مہاراشٹر: کورونا وبا کے سبب 15 ستمبر تک نہیں ہوگی کوئی بھرتی!

Source: S.O. News Service | Published on 27th July 2020, 8:07 PM | ملکی خبریں |

نئی دہلی،27؍جولائی(ایس او نیوز؍یو این آئی) مہاراشٹر حکومت نے پیر کے روز عدالت عظمی میں کہا کہ اس نے کورونا وائرس کی وبا کے پیش نظر 15 ستمبر تک کوئی بھرتی نہ کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ مہاراشٹر حکومت نے مراٹھا ریزرویشن سے متعلق سماعت کے دوران عدالت عظمی کو یہ معلومات فراہم کیں۔ ریاست میں تعلیمی اداروں اور ملازمتوں میں مراٹھیوں کو 12 فیصد ریزرویشن دینے کے ریاستی حکومت کے فیصلے کو چیلنج کرنے والی عرضی پر جسٹس ایل ناگیشورا راؤ، جسٹس ہیمنت گپتا اور جسٹس ایس رویندر بھٹ پر مشتمل ڈویژن بنچ آج سے ہر روز سماعت کرنے والی تھی، لیکن ریاستی حکومت کی طرف سے مذکورہ معلومات دیئے جانے کے بعد سماعت ملتوی کردی گئی۔

عدالت عظمی نے کہا کہ وہ 25 اگست کو اس معاملے کی ابتدائی نکات پر سماعت کرے گی، جبکہ حتمی سماعت یکم ستمبر کو ہوگی۔ مراٹھا ریزرویشن کو چیلنج کرنے والی درخواستوں میں یہ دلیل دی گئي ہے کہ ریاست میں کل ریزرویشن 74 فیصد ہوگیا ہے، جو اندرا ساہنی کیس میں عدالت عظمیٰ کے تاریخی فیصلے کی خلاف ورزی ہے، جس میں کہا گیا ہے کہ کسی بھی صورت میں مجموعی ریزرویشن 50 فیصد سے تجاوز نہیں کرسکتا۔

گزشتہ 16 جولائی کو مختلف فریقوں کے وکلاء نے عدالت سے درخواست کی تھی کہ سابق کی طرح کمرہ عدالت میں روایتی سماعت شروع ہونے کے بعد ہی اس معاملے کی سماعت کی جائے، لیکن جسٹس ایل ناگیشور راؤ نے کہا کہ چونکہ ابھی تک یہ پتہ نہیں ہے کہ صورتحال کب معمول پر لوٹے گی اور پہلے کی طرح کمرہ عدالت میں روایتی سماعت کب شروع ہوگی، اس لیے ویڈیو کانفرنسنگ کے ذریعہ اس معاملے کی سماعت کرنا مناسب ہوگا، کیوں کہ یہ بہت اہم معاملہ ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

ایردوآن نے یو این میں اٹھایا مسئلہ کشمیر، ’اندرونی معاملات میں دخل نہ دے ترکی‘ انڈیا کی تاکید

 جموں و کشمیر کے حوالہ سے اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں ترکی کے صدر رجب طیب اردوآن کے بیان پر اقوام متحدہ میں ہندوستان کے مستقل نمائندہ ٹی ایس ترومورتی نے سخت احتجاج کرتے ہوئے کہا ہے کہ ترکی کو دوسرے ممالک کی خودمختاری کا احترام کرنا سیکھنا چاہئے۔

ممبئی میں طوفانی بارش سے سیلابی صورتحال، عام زندگی مفلوج، متعدد رہائشی کالونیاں زیر آب

ملک کی تجارتی راجدھانی ممبئی میں گزشتہ شب سے جاری بھاری بارش کی وجہ سے سیلابی صورتحال پیدا ہوگئی ہے۔ ستمبر کے مہینے میں اس طرح کی بارش نے ایک بار پھر شہر کی عام زندگی کو مفلوج کرکے رکھ دیا ہے۔