مہاراشٹر حکومت کا بڑا فیصلہ، اب قبائلی خواتین چلائیں گی بس

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 24th August 2019, 6:18 PM | ملکی خبریں |

نئی دہلی،24/اگست (ایس او نیوز/ آئی این ایس انڈیا) مہاراشٹر حکومت نے قبائلی خواتین کے مفاد میں ایک بڑا فیصلہ کیا ہے۔ حکومت نے قبائلی خواتین کو مہاراشٹر اسٹیٹ روڈ ٹرانسپورٹ کارپوریشن کی بسوں میں بطور ڈرائیور منتخب کیا ہے۔ سابق صدر پرتبھا پاٹل نے خواتین کو بس ڈرائیوروں کے طور پر تربیت اور روزگار دینے کی کارپوریشن کی پہل کا افتتاح کیا۔ 163 خواتین کو اس پائلٹ پروجیکٹ کے لئے منتخب کیا گیا ہے۔ ان خواتین کو ڈرائیونگ کی تربیت دی جائے گی اور پھر انہیں بطور ڈرائیور کام دیا جائے گا۔ تقریب میں ریاست ٹرانسپورٹ وزیر دیواکر راوتے نے کہاکہ حکومت خواتین ڈرائیوروں کی حفاظت پر توجہ دے گی۔ ملک میں پہلی بار اس طرح کی پہل ہوئی ہے۔ ہم خواتین کے تحفظ کویقینی بنائیں گے۔سابق صدر پرتبھا پاٹل نے مشورہ دیا کہ ایم ایس ٹی آر سی کو تحفظ کا خیال کرتے ہوئے خواتین ڈرائیوروں کو ان کے گھروں سے زیادہ دور نہیں بھیجنا چاہئے۔ اس کے علاوہ انہوں نے حکومت سے کہا کہ ڈرائیوروں کو باہر رہنے کے دوران محفوظ جگہ بھی دستیاب کروائی جانی چاہیے۔سابق صدر نے کہاکہ 'خواتین کو تعلیم دینے اور انہیں تیار کرنے سے ملک آگے بڑھے گا۔ قبائلی کمیونٹی ہماری ثقافت کا اہم حصہ ہے۔ ' جن خواتین کو ٹریننگ دینے کے لئے منتخب کیا گیا ہے وہ گڑھچرولی، وردھا، بھاندارا اور گوندیا ضلع سے ہیں۔ حالانکہ حکومت کے فیصلے سے خواتین خوش دکھائی دیں۔ ابھی تک خواتین کے لئے اس طرح کی نوکری کو محدود سمجھا جاتا تھا۔منتخب ہونے والی خاتون وجے راجیشوری نے بتایاکہ 'ہمارا منتخب ہونا خواب کے سچ ہونے جیسا ہے۔ میں نے کبھی نہیں سوچا تھا کہ میں ڈرائیور بنوں گی۔ میں بہت خوش ہوں۔ یہ ایک خاتون کے لئے اچھا موقع ہے۔ وہ ہر میدان میں آگے بڑھ رہی ہیں۔ اب وہ اس سیکٹرمیں بھی اپنی قابلیت ثابت کریں گی۔

ایک نظر اس پر بھی