ایک سال مکمل ہونے سے پہلے ہی مینگلور ڈپٹی کمشنر کے تبادلے پر رکن اسمبلی یوٹی قادر نے اُٹھائے سوال؛ جان سے مارنے کی دھمکی کے فوری بعد تبادلہ کرنے پر مانگا جواب

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 31st July 2020, 12:36 AM | ساحلی خبریں | ریاستی خبریں |

مینگلور 30جولائی (ایس او نیوز) مینگلور کے رکن اسمبلی یوٹی قادر نے سرکار سے جواب مانگا ہے کہ دکشن کنڑا کی ڈپٹی کمشنر سندھو بی روپیش کے اچانک تبادلے کی وجہ بتائی جائے حالانکہ وہ مینگلور میں چارج لے کر ایک سال  بھی نہیں ہوئے تھے۔

یہاں جمعرات کو اخبارنویسوں سے گفتگو کرتے ہوئے  یوٹی قادر نے کہا کہسندھو بی روپیش کے   تبادلہ کو ڈسٹرکٹ انچارج وزیر ایک معمول کی کاروارئی قرار دے رہے ہیں لیکن  میں پوچھنا چاہتا ہوں کہ  ایک سال کے اندر دکشن کنڑا میں دو دو ڈپٹی کمشنروں کے تبادلے کیا معمول کی کاروائی ہیں ؟ یوٹی قادر نے کہا کہ  چھ ماہ  میں کسی ڈپٹی کمشنر کے تبادلے کا کوئی  قانون نہیں ہے ڈپٹی کمشنر کو کم از کم ایک سال سے دو سال تک ایک  ضلع میں کام کرنا ہوتا ہے، انہوں نے حکومت سے  جواب  دینے کا اصرا کرتے ہوئے کہا   کہ  سندھو بی روپیش کو یہاں کام کرنے کیوں نہیں دیا گیا، اگر اس طرح ایک سال بھی کسی کو کام نہیں کرنے نہیں دیا جائے گا تو ضلع کی ترقی کیسے آگے بڑھے گی ؟ یوٹی قادر نے یہ بھی کہا کہ  جب سندھو بی روپیش کو  جان سے مارنے کی دھمکی دی گئی تو کسی بی جے پی ارکان اسمبلی یا ارکان پارلیمان یہاں تک کہ ڈسٹرکٹ انچارج وزیر  کی طرف سے بھی مذمت کا ایک لفظ  نہیں نکلا، پولس نے خود سخت جدوجہد کرتے ہوئے  ملزم کے خلاف معاملہ درج کرتے ہوئے اُسے گرفتار کیا اور اپنی ڈیوٹی بخوبی نبھائی۔ یوٹی قادر نے سوال کیا کہ  ملزم کی گرفتاری کے بعد اب بی جے پی کیوں گرفتاری کا سہرا خود کے سر پر باندھنے کی کوشش کررہی ہے ؟

یوٹی قادر نے کہا کہ جب  سندھو بی روپیش کو مارنے کی دھمکی دی گئی تو ایک بھی  بی جےپی  لیڈرسامنے نہیں آیا اور اپنے ڈپٹی کمشنر کا  حوصلہ بڑھانے  اور اُس کی ہمت بندھنے  کی کوشش نہیں کی اور نہ ہی اُس کے حق میں  ایک  بیان دیا۔ قادر نے  کہا کہ ہمارے (کانگریس) کے دور حکومت میں چھ چھ ماہ میں ڈی سی یا کسی  آئی اے ایس آفسرس  کے تبادلے نہیں ہوتے تھے۔

ایک نظر اس پر بھی

بھٹکل انجمن ڈگری کالج اینڈ پی جی سنٹر میں ’’یوم ِ دستور ‘‘ پروگرام کاانعقاد : ہر شہری کو دستور کا شعور لازمی ہے

