منگلورو : ملالی مسجد کے مقام پر دیوی موجود ہے - کیرالہ کے نجومی کا دعویٰ - ضلع انتظامیہ نے نافذ کیے امتناعی احکامات

Source: S.O. News Service | Published on 25th May 2022, 5:24 PM | ساحلی خبریں | ریاستی خبریں |

منگلورو 25 / مئی  (ایس او نیوز) ملالی میں واقع السید عبداللہ جامع مسجد میں تجدید نو کے دوران مندر کے باقیات پائے جانے کا دعویٰ کرتے ہوئے ہندو شدت پسند تنظیموں نے جو تنازعہ کھڑا کیا ہے اس میں اب مزید پیچیدگی پیدا ہوگئی ہے ، کیونکہ ہندو مذہبی عقیدہ کے مطابق کیرالہ سے بلائے گئے علم زائچہ کے ماہر اور نجومی دَئیوجنا جی پی گوپال کرشنا پانیکر نے "تامبولا پرشنے " کی رسم ادا کرنے کے بعد کہا ہے کہ ملالی کی اس عمارت (مسجد) میں ایک ہزار سال  سے دیوی موجود ہے ۔ اور وہ عمارت سنیاسیوں کی تعمیر کی  ہوئی ہے ۔ نجومی نے مزید کہا ہے کہ صرف "تامبولا پرشنے" کی رسم  سے وہاں پر دیوی کی موجودگی اصلیت طے نہیں کی جا سکتی بلکہ اس کے لئے "اشٹھ منگلا پرشنے" کی رسم کے ذریعے اس کی پوری حقیقت معلوم کی جا سکے گی ۔ 

ہندو مذہبی عقائد کے تحت پیچیدہ مسائل میں "تامبولا اور اشٹھ منگلا پرشنے" کی رسمیں ادا کرکے ماہر نجومیوں سے سوالات کے جواب طلب کیے جاتے ہیں ۔ "تامبولا " میں عام طور پر چبائے جانے والے پان کا استعمال ہوتا ہے جبکہ "اشٹھ منگلا" میں مقدس سمجھی جانے والی آٹھ چیزوں کا استعمال ہوتا ہے جس میں گھی کا چراغ ، آئینہ ، سونا، دودھ ، دہی ، پھل ، کتاب اور سفید کپڑا شامل ہے ۔ اور بتایا جاتا ہے کہ اس میں لاکھوں روپے کا خرچ آتا ہے ۔

وشوا ہندو پریشد اور بجرنگ دل جیسی شدت پسند ہندو تنظیموں نے پہلے ہی اعلان کیا تھا کہ وہ 25 مئی کو نجومی سے تامبولا پرشنے کی رسم ادا کریں گے اور اس کے بعد  اشٹھ منگلا پرشنے کی رسم کے ذریعے منتازع مقام پر مندر ہونے کا ثبوت پوچھیں گے اور اس کا جواب ملنے کے بعد اگلی کارروائی کا لائحہ عمل طے کریں گے ۔ 

دوسری طرف ضلع انتظامیہ نے معاملہ عدالت میں زیر سماعت ہونے اور متنازع مقام پر جوں کی توں حالت (اسٹیٹس کوو) برقرار رکھنے کے عدالتی حکم کا حوالہ دیتے ہوئے کل کہا تھا کہ مذہبی رسوم ادا کرنے کی بات اپنی جگہ ہے مگر تنازعہ حل کرنے کے لئے عدالت میں دستاویزات کو اہمیت دی جائے گی ۔ اس کے علاوہ ہندو تنظمیون کی سرگرمی کو دیکھتے ہوئے ضلع ڈپٹی کمشنر نے  ملالی جامع مسجد کے اطراف 500 میٹر کے احاطہ میں دفعہ 144 کے تحت امتناعی احکامات نافذ کیے ہیں اور عوام سے امن و امان برقرار رکھنے کی اپیل کی ہے ۔

Related News:

منگلورو: ملالی مسجد تنازعہ - ہندو تنظمیں کریں گی "اشٹھ / تامبولا پرشنا" رسوم -ڈپٹی کمشنر نے کہا : قانونی دستاویزات ہونگے سب سے اہم

