کاروار کی رکن اسمبلی روپالی نائک دلت مخالف ہے: دلت سنگھرش سمیتی کا الزام

Source: S.O. News Service | By Abu Aisha | Published on 21st January 2020, 7:41 PM | ساحلی خبریں |

کاروار:21؍جنوری(ایس اؤ نیوز) دلت افسران اپنی سرکاری  خدمات کو بہتر اندازمیں انجام دینے کے باوجود انہیں نشانہ بنا کر ان کے  بے وجہ تبادلے کرتےہوئے رکن اسمبلی روپالی نائک دلت مخالف پالیسی پر عمل پیرا ہونے کا دلت سنگھرش سمیتی کے ریاستی سنچالک دیپک کوڈالکر نے الزام لگایا۔

ضلع پتریکابھون میں پیر کو پریس کانفرنس کے ذریعے بات کرتےہوئے دیپک نے کہاکہ حالیہ دنوں میں ضلع سے دلت افسران کے کچھ زیادہ ہی  تبادلے کئے جارہے ہیں۔ کریمس ڈائرکٹر ڈاکٹر شیوانند دوڈمنی پر کچھ لوگ رشوت خوری کا الزام لگائے ہیں۔ اگر وہ رشوت خور ہوتے تو میڈیکل کالج کی اتنی بڑی عمارت ہی نہ ہوتی ، ان سے کسی ایک مریض کو بھی تکلیف نہیں پہنچی ہے، بہترین عمارت تعمیر کرتےہوئے خدمات انجام دینےو الے دوڈمنی کا رکن اسمبلی نے تبادلہ کیا ہے۔ سرکاری انجنئیرنگ کالج کے پرنسپال نتیانند کی بھی یہی حالت کی جارہی ہے۔ کچھ لوگ انہیں خاطی قرار دے رہے ہیں، رکن اسمبلی روپالی نائک ڈی سی ایم کے سامنے ہی پرنسپال کو ایک لہجے میں گالیاں دی ہیں، پسماندہ طبقات سے تعلق رکھنے والے ڈی ڈی پی آئی ، ذرائع ابلاغ محکمہ کے افسرکا بھی رکن اسمبلی نے تبادلہ کرایا ہے۔

ایک شفاف انتظامیہ دینے کے بجائے رکن اسمبلی اور ان کی  بی جے پی سرکار تبادلوں کو ہی ایک دھندہ بنا لی ہے۔ سیلاب  سے ہوئے نقصانات کی بھرپائی کے لئے منظور ہوئے کروڑوں روپئےکا معاوضہ رکن اسمبلی ٹینڈربلائے بغیر راست ٹھیکداروں کو کام دے رہے ہیں۔ اصول کے مطابق پسماندہ طبقے کے ٹھیکداروں کو ملنے والا کام بھی نہیں مل پارہاہے۔ کچھ ماہ پہلے میرے کئے ہوئے کام کو خستہ بتاتے ہوئے دوسرے مقام منتقل کئے جانےکا الزام لگایا ۔ ضلع صدر ایس فکیرپا نے پریس کانفرنس میں کہاکہ نقل کرنے نہیں دینےکی وجہ سے انجنئیرنگ کالج کے پرنسپال کا تبادلہ کیاگیا ہے۔ بھٹکل کے سونارکیری اسکول کے اساتذہ کے جوڑےکو ہراساں کیا جارہاہے۔ ضلع میں دلتوں  پر ہونے والے استحصال کے متعلق کوئی بھی پوچھنے والا نہیں ہے۔ کسی بھی دلت کا منتخب نہ ہونے سے مسائل پیدا ہورہےہیں۔

دیپک نے اٹراسٹی قانون کے غلط استعمال سے انکار کرتےہوئے کہاکہ ہم کبھی اس کا غلط استعمال ہونے نہیں دیں گے۔ اس سلسلے میں بھی جھوٹ بولا جارہاہے، حالیہ دنوں میں دلت افسران کو ٹارگیٹ کرتےہوئے اے سی بی کے ذریعے انہیں پھنسانے کی کوشش کئے جانے کا الزام لگایا۔ گدگ، بلاری علاقے میں بیڈجنگم طبقے کے نام پر سرسی میں جھوٹی ذات سرٹیفکٹ حاصل کی جارہی ہے اس تعلق سے جانچ کا مطالبہ کیا۔ پریس کانفرنس میں بسوراج سنگمیش، گھارو مانگیریکر، دنڈپا بنڈی وڈر، ششی کانت، سچن بورکر، واسو ڈاونگیرہ وغیرہ موجود تھے۔