ہمیں اپنے حقوق حاصل کرنے اور اپنے فرائض کو ادا کرنے کے لئے  دستور کا شعور ہونا ضروری ہے ۔ بھٹکل سرکاری  پی یو کالج کی پرنسپال ڈاکٹر بھاگیرتھی نے ان خیالات کااظہار کیا۔

سرسی کو علاحدہ ضلع بنانے کے متعلق اسپیکر کاگیری سے بات چیت کرونگا: ضلع نگراں کارو زیر شیورام ہیبار

ابھی تک اترکنڑا ضلع سالم و غیر منقسم ہے، جب کبھی ضلع کو تقسیم کرنا ہوتا ہے تو ضلع کے عوامی نمائندوں اور باشعور افراد کے ساتھ صلاح ومشورہ لازمی ہوجاتاہے۔ ودھان سبھا اسپیکر وشویشور کاگیری نے سرسی ضلع کی ضرورت کے متعلق جو بیان دیا ہے اس سلسلے میں ان سے  گفتگو کرتاہوں، اس کے بعد ...

چکمگلورو میں المناک حادثہ: تالاب میں تیرنے پہنچے پانچ افراد موت کا شکار۔ شادی کا گھر بن گیا ماتم کدہ؛ ایک کو بچانے کی کوشش میں چار غرق

چکمگلورو کے وستارگاؤں میں ایک المناک حادثہ پیش آیا جس میں ہیرے کیرے نامی    تالاب کے اندر تیرنے کے لئے گئے  ہوئے   پانچ افراد  ڈوبنے کی وجہ سے  بیک وقت موت کا شکارہوگئے ۔مہلوکین کی شناخت سندیپ، راگھویندرا، سدیپ، دلیپ اور دیپک کے طور پر کی گئی ہے۔

ارے بائیل گھاٹ پر کانکریٹ روڈ بنانے 52کروڑر وپئے کا منصوبہ مرکزی حکومت کو ارسال : شیورام ہیبار

ضلع نگراں کار وزیر شیورام ہیبار نے  ارے بائیل سے لے کر اڈگوندی تک کی 16کلومیٹر قومی شاہراہ 63کو مکمل طورپر کانکریٹ سڑک میں منتقل کرنے کے لئے خصوصی توجہ دیتے ہوئے  52کروڑر وپئے کا منصوبہ تشکیل دے کر منظوری کے لئے مرکزی حکومت کو بھیج دیا ہے۔

بھٹکل: ساحلی اضلاع کے مختلف مقامات پر کسان مخالف ترمیم شدہ قوانین کو فوراً واپس لینے کا مطالبہ لےکر ٹریڈیونینوں کا احتجاج

سینٹر آ ف انڈین ٹریڈ یونینس (سی آئی ٹی یو ) بھٹکل تعلقہ یونٹ  سمیت  ساحلی اضلاع کے کئی مقامات پرمختلف کسان اور مزدور سنگھ نے  تحصیلدار کے توسط سے وزیر اعظم نریندرا مودی کے نام ایک میمورنڈم دیا جس میں مانگ کی گئی ہے کہ حال ہی میں منظور کیے گئے  عوام ،مزدور اور کسان مخالف ترمیم ...

مرڈیشور ساحلی کنارے سےکشتیاں ہٹانے کا مسئلہ :سرکاری انتظامیہ اور ماہی گیر وں کے بیچ ہوگئی تیز تکرا ر۔ پیدا ہوگئے ہیں تصادم کے آثار

مشہور سیاحتی مرکز مرڈیشور کے ساحل پر ٹورازم کو فروغ دینے کے لئے ضلع انتظامیہ نے جو ترقیاتی منصوبہ بنایا ہے اس کے تحت کچھ تعمیراتی کام بھی کیے جارہے ہیں اور اسی کے ساتھ ساحلی کنارے پر چھوٹے چھوٹے دکانداروں کو جگہ فراہم کرنا طے پایا ہے۔ لیکن اس کے لئے ساحلی کنارے پر اپنی کشتیاں ...

