کاروار:ضبط کی گئی پلاسٹک اشیاء کو پگھلا نے کے لئے بلدی اداروں کے پاس نہیں ہے مشین

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 11th June 2019, 9:36 PM | ساحلی خبریں |

کاروار11/جون (ایس او نیوز) ضلع شمالی کینرا کے مختلف شہروں میں بلدی اداروں کے افسران چھاپہ ماری کرتے ہوئے غیر قانونی طورپر فروخت کی جارہی پلاسٹک کی تھیلیاں اوردیگر اشیاء ضبط کرتے ہیں۔لیکن ضبط کی گئی ان اشیاء ٹھکانے لگانے کے لئے پگھلانے والی(میلٹنگ) مشین کسی بھی بلدی ادارے کے پاس نہیں ہے اس لئے یہ ساری چیزیں گودام میں دھول چاٹ رہی ہیں۔

پلاسٹک تھیلیوں اوردیگر اشیاء کے استعمال پر پابندی اس لئے لگائی گئی ہے کہ وہ ماحول میں آلودگی پیدا کرتے ہیں۔ زمین میں مل کرختم نہیں ہوتیں بلکہ مٹی کو خراب اور ناقابل زراعت بنانے کا کام کرتی ہیں۔ اب افسران کا مسئلہ یہ ہے کہ ٹھکانے لگانے کے لئے ضروری مشین نہیں ہے اور وہ لوگ اسے کسی میدان یا ندی اور دریا میں پھینک بھی نہیں سکتے۔معلوم ہوا ہے کہ امسال جنوری سے اب تک ضلع میں کُل اٹھارہ مقامات پر0.50ٹن پلاسٹک کی اشیاء ضبط کی گئیں اور 8,750روپے جرمانہ وصول کیا گیا۔کاروار میونسپالٹی حدود میں 0.08ٹن،سرسی میں 0.04ٹن، بھٹکل ٹی ایم سی حدود میں 0.01ٹن، ہوناور تعلقہ پنچایت میں 0.15ٹن اور یلاپور تعلقہ پنچایت علاقے میں 0.22ٹن پلاسٹک ضبط کیا گیا ہے۔حقیقی صورتحال یہ ہے کہ بلدی افسران کی بار بار کارروائی کے باوجودگاؤں اور شہروں میں پلاسٹک کے استعمال میں کوئی کمی نہیں آئی ہے۔بعض مقامات سے یہ الزامات بھی سامنے آرہے ہیں کہ دفتری کارروائی کے لئے پلاسٹک ضبط کرنے کے بعد خود بلدی افسران ہی تاجروں کو یہ مال لوٹا رہے ہیں۔ شک ظاہر کیا جاتا ہے کہ ضلع شمالی کینرا میں پلاسٹک اشیاء کی فراہمی ہبلی شہر اور ریاست گواسے ہورہی ہے۔ پابندی پر صحیح معنوں میں عمل درآمد کرنا ہوتو پھر سرکاری افسران کو اس کی سپلائی پر روک لگاناہوگا۔

ایک نظر اس پر بھی

علاج کے لئے منگلور جانے والے توجہ دیں: منگلورو اور اڈپی کے اسپتالوں میں کل 17جون کو او پی ڈی خدمات رہیں گی بند

 بھٹکل اور اطراف سے کافی لوگ  علاج معالجہ کے لئے پڑوسی ضلع اُڈپی اور مینگلور کے اسپتالوں کا رُخ کرتے ہیں،  ان کے لئے  بری  خبر یہ ہے کہ کل  ڈاکٹروں کے احتجاج کے پیش نظر  مینگلور اور اُڈپی کے اسپتالوں میں باہری  مریضوں  کا علاج  نہیں ہوگا۔

آئی ایم اے میں سرمایہ کاری کرکے دھوکہ کھانے والے متاثرین کی قانونی مدد کے لئے اے پی سی آر کی خدمات دستیاب

آئی ایم اے میں سرمایہ کاری کرکے دھوکہ کھانے والے متاثرین کی قانونی رہنمائی اور اُن کی  مدد کے لئے  اسوسی ایشن فور پروٹیکشن آف سیول رائٹس  (اے پی سی آر)  کی خدمات حاصل کی جاسکتی ہے۔جن  لوگوں نے  اپنی چھوٹی چھوٹی سرمایہ  کاری  اس کمپنی میں کی تھی اور اب وہ کنگال ہوچکے ہیں، اے پی ...