ایک نظر اس پر بھی

موڈ بیدری میں انجینئرنگ کالج کمپاونڈ کی دیوار گرنے سے 4 کاروں کو نقصان 

میجارو گرام پنچایت حدود میں واقع مینگلورو انسٹی ٹیوٹ آف ٹیکنالوجی اینڈ انجینئرنگ (مائٹ) کی کمپاونڈ وال بھاری برسات کی وجہ سے گر گئی جس کے نتیجہ میں حالانکہ کسی کا جانی نقصان نہیں ہوا مگر وہاں پارک کی گئی طلبہ اور والدین کی 4 کاروں کو نقصان پہنچا ۔ 

اتر کنڑا ضلع میں موسلادھار بارش جاری : یلاپور میں بجلی لائن درستی کے دوران ایک شخص فوت ،درخت اور بجلی کے کھمبے گرنےسے نقصانات

اترکنڑا ضلع میں منگل کو بھی موسلادھار بارش جاری رہی۔ کاروار، بھٹکل ، سرسی ، یلاپور سمیت کئی تعلقہ جات میں رک رک کر طوفانی ہواؤں کےساتھ تیز رفتار بارش برستی رہی ہے۔ سڑکیں، قومی شاہراہیں ، گلی محلوں میں بارش کا پانی جمع ہونےسے چھوٹے چھوٹے تالاب بن گئے ہیں ، بجلی کے کھمبے اور ...

بھٹکل سمیت اُترکنڑا میں موسلادھار بارش کا سلسلہ جاری؛ کل بدھ کو بھی اسکولوں اور کالجوں میں چھٹی کا اعلان

بھٹکل سمیت ضلع اُترکنڑا میں موسلادھار بارش کا سلسلہ جاری ہے جسے  دیکھتے ہوئے اُترکنڑا  ڈپٹی کمشنر ملئے مہیلن نے کل بدھ کو بھی پیشگی حفاظتی انتظامات کے تحت  اسکول اور کالجس سمیت تمام تعلیمی اداروں میں چھٹی کا اعلان کیا ہے۔ بھٹکل کی طرح ہوناور، کمٹہ ، انکولہ اور کاروار میں ...

بنگلور میں کانگریس لیڈر ضمیراحمد خان کے مکان اور دفتر پر اے سی بی کے دھاوے؛ کانگریس نے کہا؛ سب انسپکٹرس بھرتی اسکیم سے عوام کی توجہ ہٹانے کی کوشش

کرناٹک اینٹی کرپشن بیوروکے عہدیداروں نے منگل کے دن غیرمتناسب اثاثوں کی انفورسمنٹ ڈائرکٹوریٹ(ای ڈی) رپورٹ پر کانگریس رکن اسمبلی بی زیڈ ضمیر احمد خان کے 5 مقامات پر بہ یک وقت دھاوے کئے۔

بھٹکل: ساحلی کرناٹکا کے علاوہ دیگر 6 اضلاع میں بھی موسلا دھار بارش  -طالبہ سمیت 2 ہلاک ۔ ندیاں پار کر گئیں خطرے کا نشان ؛ کاروار کے قریب انموڈ گھاٹ پر چٹان کھسک گئی

ریاست کے ساحلی علاقہ کے شمالی کینرا، اُڈپی اور  جنوبی کینرا کے علاوہ کوڈاگو، چکمگلورو اور شیموگہ جیسے اضلاع  زبردست بارش کی زد میں آ گئے ہیں ۔  جس کے نتیجے میں کئی علاقوں سے نقصانات کی خبریں بھی موصول ہورہی ہیں، جبکہ  بارش کے نتیجے میں اب تک  دو لوگوں کی موت واقع ہوئی ہے۔

کولار میں شانِ رسالتؐ میں گستاخی اور قرآن شریف کی بے حرمتی کے واقعے پر بھٹکل تنظیم کی سخت مذمت؛ خاطیوں کے خلاف سخت کاروائی کا مطالبہ

کولار میں  جمعہ کے روز اُدے پور واقعے  کو لے کر منعقدہ  احتجاج  میں  ہندو تنظیموں کی طرف سے  پھر  ایک بار شان رسالتؐ میں گستاخی اور قرآن شریف کی کھلے عام بے حرمتی کا معاملہ سامنے آنے پر مجلس اصلاح و تنظیم بھٹکل نے سخت تشویش کا اظہار کیا ہے اور نوپور شرما  کی حمایت کرتے ہوئے  کی ...