چکمگلورو میں المناک حادثہ: تالاب میں تیرنے پہنچے پانچ افراد موت کا شکار۔ شادی کا گھر بن گیا ماتم کدہ؛ ایک کو بچانے کی کوشش میں چار غرق

چکمگلورو کے وستارگاؤں میں ایک المناک حادثہ پیش آیا جس میں ہیرے کیرے نامی    تالاب کے اندر تیرنے کے لئے گئے  ہوئے   پانچ افراد  ڈوبنے کی وجہ سے  بیک وقت موت کا شکارہوگئے ۔مہلوکین کی شناخت سندیپ، راگھویندرا، سدیپ، دلیپ اور دیپک کے طور پر کی گئی ہے۔

اوقاف کے ساتھ کھلواڑ کرنے والوں کے خلاف سخت کارروائی کی جائے:تنویر سیٹھ

وقف کی املاک اللہ کی امانت ہے۔اس کو نہ فروخت کیا جاسکتا ہے اور نہ ہی گروی رکھنے کی گنجائش ہے۔البتہ اوقافی املاک سے ہونے والی آمدنی کا استعمال ملت کی فلاح و بہبودی کے لئے کیا جاسکتا ہے۔لیکن اس کے برعکس لوگ وقف کی املاک بینکوں میں گروی رکھ کر کروڑو ں روپئے قرضہ لے رہے ہیں۔ یہ قرضہ ...

قدآور کانگریس قائد، احمد پٹیل کو ریاستی کانگریسیوں کا خراج عقیدت

کانگریس کے قدآور قائد مسٹر احمد پٹیل کی رحلت پر آج کے پی سی سی دفتر میں کے پی سی سی صدر ڈی کے شیوکمار کی صدارت میں ایک تعزیتی اجلاس منعقد ہوا جس میں احمد پٹیل کی تصویر پر پھول چڑھا کر انہیں زبردست خراج عقیدت پیش کی گئی۔

کابینہ میں توسیع کا مسئلہ بی جے پی میں شدید اختلاف کا سبب، پرانے بی جے پی ممبران اور پارٹی بدلنے والوں میں اقتدار کے لئے رسہ کشی

ایسے مرحلے میں جبکہ وزیر اعلیٰ بی ایس ایڈی یورپا کی طرف سے ریاستی کابینہ میں توسیع کرنے کے لئے بی جے پی اعلیٰ کمان کی سطح پر کی گئی کوشش ناکام نظر آ رہی ہے بی جے پی میں وزارت کے دعویداروں کی بے چینی میں بھی اضافہ ہو تا جا رہا ہے اور اقتدار کا حصہ بننے کے لئے بے تاب کانگریس چھوڑ کر ...

جے ڈی ایس رکن کی حیثیت سے ہی میعاد مکمل کروں گا: جی ٹی دیوے گوڑا

یہاں میسورو تعلقہ کے ادبور میں مختلف ترقیاتی کاموں کی سنگ بنیاد تقریب میں شرکت کرنے کے بعد نامہ نگاروں سے بات کرتے ہوئے میسور کے حلقہ چامنڈیشوری کے جنتا دل (یس) رکن اسمبلی جی ٹی دیوے گوڑا جنہوں نے کئی ماہ سے جنتا دل (ایس) سے دوری بنائے رکھی ہے،

کرناٹک میں گردابی طوفان ”نیوار“سے متعلق ریڈ الرٹ

گردابی طوفان ”نیوار“کے بدھ کے روز تمل ناڈو اور پڈوچیری سے گزرنے کے پیش کرناٹک میں ریڈ الرٹ جاری کیا گیا ہے۔وزیر اعلیٰ بی ایس ایڈی یورپا نے آج یہاں میڈیا سے بات چیت میں کہا کہ متعلقہ عہدیداروں کو کسی بھی صورتحال کے لئے تیار رہنے کو کہا گیا ہے۔