ایمس میں دستیاب طبی سہولتیں ریاست کے سرکاری اسپتالوں میں مہیا کرائی جائیں گی:سری راملو

Source: S.O. News Service | Published on 7th September 2019, 11:01 AM | ریاستی خبریں |

بنگلورو،7؍ستمبر(ایس او نیوز) ریاست میں ڈاکٹروں کے 1500خالی عہدے بہت جلد پر کئے جائیں گے۔ یہ بات ریاستی وزیر محنت و خاندانی بہبود سری راملو نے کہی۔ ودھان سودھا کی تیسری منزل پر واقع اپنے دفتر میں پوجا پاٹ کے ساتھ داخل ہونے کے بعد اخباری نمائندوں سے بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ریاست کے سرکاری اسپتالوں کے انتظام و انصرام میں سدھار لایا جائے گا۔ سرکاری اسپتالوں میں ڈاکٹروں کی قلت نہ ہو، اس بات کو یقینی بنایا جائے گا۔ڈاکٹروں کے خالی عہدوں پر ایم بی بی ایس ڈاکٹروں کا تقرر کیاجائے گا۔ اس کے علاوہ ٹیکنیشینز کے تمام عہدے پر کرنے کے لئے اقدامات کئے جائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ انہیں معلوم ہوا ہے کہ ریاست میں بیشتر سرکاری اسپتالوں کی حالت ٹھیک نہیں ہے، اس سلسلے میں کئی شکایات موصول ہوئی ہیں۔سرکاری اسپتالوں میں پائی جانے والی خامیوں کو درست کرتے ہوئے اسپتالوں کے انتظام و انصرام میں سدھار لایا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ 2009میں جب وہ وزیر صحت تھے۔ انہوں نے ریاست میں 108ایمبولینس خدمات کی شروعات کی تھی، ریاست میں 108ایمبولینس کی خدمات آج بھی جاری ہیں۔ اسے مزید بہتر بنایا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ سرکاری اسپتالوں کا معیار بہتر بنانے کی طرف زیادہ توجہ دی جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ سرکاری اسپتالوں میں جانچ کے مراکز (لیاب) کی حالت درست نہیں ہے۔ ریاست کے سرکاری اسپتالوں میں دہلی کے آل انڈیا انسٹی ٹیوٹ آف میڈیکل سائنس(ایمس) کے طرز پر لیاب کی سہولتیں مہیا کرائی جائیں گی۔ انہوں نے کہا کہ ایمس میں خون کے نمونوں کی جانچ کیلئے جدید ٹکنالوجی کا استعمال کیا جاتا ہے۔ خون کے نمونے کی 16ٹسٹ کے ذریعہ جانچ کی جاتی ہے۔وزیر صحت نے کہا کہ جب وہ رکن پارلیمان تھے،انہیں ایک بات کاتجربہ ہوا۔ ایمس میں خون کے نمونے کی جانچ کے ذریعہ جسم کی تمام بیماریوں کا پتہ لگایا جاتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ خون کی جانچ کیلئے ایمس میں جو مشین اور ٹیکنالوجی استعمال کی جاتی ہے اسے ریاست کے سرکاری اسپتالوں میں مہیا کرانے کے بارے میں غور کیا جارہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ریاست میں سرکاری اسپتالوں اور سرکاری ڈاکٹروں کے کئی مسائل ہیں انہیں جلداز جلد حل کرنے کیلئے اقدامات کئے جائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ سابقہ حکومتوں کے دور اقتدار میں سرکاری اسپتالوں میں دوائیوں کی خریدی کے معاملے میں کئی بدعنوانیاں سامنے آئی تھیں۔ ان تمام معاملوں کی جانچ کے لئے اقدامات کئے جائیں گے۔

ایک نظر اس پر بھی

سولیا: پہاڑی مہم جو ٹیم کا ایک رکن ہوگیا لاپتہ۔قریبی جنگلات میں جاری ہے تلاشی مہم 

بنگلورو کی ایک کمپنی کے ملازمین کی ٹیم سبرامنیا میں واقع پہاڑی ’کمارا پروتا‘ کو سر کرنے کی مہم پر نکلی تھی۔ لیکن واپسی کے وقت ٹیم کا ایک رکن جنگلات میں اچانک لاپتہ ہوگیا ہے، جس کی شناخت سنتوش (25سال) کے طور پر کی گئی ہے۔

سیلاب متاثرین سے وزیر اعظم کو کوئی ہمدردی نہیں منڈیا میں منعقدہ پرتیبھا پرسکار کے جلسہ سے سابق وزیر اعلیٰ سدارامیا کا خطاب

ملک کے وزیر اعظم کو سیلاب متاثرین سے کوئی ہمدردی نہیں ہے۔ پچھلے ایک سو سال سے کبھی نہ دیکھا گیا سیلاب ریاست میں آیا ہے اور ہزاروں افراد کی زندگی تباہ ہوچکی ہے۔

آئی ایم اے فراڈ کیس کا ایک نیا موڑ، قدآور شخصیات راڈر پر، منصور خان نے سابق وزیر دیش پانڈے پر 5/کروڑ روپئے طلب کرنے کا الزام لگایا 

آئی ایم اے فراڈ کیس دن بدن نیا زاویہ اختیار کرتا جارہا ہے، اس کیس کے کلیدی ملزم اور آئی ایم اے کے سربراہ منصور خان نے دعویٰ کیا ہے کہ سابق ریاستی وزیر اور سینئر کانگریس لیڈر آر وی دیش پانڈے نے آئی ایم اے کو 600کروڑ روپئے کا قرضہ حاصل کرنے کے لئے نو آبجیکشن سرٹی فکیٹ (این او سی) جاری ...