کیا اور وہ مختلف شعبوں میں مرسی مشن کی طرف سے جاری خدمات سے کافی متاثر ہوئے اور انہوں نے ان خدمات کوایک مثال قرار دیا۔

ان خدمات کے بارے میں مرسی مشن کے اس ہب میں کوآرڈی نیٹر کے طور پر مسلسل خدمات میں لگے محمد عمر جو اسمائل فاؤنڈیشن کے چیر مین بھی ہیں نے بتایا کہ خدمات کے ہر شعبے کی آن لائن اور آف لائن نگرانی کیلئے مشن کی طرف سے ایک ڈیش بورڈ اپنے مرکز میں تیار کیا گیا ہے، جہاں کسی بھی وقت ہر شعبہ کی طرف سے جاری خدمات کی تفصیلا ت آن لائن دستیاب رہتی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کورونا سے متاثر ہونے والے افراد کو اسپتال تک پہنچانے کیلئے ایمبولنس خدمات، اسپتالوں میں مریضوں کو بستر مہیا کروانے کی خدمات، اگر کورونا وائرس کے سبب موت واقع ہو جائے تو اس مرحلہ میں مرسی اینجلس کی طرف سے تدفین اور آخری رسومات کیلئے انتظامات وغیرہ کئے جا رہے ہیں۔

محمد عمر نے بتایا کہ ان خدمات کی فراہمی کے لئے مشن کے مرکز میں ہمہ وقت سات ایمبولنس متعین رکھے گئے ہیں۔مریض کو اگر آکسیجن کی ضرورت پڑے تو اس کی فراہمی کیلئے ہیلپ لائن قائم ہے اور اس کے ذریعہ اب تک 2500سے زائد آکسیجن سلنڈرس 1050سے زیادہ مریضوں کو پہنچائے گئے ہیں۔اس کے علاوہ کورونا وائرس سے جنگ میں لگے ڈاکٹر س کو مشن کی طر ف سے ہر ہفتہ ہدیہ کے طور پر اسنیکس اور جوس وغیرہ پر مشتمل ایک پیکٹ اسپتال روانہ کیا جاتا ہے، اس کے علاوہ شہر کے مختلف اسپتالوں میں کام کرنے والے ڈاکٹر س کور روزانہ کھانا مشن کے کچن کی طرف سے فراہم کیا جاتا ہے۔

اس کچن سے ڈاکٹرس کے علاوہ ایچ بی ایس اسپتال میں زیر علاج کورونا مریضوں کیلئے بھی کھانا فراہم کیا جاتا ہے۔ مرسی مشن کی طرف سے کھانے کی فراہمی کا سلسلہ در اصل لاک ڈاؤن کے دوران شرمک ٹرینوں کے ذریعہ وطن لوٹنے والے مزدوروں کیلئے کیا گیا تھا، جس کو نہ صرف مقامی بلکہ بین الاقوامی مقبولیت حاصل ہوئی۔ اس کے بعد مرسی مشن نے اس خد مت کو مسلسل جاری رکھنے کے عز م کے ساتھ اپنا مرکز قائم کیا۔ سنٹرل مسلم اسوسی ایشن کے بوائز ہاسٹل کی عمارت کو اس مشن کا ہیڈ کوارٹر بنایا گیا۔

سی ایم اے کے جنرل سکریٹری ڈاکٹر ظہیر الدین، مقصود علی خان اور ریاض احمد کے علاوہ اس ادارے کے دیگر ممبران کے مکمل تعاون اور حوصلہ افزائی کے سبب مرسی مشن کی طرف سے اس عمارت میں خدمات کا سلسلہ جاری رکھا گیا ہے۔اس مشن میں جملہ 350تا400افراد جڑے ہوئے ہیں جن میں سے 250باقاعدہ ملازمت پر ہیں اور 100نوجوان رضاکارانہ طور پر خدمات انجام دے رہے ہیں۔

