مہارشٹرا میں نئی پیشرفت: گورنر نے سب سے بڑی پارٹی بی جے پی کو کیا حکومت سازی کے لئے مدعو؛ 11 نومبر تک کرنی ہوگی اکثریت ثابت

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 9th November 2019, 8:49 PM | ملکی خبریں |

ممبئی 9/نومبر (ایس او نیوز) مہارشٹرا کے گورنر بھگت سنگھ کوشیاری نے اسمبلی انتخابات میں سب سے بڑی پارٹی بن کر اُبھرنے والی   بی جے پی کو حکومت سازی کے لئے مدعو کر لیا ہے۔  اطلاعات کے مطابق گورنر نے دیویندر فڈنویس کو  سرکار بنانے کی دعوت دینے کے ساتھ ہی  اُنہیں  11 نومبر تک اسمبلی میں اپنی اکثریت ثابت کرنے کے لئے بھی کہا ہے۔

یاد رہے کہ 24/اکتوبر کو ہوئی ووٹوں کی گنتی کے بعد  مہاراشٹرا کی جملہ 288 سیٹوں میں بی جے پی کو 105 سیٹیں حاصل ہوئی  ہیں۔ شیو سینا کو 56این سی پی کو 54 اور کانگریس کو 44 سیٹیں ملی ہیں۔  13ویں اسمبلی کی مدت کار آج ختم ہو چکی ہے اور ریاست میں حکومت سازی کو لے کر تصویر صاف نہیں ہے۔ گزشتہ کئی دنوں سے بی جے پی اور شیو سینا میں رسہ کشی جاری تھی، جس کے بعد مجبوری میں وزیر اعلیٰ دیویندر فڑنویس کو استعفی دینے پڑا تھا۔

شیو سینا کا کہنا ہے کہ انتخابات سے پہلے انہوں نے اپنی حلیف   بی جے پی  کے ساتھ  ڈھائی ۔  ڈھائی سال کے لئے وزیر اعلیٰ کا عہدہ دینے کی بات طئے ہوئی  تھی اور بی جے پی نے ان سے اس کا وعدہ  بھی کیا تھا۔ لیکن بی جے پی کا کہنا ہے کہ شیو سینا سے ایسا کوئی وعدہ نہیں کیا گیا۔ 

ایک نظر اس پر بھی

آر ایس ایس کو شرم آنی چاہیے کہ حکومت نے معیشت کو تباہ کر دیا: پی چدمبرم

سابق مرکزی وزیر خزانہ اور سینئر کانگریس رہنما پی چدمبرم نے ہفتہ کے روز ایک مرتبہ پھر معیشت کے موضوع پر مرکزی حکومت کو ہدف تنقید بنایا۔ انہوں نے یکے بعد دیگرے کئی ٹوئٹ کر کے حکومت کے ساتھ ریزرو بینک آف انڈیا (آر بی آئی) اور راشٹریہ سوم سویک سنگھ (آر ایس ایس) پر بھی حملہ بولا۔

لاک ڈاؤن نے سب سے زیادہ تکلیف مہاجر مزدوروں کو پہنچائی: راہل گاندھی

  کانگریس کے سابق صدر راہل گاندھی نے کہا ہےکہ کورونا نے متعدد لوگوں کو تکلیف پہنچائی ہے لیکن سب سے زیادہ درد اس نے مہاجر مزدوروں کو دیا ہے جنہیں مارا پیٹا گیا، روگا گیا، ڈرایا دھمکایا گیا لیکن وہ رکے نہیں اور اپنے گھروں کی جانب چلتے رہے۔

ہندوستان: ایک نئے ریکارڈ کے ساتھ کورونا متاثرین کی تعداد سوا لاکھ سے متجاوز

  ملک میں مسلسل دو دن سے عالمی وبا کورونا وائرس انفیکشن کے چھ ہزار سے زیادہ کیس سامنے آنے سے متاثرین کی مجموعی تعداد سوا لاکھ کے اعداد و شمار کو پار کرکے 125101 تک پہنچ گئی ہے تاہم راحت کی بات یہ ہے کہ ملک میں 50 ہزار سے زائد لوگوں نے اس انفیکشن سے نجات بھی پائی۔

کووِڈ کے علاج میں ایک نئی پیش رفت۔ کینسر اسپتال کے ڈاکٹروں نے تلاش کیا ایک نیا طریقہ۔ تجرباتی مرحلے پر ہورہا ہے کام!

سر اور گلے کے کینسر اورروبوٹک سرجری کے ماہر ڈاکٹر وشال راؤ کا کہنا ہے کہ ایچ سی جی کینسر اسپتال میں کووِڈ 19کے علاج کے لئے ڈاکٹروں نے ایک نئے طریقے پر کام کرنا شروع کیا ہے جس میں خون کے اندر موجود سائٹوکینس نامی ہارمون کا استعمال کیا جائے گا۔