اترکنڑا میں اچانک ہونے والی تیز رفتار بارش سے فصل ، گھروں کو نقصان : یلاپور تعلقہ میں ایک گھر زمین بوس

Source: S.O. News Service | By Abu Aisha | Published on 2nd December 2021, 11:54 PM | ساحلی خبریں |

کاروار:2؍ ڈسمبر(ایس اؤ نیوز) اترکنڑا میں منگل اور بدھ کی رات اچانک ہوئی طوفانی ہواؤں اور  تیز رفتار بارش  سے جہاں عوام کو کئی پریشانیوں کا سامنا کرنا پڑا تو وہیں یلاپور تعلقہ کے امچگی میں نانو منجا دیواڑیگا کی ملکیت والا گھر مکمل زمین بوس ہوگیا۔

بارش والی رات گھر کے سبھی لوگ  باہر ہونےکی وجہ سے کوئی جانی نقصان نہیں ہوا۔ تیز رفتاری سے برستی بارش سے گھر کی چھت اور دیواریں بھیگ گئیں اور گھر گرنے کاسراغ ملتے ہی سبھی لوگ پیشگی احتیاط کے طورپر گھر میں موجود سبھی چیزوں کو دوسری جگہ منتقل کرتےہوئے خود کو بھی محفوظ مقام پر پہنچ کر پناہ لے لی۔

گھر زمین بوس ہونےکی اطلاع پر گرام پنچایت ممبر کوپیا پجاری ، کھیتان ڈیسوزا ، جی آر بھٹ، دتو نائک سمیت کئی ممبران نے جائے وقوع پر پہنچ کر معائنہ کیا۔ ولیج اکاؤنٹنٹ سویتا بھجنتری نےپنچ نامہ کرتےہوئے رپورٹ کی کہ گھر مکمل طورپر زمین بوس  ہوگیا ہے۔

اچانک ہونے والی بارش سے ضلع کے مختلف مقامات پر کٹاؤ کے لئےتیار کھڑی فصل اور سوکھنے کےلئے رکھے گئے چارے کو بھاری نقصان پہنچا ہے۔ کاروار سمیت کئی مقامات پر دن میں دھوپ تھی تو سرسی اور اطراف کے علاقوں میں دن بھر سیاہ بادل چھائے رہے۔ رات 8بجے کے بعد تیز رفتار بارش شروع ہوئی ۔ بھٹکل میں سب سے زیادہ 3.7سنٹی میٹر، کمٹہ میں 2.4س م ، ہوناور میں 2س م  بارش کی پیمائش کی گئی ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

کاروار: دانتوں میں درد اور سردرد جیسی عام بیماریوں پر اسپتال نہ جائیں ،شدید بیمار پڑنے یا ایمرجنسی کی صورت میں ہی اسپتال کا رخ کریں: کاروار اور ہوناور میں پانچ دنوں تک اسکول بند

شدید بیمار پڑنے اور ایمرجنسی ہونے پر ہی سرکاری، پرائیویٹ  اسپتال یا سوپر اسپیشالٹی اسپتال کا رُخ کریں اور معمولی بیمار مثلاً دانتوں کا درد، سر میں درد وغیرہ پر  اسپتالوں کا رُخ نہ کیا جائے، ایسی عام بیماریوں کے لئے مقامی ڈاکٹروں کے ذریعے علاج کراسکتے ہیں۔ اس طرح  کا حکم حکومت ...

جامعہ اسلامیہ بھٹکل کے ہونہار فرزند کابڑا کارنامہ ۔ انٹرنیشنل سطح پر روشن کیا بھٹکل کانام

کہتے ہیں کہ درخت اپنے پھل سے پہچانا جاتا ہے اور تعلیمی ادارے اپنے فارغین کی لیاقت اور صلاحیت سے پہچانے جاتے ہیں، ہندوستان میں بڑے تعلیمی اداروں کا نام کچھ شخصیات نے ہی روشن کیا ہے ،  الحمد للہ بھٹکل کے دینی و عصری تعلیم گاہوں کے طلبہ و طالبات بھی بڑی حد تک اپنی مادر علمی کی نیک  ...