اس عمارت میں تمام کی رہنمائی کیلئے ایک کال سنٹر قائم کیا گیا ہے اور اس کیلئے الگ الگ ہیلپ لائن نمبر بھی دئیے گئے ہیں۔کسی بھی ضرورت مند کی طرف سے خدمات کے لئے جیسے ہی رابطہ کیا جاتا ہے کال سینٹر کی طرف سے ڈیش بورڈ کی مدد سے متعلقہ شعبہ کی نشاندہی کر کے اسے فی الفور مطلع کیا جاتا ہے، تاکہ ضرورت مند تک امداد پہنچے۔ مشن کی طرف سے خدمات کے چھ ماہ پورے ہو چکے ہیں اور اب تک بھی نوجوانوں کی ٹیم پورے جوش و خرو ش کے ساتھ خدمات میں لگی ہوئی ہے۔ ان کی خدمات میں ایک او ر انوکھی بات یہ بھی نظر آئی ہے کہ خدمات کیلئے جوش کے ساتھ پوری سلیقہ مندی کو بھی ملحوظ رکھا گیا ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

اوقاف کے ساتھ کھلواڑ کرنے والوں کے خلاف سخت کارروائی کی جائے:تنویر سیٹھ

وقف کی املاک اللہ کی امانت ہے۔اس کو نہ فروخت کیا جاسکتا ہے اور نہ ہی گروی رکھنے کی گنجائش ہے۔البتہ اوقافی املاک سے ہونے والی آمدنی کا استعمال ملت کی فلاح و بہبودی کے لئے کیا جاسکتا ہے۔لیکن اس کے برعکس لوگ وقف کی املاک بینکوں میں گروی رکھ کر کروڑو ں روپئے قرضہ لے رہے ہیں۔ یہ قرضہ ...

قدآور کانگریس قائد، احمد پٹیل کو ریاستی کانگریسیوں کا خراج عقیدت

کانگریس کے قدآور قائد مسٹر احمد پٹیل کی رحلت پر آج کے پی سی سی دفتر میں کے پی سی سی صدر ڈی کے شیوکمار کی صدارت میں ایک تعزیتی اجلاس منعقد ہوا جس میں احمد پٹیل کی تصویر پر پھول چڑھا کر انہیں زبردست خراج عقیدت پیش کی گئی۔

کابینہ میں توسیع کا مسئلہ بی جے پی میں شدید اختلاف کا سبب، پرانے بی جے پی ممبران اور پارٹی بدلنے والوں میں اقتدار کے لئے رسہ کشی

ایسے مرحلے میں جبکہ وزیر اعلیٰ بی ایس ایڈی یورپا کی طرف سے ریاستی کابینہ میں توسیع کرنے کے لئے بی جے پی اعلیٰ کمان کی سطح پر کی گئی کوشش ناکام نظر آ رہی ہے بی جے پی میں وزارت کے دعویداروں کی بے چینی میں بھی اضافہ ہو تا جا رہا ہے اور اقتدار کا حصہ بننے کے لئے بے تاب کانگریس چھوڑ کر ...

جے ڈی ایس رکن کی حیثیت سے ہی میعاد مکمل کروں گا: جی ٹی دیوے گوڑا

یہاں میسورو تعلقہ کے ادبور میں مختلف ترقیاتی کاموں کی سنگ بنیاد تقریب میں شرکت کرنے کے بعد نامہ نگاروں سے بات کرتے ہوئے میسور کے حلقہ چامنڈیشوری کے جنتا دل (یس) رکن اسمبلی جی ٹی دیوے گوڑا جنہوں نے کئی ماہ سے جنتا دل (ایس) سے دوری بنائے رکھی ہے،

کرناٹک میں گردابی طوفان ”نیوار“سے متعلق ریڈ الرٹ

گردابی طوفان ”نیوار“کے بدھ کے روز تمل ناڈو اور پڈوچیری سے گزرنے کے پیش کرناٹک میں ریڈ الرٹ جاری کیا گیا ہے۔وزیر اعلیٰ بی ایس ایڈی یورپا نے آج یہاں میڈیا سے بات چیت میں کہا کہ متعلقہ عہدیداروں کو کسی بھی صورتحال کے لئے تیار رہنے کو کہا گیا ہے۔

انکولہ ہوائی اڈہ پروجیکٹ: مقامی عوام کے ساتھ میٹنگ میں پروجیکٹ پرسخت  اعتراض؛ میٹنگ کا کیابائیکاٹ 

انکولہ میں مجوزہ شہری ہوائی اڈے کی تعمیر کے سلسلے میں درپیش تحویل اراضی اور دیگر مسائل پر مقامی عوام کے ساتھ گفتگو کرنے اور ان کا احوال سننے کےلئے  ایڈیشنل ڈپٹی کمشنرایچ کے کرشن مورتی نے بیلے کیری میں  ایک میٹنگ منعقد کی۔