مدھیہ پردیش نے 71 سال بعد جیتی اپنی پہلی رنجی ٹرافی

Source: S.O. News Service | Published on 26th June 2022, 11:13 PM | اسپورٹس |

بینگلورو،26؍جون (ایس او نیوز؍ایجنسی) برطانوی حکومت کے دور کے دوران 1934 میں شروع ہوئی رنجی ٹرافی میں مدھیہ پردیش کا قیام 1950-51 اجلاس میں ہوا تھا اور ایم پی نے اتوار کو 2021-22 اجلاس کے فائنل

مدھیہ پردیش نے بنگلورو کے ایم چناسوامی اسٹیڈیم میں ہمانشو منتری (37) اور شبھم شرما (30)کی بدولت 108 رنز کے ہدف کو حاصل کرکے تاریخ رقم کی۔ آئی پی ایل میں رائل چیلنجرز کے لئے کھیلنے والے کانسے پاٹی دار نے بھی ’آر سی بی‘ کے نعروں کے درمیان بیش قیمت 30 رنز جوڑے۔ پاٹی دار نے ہی آخری رنز بناتے ہوئے مدھیہ پردیش کو اس کا پہلا رنجی خطاب جتایا۔

ممبئی نے پانچویں دن 113/2 سے شروع کرتے ہوئے تیز رنز بنائے۔ ارمان جعفر (40 گیندوں پر 37) کے آؤٹ ہونے کے بعد کریز پر موجود سوید پارکر اور سرفراز خان تال میں نظر آرہے تھے، لیکن کمار کارتیکیا نے پارکر کو آؤٹ کرکے مدھیہ پردیش کے لیے دروازے کھول دیئے۔ پارکر نے 58 گیندوں میں تین چوکوں اور ایک چھکے کی مدد سے 51 رنز بنائے۔

ممبئی کے شمس ملانی (17) اور تشار دیشپانڈے (07) بھی رن آؤٹ ہوئے جس سے مدھیہ پردیش کا کام آسان ہوگیا۔ 232 رنز پر چھ وکٹیں گنوانے کے بعد ممبئی کی آخری امید سرفراز تھے لیکن وہ بھی دو چوکوں اور ایک چھکے کی مدد سے 45 رنز ہی بنا سکے۔ ممبئی نے اپنے آخری سات وکٹ 77 رن کے اندر گنوا دیئے اور ٹیم 269 رن پر سمٹ گئی۔

پہلی اننگز میں 162 رنز کی برتری حاصل کرتے ہوئے ایم پی کو 108 رنز کا ہدف ملا تھا، جو اس نے چار وکٹوں کے نقصان پر حاصل کر لیا۔ اوپنر یش دوبے صرف ایک رن بنانے کے بعد پویلین لوٹ گئے اور ایک موقع پر ایسا لگ رہا تھا کہ میچ دلچسپ ہو سکتا ہے لیکن ہمانشو اور شبھم نے دباؤ میں تحمل کا مظاہرہ کیا اور 52 رنز کی شراکت قائم کی۔ ہمانشو کے 54 رنز پر آؤٹ ہونے تک ایم پی آدھے راستے پر تھے۔

چوتھے نمبر پر آنے والے پارتھا ساہنی صرف پانچ رنز بنا سکے لیکن شبھم نے ٹیم پر دباؤ نہیں بننے دیا اور پاٹیدار کے ساتھ 45 رنز کی شراکت داری کرکے اپنی ٹیم کی پہلی رنجی ٹرافی کو یقینی بنایا۔ پہلی اننگز میں سنچری بنانے والے شبھم نے دوسری اننگز میں ایک چوکے اور ایک چھکے کی مدد سے 30 رنز بنائے۔ 101 رن کے اسکور پر شبھم بڑا شاٹ لگانے کی کوشش میں آؤٹ ہوئے جس کے بعد پاٹیدار نے ٹیم کو ہدف تک پہنچا دیا۔

ایک نظر اس پر بھی

کامن ویلتھ گیمز: ہندوستانی کھلاڑیوں نے نویں دن 4 طلائی سمیت 14 تمغے جیتے

انگلینڈ کے شہر برمنگھم میں کھیلے جا رہے کامن ویلتھ گیمز 2022 میں ہندوستانی کھلاڑی شاندار کارکردگی کا مظاہرہ کر رہے ہیں۔ کھیلوں کے نویں دن یعنی 6 اگست (ہفتہ) کو ہندوستان نے کل 14 تمغے جیتے، جن میں چار طلائی، تین چاندی اور سات کانسی کے تمغے شامل ہیں۔ اس کے علاوہ کرکٹ، ٹیبل ٹینس، ...

کامن ویلتھ گیمز: ہندوستانی پہلوانوں کا بہترین کارکردگی کا مظاہرہ، بجرنگ اور ساکشی نے جیتے طلائی تمغے

 ہندوستانی پہلوان کامن ویلتھ گیمز 2022 میں بہترین کارکردگی کا مظاہرہ کر رہے ہیں۔ خاتون پہلوان انشو ملک کے چاندی کا تمغہ جیتنے کے بعد پہلوان بجرنگ پونیا اور خاتون پہلوان ساکشی ملک ملک کے لیے طلائی تمغہ حاسل کیا۔ ہندوستان کے طلائی تمغے کی امید رکھنے والے سب سے بڑے پہلوان بجرنگ ...

ویٹ لفٹر لوپریت نے قومی ریکارڈ کے ساتھ کانسے کا تمغہ جیتا، ہندوستان کا 14واں تمغہ

 ویٹ لفٹر لوپریت سنگھ نے بدھ کے روز 109 کلوگرام زمرے میں کانسے کا تمغہ جیتا جس کے بعد دولت مشترکہ کھیل 2022 میں ہندوستان کے تمغوں کی کل تعداد 14 ہو گئی۔ لوپریت نے اسنیچ میں 163 کلوگرام اور کلین اینڈ جرک میں 192 کلوگرام کی کوشش کے ساتھ مجموعی طور پر 355 کلو گرام کا وزن ریکارڈ کیا۔ انہوں نے ...