منگلورو:کووِڈ سے فوت ہونے والوں کی آخری رسومات ان کے گھر والے ادا کرسکیں گے۔جنوبی کینرا اور اڈپی ضلع انتظامیہ کی مشروط اجازت

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 2nd August 2020, 1:22 PM | ساحلی خبریں | ریاستی خبریں |

منگلورو 2/اگست (ایس او نیوز) منگلورو کے اسسٹنٹ کمشنر مدن موہن کے بیان کے مطابق اب کووِڈ کی وجہ سے فوت ہونے والوں کی آخری رسومات اگر ان کے گھر والے اداکرنا چاہیں تو مشروط طور پر وہ یہ کام کرسکیں گے۔

 اے سی نے بتایا کہ کووِڈ سے فوت ہونے والوں کو گھر والے اپنی ذاتی ملکیت والی زمین پر جلانے یا دفنانے کی کارروائی کرسکیں گے۔ البتہ اڑوس پڑوس والوں کی طرف سے اس پر کوئی اعتراض نہیں ہونا چاہیے  اس کے علاوہ کووِڈ کا جو پروٹو کول ہے اسی کے مطابق آخری رسومات کی کارروائی انجام دینی ہوگی اور کسی کو بھی لاش کو چھونے کی اجازت نہیں ہوگی۔

 اے سی نے بتایا کہ گھر والوں کو آخری رسومات ادا کرنے کی اجازت صرف ضلع جنوبی کینرا کے اندر ہی ہوگی اور یہاں سے لاشوں کو دوسرے اضلاع میں لے جانے کی اجازت نہیں دی جائے گی۔

 اسی طرح اڈپی ڈسٹرکٹ ہیلتھ آفیسر سدھیر چندرا سوڈا نے نے بتایا کہ اڈپی ضلع میں بھی گھروالوں کو لاشوں کی آخری رسومات ادا کرنے کی اجازت انہی شرائط کے ساتھ دی جائے گی جو کووڈ پروٹوکول کے تحت لاگو کی گئی ہیں، اور لاشوں کی تدفین یا انہیں جلانے کا کا م گھر والوں کی اپنی ملکیت والی زمین میں ہی کرنا ہوگا اور آس پاس بسنے والوں کی طرف سے اعتراض نہ ہونے پر ہی ایسا کیا جاسکے گا۔

خیال رہے کہ کووِڈ سے ہلاک ہونے والوں کی آخری رسومات کے سلسلے میں گھروالوں کے جذبات اور احساسات کا خیال رکھنے کی ہدایت اس سے قبل ریاستی ہائی کورٹ کی طرف سے بھی حکومت کو دی گئی تھی۔ اس کے علاوہ اب ہلاکتوں کی تعداد بڑھنے کی وجہ سے لاشوں کی آخری رسومات سرکاری سطح پر ادا کرنا حکومت کے لئے بھی بڑا مسئلہ بن گیا ہے۔ اس طرح حکومت بھی اپنا بوجھ کم کرنے کے لئے قوانین و ضوابط میں کچھ ڈھیل دینے پر آمادہ ہوگئی ہے۔
 

ایک نظر اس پر بھی

کیرالہ میں پیش آیا چٹان کھسکنے کا خطرناک حادثہ۔ 15ہلاک اور60سے زائدافراد ہوگئے لاپتہ۔ ملبے میں دب گئیں 30جیپ گاڑیاں 

کیرالہ کے مشہور تفریحی مقام ’مونار‘ سے قریب ’ایڈوکی‘ میں چٹان کھسکنے کا ایک خطرناک حادثہ پیش آیا جس میں تاحال 15افراد ہلاک ہونے اور 60سے زیادہ لوگ لاپتہ ہونے کے علاوہ 30جیپ گاڑیاں چٹان کے ملبے میں دب کر رہ جانے کی خبر ہے۔

کیرالہ میں پیش آیا چٹان کھسکنے کا خطرناک حادثہ۔ 15ہلاک اور60سے زائدافراد ہوگئے لاپتہ۔ ملبے میں دب گئیں 30جیپ گاڑیاں 

کیرالہ کے مشہور تفریحی مقام ’مونار‘ سے قریب ’ایڈوکی‘ میں چٹان کھسکنے کا ایک خطرناک حادثہ پیش آیا جس میں تاحال 15افراد ہلاک ہونے اور 60سے زیادہ لوگ لاپتہ ہونے کے علاوہ 30جیپ گاڑیاں چٹان کے ملبے میں دب کر رہ جانے کی خبر ہے۔

کورونا کی وبا اور دعوت رجوع الی اللہ، اس عنوان کے تحت جماعت اسلامی ہند، کرناٹک کی 15 روزہ مہم کا آغاز

  کورونا کی وبا سے اس وقت پوری انسانیت پریشان ہے۔ اس مرض کا مقابلہ کرنے کیلئے حفاظتی اور احتیاطی تدابیر اختیار کرتے ہوئے لوگ اپنے رب سے رجوع ہوں۔ کورونا جیسی بیماریوں پر قابو پانے کیلئے طبی علاج کے ساتھ روحانی اور اخلاقی طاقت کا ہونا بھی ضروری ہے۔

کرناٹک سے 40 امیدوار سیول سرویسز امتحان میں کامیاب

کرناٹک سے زائداز 40 امیدواروں نے 2019 کے یونین پبلک سرویس کمیشن (یو پی ایس سی ) سیول سرویس امتحان میں کامیابی حاصل کی اور اب آئی اے ایس ، آئی ایف ایس اور آئی پی ایس اور دیگر میں ملازمت حاصل کریں گے۔