کشمیر میں 65 دن سے جاری بند پر چراغ پا افسر نے کہا ’حالات مزید بگڑ سکتے ہیں‘

Source: S.O. News Service | Published on 9th October 2019, 1:27 PM | ملکی خبریں |

سری نگر،9؍اکتوبر (ایس او نیوز؍ایجنسی) جموں و کشمیر سے دفعہ 370 ہٹائے جانے کے بعد سے ہی مودی حکومت لگاتار یہی دعویٰ کر رہی ہے کہ وادی میں سب کچھ ٹھیک ہے اور معمول پر ہے۔ لیکن جموں و کشمیر میں تعینات افسر اور سیکورٹی فورسز کی بات پر یقین کریں تو حالات کافی سنگین ہیں۔ دفعہ 370 ہٹائے جانے کے بعد سے ہی وادی میں بند ہے، دو مہینے بعد بھی حالات ویسے ہی بنے ہوئے ہیں۔ وہاں موجود افسروں کا ماننا ہے کہ حالات معمول پر ہونے کی جگہ مزید بگڑ سکتے ہیں۔

بازار میں اب بھی سناٹا پسرا ہوا ہے۔ انٹرنیٹ اور سیل فون سروس ابھی تک پوری طرح سے بحال نہیں ہو پائی ہے۔ اس کا اثر صحت خدمات پر بھی پڑ رہا ہے۔ اس کے علاوہ اسکول اور کالج بند ہیں۔ سینکڑوں لوگ حراست میں ہیں۔ حالانکہ گورنر کہہ رہے ہیں کہ حالات پہلے سے کافی بہتر ہوئے ہیں اور اسی وجہ سے سیاحوں پر پابندی عائد کرنے والے حکم واپس لیے جا رہے ہیں۔ لیکن اس کا کوئی اثر ہوتا ہوا نظر نہیں آ رہا ہے۔ اس ماحول میں کوئی بھی سیاح شاید ہی وہاں جائے۔ وہیں بی جے پی کو چھوڑ کر 24 اکتوبر کو ہونے والے بلاک ڈیولپمنٹ کونسل (بی ڈی سی) کا انتخاب لڑنے سے سبھی پارٹیوں نے انکار کر دیا ہے۔

انگریزی اخبار ’دی انڈین ایکسپریس‘ نے ایک درجن سے زیادہ نوکرشاہوں اور پولس افسروں سے بات کرنے کے بعد ایک رپورٹ شائع کی ہے جس میں کہا گیا ہے کہ حکومت بھلے ہی کچھ بھی کہے لیکن وادی میں حالات معمول پر نہیں ہیں۔ ایک افسر نے بتایا کہ ’’ہم کہتے تھے کہ سیکورٹی فورس گھڑی دیکھتے ہیں، جب کہ دہشت گردوں کے پاس ہمیشہ وقت ہے۔ لیکن، اب یہاں معاملہ دوسرا ہو چکا ہے۔ ایسا لگتا ہے کہ حکومت کی پالیسی یہ ہے کہ وہ ہر وقت جموں و کشمیر کے باشندوں پر نظر رکھ سکتی ہے۔‘‘ افسر نے کہا کہ ’’ہمیں پورا یقین نہیں ہے کہ لوگوں کو تھکا دینے والا یہ عمل اثر انداز ہوگا، لیکن ہم سبھی کو اعتراف کرنے کی ضرورت ہے کہ یہاں حالات معمول پر نہیں ہیں۔‘‘

ایک اعلیٰ افسر نے اخبار کو بتایا کہ ’’ایشو اور مسئلہ دو ایسے عام لفظ ہیں جنھیں یہاں کے لوگوں کے ساتھ بات چیت میں سنتے ہیں۔ کیا آپ نے انھیں 5 اگست سے سنا ہے؟ صرف اس لیے کہ کوئی بھی ان الفاظ کا تذکرہ نہیں کرتا ہے، کیا اس کا مطلب یہ ہے کہ چیزیں معمول پر ہیں؟‘‘ کئی دیگر بڑےا فسروں کا بھی یہی ماننا ہے۔ ایک افسر کا کہنا ہے کہ ’’دہلی کو لگتا ہے کہ اگر ابھی تک کوئی بڑا واقعہ نہیں ہوا ہے تو حالات معمول پر ہیں۔ یہ سوچ غلط ہے۔‘‘

