شمالی کرناٹک میں سیلابی صورتحال کا جائزہ لینے کے پی سی سی سے دوٹیمیں تشکیل دی گئی ہیں۔دنیش گنڈوراؤ

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 8th August 2019, 11:14 AM | ریاستی خبریں |

بنگلورو،7/اگست(ایس او نیوز) شمالی کرناٹک کے علاقوں میں زور دار بارش سے رونما سیلابی صورتحال کی حقیقی وزمینی صورتحال سے واقفیت کیلئے کے پی سی سی کی جانب سے سابق ریاستی وزیر ایچ کے پاٹل اور کے پی سی سی کے کارگزار صدر ایشور کھنڈرے کی زیر قیادت ایک مطالعاتی معائنہ کار ٹیم تشکیل دی گئی ہے۔ یہ اعلان کے پی سی سی کے صدر دنیش گنڈوراؤ نے کیا۔ بروز منگل کوئنس روڈ پر واقع کے پی سی سی دفتر میں اخباری نمائندوں سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ بیلگاوی علاقوں میں ایچ کے پاٹل اور کلبرگی علاقوں میں ایشور کھنڈرے کی زیر قیادت ٹیمیں سیلاب زدہ علاقوں کا دورہ کرتے ہوئے حقیقی صورتحال کی رپورٹ تیار کریں گی۔ سیلاب زدہ علاقوں میں ریاستی حکومت سے کس قسم کے راحتی کام ہوئے اور عوامی مسائل کس طریقہ سے حل کرنے کی کوشش کی، جائزہ لیاجائے گا۔ انہوں نے کہا کہ اپوزیشن پارٹی میں رہتے ہوئے صرف سیاست کرنا ہمارا کام نہیں بلکہ عوام جن مسائل سے دوچار ہیں اس بارے میں ہم بھی حکومت کو واقف کروائیں گے۔ حکومت کے خلاف احتجاج نہیں کریں گے کیونکہ ایسے موقع پرسیاست نہیں کی جاسکتی، لیکن حکومت ایسے نازک موقع پر زیادہ فعال وسرگرم ہوناچاہئے۔ ہمیں امیدہے کہ حکومت کو سیلاب سے دو چار علاقوں میں خصوصی توجہ دیتے ہوئے عوام کو راحت پہنچائے گی۔دنیش گنڈوراؤ نے کہا کہ شمالی کرناٹک میں بھاری بارش سے شدید نقصانات ہوئے ہیں۔ایسی حالت میں مرکزی حکومت کو زیادہ سے زیادہ مالی امداد فراہم کرنا ہوگا۔ سوتیلا سلوک کرنے سے گریز کرنا ہوگا۔ مرکز اور ریاست میں ایک ہی پارٹی کی حکومتیں ہونے کی وجہ سے وزیراعلیٰ ایڈی یورپا کو چاہئے کہ وہ زیادہ فنڈ ریاست کو لائیں۔شمالی کرناٹک کے کئی علاقوں میں ریڈالرٹ جاری کیاگیاہے۔ ایسے موقع پر ریاست میں صرف وزیراعلیٰ ہیں۔ دیگر کوئی وزیر نہیں ہے۔افسروں پر بھروسہ کرتے ہوئے بیٹھ جانے سے کوئی بھی کام نہیں ہوئے۔ فوری طورپر کابینہ تشکیل دیتے ہوئے عوام کے مسائل حل کرنے پر ایڈی یورپا کو توجہ دینی ہوگی۔ اس موقع پر دنیش گنڈوراؤ نے کہا کہ گوکاک حلقہ کے پارٹی کارکن نے آج نااہل قرار دیئے گئے رمیش جار کی ہولی کے خلاف شکایت کی۔ پارٹی سے دغا اور دھوکہ کرنے والوں کو عوام سبق سکھانے کے لئے تیار ہیں۔

ایک نظر اس پر بھی

ریاستی حکومت نے آئی ایم اے فراڈ کیس کی جانچ سی بی آئی کے حوالے کیا

ریاست کی سابقہ کانگریس جے ڈی ایس حکومت کے دور میں کی گئی مبینہ ٹیلی فون ٹیپنگ کی سی بی آئی جانچ کے ا حکامات صادر کرنے کے دودن بعد ہی آج ریاستی حکومت نے کروڑوں روپیوں کے آئی ایم اے فراڈ کیس کی جانچ سی بی آئی کے سپرد کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

کیا شمالی کینرا سے شیورام ہیبار کے لئے وزارت کا قلمدان محفوظ رکھا گیا ہے؟

کرناٹکاکے وزیراعلیٰ  ایڈی یورپا نے دو دن پہلے اپنی کابینہ کی جو تشکیل کی ہے اس میں ریاست کے 13اضلاع کو اہمیت دیتے ہوئے وہاں کے نمائندوں کو وزارتی قلمدان سے نوازا گیا ہے۔اور بقیہ 17اضلاع کو ابھی کابینہ میں نمائندگی نہیں دی گئی ہے۔

بنگلورو: نشے میں دھت شخص نے فٹ پاتھ پر 7 لوگوں کو کچل دیا

شراب کے نشے میں دھت ایک شخص نے بہت تیز رفتار کار فٹ پاتھ پر چڑھا دی اور فٹ پاتھ پر چل رہے 7 افراد اس کار کی زد میں آ گئے۔ زخمیوں کو فوراً اسپتال پہنچایا گیا اور خبر لکھے جانے تک ان لوگوں کی حلات نازک بنی ہوئی ہے۔ یہ واقعہ بینگلورو کے ایچ ایس آر لے آؤٹ علاقے کا ہے۔