ایک نظر اس پر بھی

بھٹکل میں کورونا سے لڑنے تنظیم کےذمہ داران بھی نہایت متحرک؛ پوری ٹیم میدان میں کام کررہی ہے؛ چوطرفہ ہورہی ہے ستائش

اس وقت نہ صرف شہر بھٹکل بلکہ پوری دنیا کورونا وائرس کی وباء سے  حیران وپریشان ہے ایک طرح سے اس وباء سے  پوری دنیا کا نظام درہم برہم ہوگیا ہے جبکہ لاک ڈاؤن کے اعلان کے بعد جس طرح سے ملک بھر میں غریب عوام اور یومیہ مزدور طبقہ کو دقتوں کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے اس سے ہرکوئی واقف ہیں ...

بھٹکل میں شدت کی گرمی کے بعدوقت سے پہلے ہی برسی بارش؛ساحلی علاقوں میں بجلیوں اور بادلوں کی گڑگڑاہٹ کے ساتھ لوگوں کی ہوئی صبح

بھٹکل سمیت ساحلی کرناٹک میں گذشتہ کچھ دنوں سے شدت کی گرمی سے عوام پریشان تھے، درجہ حرارت بڑھتے ہوئے بھٹکل میں پیر کو 37 ڈگری سیلسیس تک پہنچ گیا تھا، مگر منگل صبح قریب 5 بجے  اچانک آسمان میں بجلیوں کی زبردست چمک اور  بادلوں کی گڑگڑاہٹ کے ساتھ بارش شروع ہوگئی اور دیکھتے ہی ...

بھٹکل سے مزید تھوک کے نمونے جانچ کے لئے روانہ؛ آج موصول ہونے والی تمام رپورٹس بھی نیگیٹیو؛ کیا کسی کی رپورٹ پوزیٹیوآنے کا خدشہ ہے ؟

کورونا وائرس کو لے کر شہر سمیت پورے ملک میں لاک ڈاون جاری ہے اور ہر روز مشکوک لوگوں کے تھوک کے نمونے جانچ کے لئے روانہ کئے جارہے ہیں۔اب تک بھٹکل سے جن لوگوں کے تھوک کے نمونے  جانچ کے لئے روانہ کئے جارہے تھے،  راحت کی خبریں موصول ہورہی تھیں یہاں تک کہ مینگلور اور کاروار میں ...

بھٹکل میں کورونا وائرس کو لے کر کیاسوشیل میڈیا میں کسی طرح کی سازش رچی جارہی ہے ؟ مسلمانوں سے دور رہنے اورکسی بھی طرح کا لین دین نہ رکھنے کے مسیجس وائرل

ایسا لگتا ہے کہ کورونا وائرس کی وباء فسطائی اور فرقہ وارانہ ذہنیت والے غیر مسلموں کے لئے مسلمانوں کے خلاف اپنی بھڑاس نکالنے کا نیا ہتھیار بن گئی ہے۔ ایک طرف کورونا وائرس کے نام پر مسلمانوں سے دوری رکھنے کی تلقین کی جارہی ہے  اور مسلمانوں سے کسی بھی طرح کی خریداری کرنے کی ...

کورونا کے نام پر مسلمانوں پر حملہ؛ باگلکوٹ میں تین مسلم لوگوں کو ایک گاوں میں داخل ہونے سے روکنے کی واردات

باگلکوٹ کے مدھول پولیس اسٹیشن کے حدود میں آنے والے ایک گاؤں میں چند شرپسندوں نے مسلمانوں کو اپنے گاؤں میں داخل ہونے سے عملاً روکتے ہوئے ان پر حملہ کرنے کی واردات پیش آئی ہے  جس کی ویڈیو کلپ بھی سوشیل میڈیا پر  وائرل ہوگئی ہے۔