ایک نظر اس پر بھی

پی ایم مودی کی بھتیجی کے ’پرس‘ کی طرح تلاش کرتے تو میرا بیٹا میرے ساتھ ہوتا، نجیب کی ماں

جواہر لال نہرو یونیورسٹی (جے این یو) کے طالب علم نجیب احمد کے لاپتہ ہونے کے تین سال بعد اس کی والدہ فاطمہ نفیس نے منگل کے روز جنتر منتر پر احتجاج کیا اور وزارت داخلہ سے اپنے بیٹے کی گمشدگی کے حوالہ سے جواب مانگا۔ اس موقع پر یونائیٹڈ اگینسٹ ہیٹ کی جانب سے ایک احتجاجی مارچ کا ...

آگسٹا ویسٹ لینڈ کے ملزم کے خلاف کارروائی پر روک لگانے کے لئے دہلی ہائی کورٹ کے فیصلے کو سپریم کورٹ نے کیا منسوخ

آگسٹا ویسٹ لینڈ کے ملزم گوتم کھیتان کے خلاف کارروائی پر روک لگانے کے لئے دہلی ہائی کورٹ کے فیصلے کو سپریم کورٹ نے منسوخ کر دیا۔سپریم کورٹ نے دوبارہ دہلی ہائی کورٹ سے کھیتان کی عرضی پر سماعت کرنے کو کہا۔دہلی ہائی کورٹ نے کہا تھا کہ کھیتان کا معاملہ 1 اپریل 2016 سے پہلے کا ہے لہٰذا ...

یوپی کی سابق ایم پی اور کانگریس لیڈر راج کماری رتنا سنگھ بی جے پی میں ہوئیں شامل

پرتاپ گڑھ کی سابق ایم پی اور کانگریس لیڈر راج کماری رتنا سنگھ اپنے حامیوں کے ساتھ بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) میں شامل ہو گئیں ہیں۔رتناسنگھ نے وزیر اعلی یوگی آدتیہ ناتھ کی موجودگی میں بی جے پی کی رکنیت حاصل کی۔بتا دیں کہ پرتاپ گڑھ کے گڑوارا میں منگل کو وزیر اعلی یوگی آدتیہ ...

یوپی: دو سال کی بچی سے عصمت دری، ملزم گرفتار

شہر کے تھانہ سی بی گنج علاقے کے ایک گاؤں میں دو سال کی بچی کے ساتھ پڑوسی نے مبینہ طور پر عصمت دری کی۔پولیس نے ملزم کو گرفتار کر لیا ہے۔سینئر پولیس سپرنٹنڈنٹ شیلندر پانڈے نے منگل کو بتایا کہ گاؤں کے رہائشی ایک شخص کی دو سالہ بیٹی پیر کی شام گھر کے باہر کھیل رہی تھی۔

بندیل کھنڈ: پہلے سوکھا اور اب بے موسم کی بارش سے پریشان کسان کررہے ہیں خودکشی

پہلے سوکھا اور اب زیادہ بارش کی وجہ سے بندیل کھنڈ کے کسان خودکشی کر رہے ہیں۔کئی سال سے بندیل کھنڈ میں پڑ رہے سوکھے کی وجہ سے کسان خودکشی کر رہے تھے، لیکن اس سال بے موسم بارش کی وجہ سے بندیل کھنڈ میں خریف کی فصل برباد ہوگئی۔جس سے کسانوں میں زبردست مایوسی ہے۔

مدھیہ پردیش: آبکاری افسر کے ٹھکانوں پر لوک آیکت کے چھاپے، کروڑوں کی جائیداد کا انکشاف

مدھیہ پردیش کے اندور میں آبکاری محکمہ کے اسسٹنٹ کمشنر آلوک کھرے کے کئی ٹھکانوں پر منگل کو لوک آیکت کی ٹیم نے چھاپہ ماری کی۔ابتدائی تحقیقات میں ہی دو مقامات پر 57 ایکڑ کے فارم ہاؤس سمیت کروڑوں کی جائیداد کا انکشاف ہوا ہے۔ٹیم مزید تفتیش میں لگی ہوئی ہے۔لوک آیکت کے ذرائع سے ملی ...