کاروار: مرکزی حکومت کے فوریسٹ قانون ترمیمی بل سے اترکنڑا ضلع کے ہبلی ۔ انکولہ ریلوے لائن سمیت جاری منصوبہ جات کو گرین سگنل : منصوبہ جات کےلئے محکمہ جنگلات کی منظوری لازمی نہیں

Source: S.O. News Service | By Abu Aisha | Published on 13th October 2021, 4:50 PM | ساحلی خبریں |

کاروار:13؍ اکتوبر(ایس اؤ نیوز) فوریسٹ تحفظ قانون1980میں مرکزی حکومت نے  ترمیم کےلئے قدم بڑھایا ہے، جس کے نتیجے میں کئی اہم منصوبوں کو  بغیر کسی منظوری کے فوریسٹ زمین کا استعمال کرتےہوئے نافذ کیا جانا ممکن ہوگا۔ اگر فوریسٹ قانون میں ترمیم ہوجاتی ہے تو کئی دہائیوں سےغفلت کا شکار ہوئے ہبلی۔ انکولہ ریلوے منصوبہ کی تکمیل یقینی کہی جارہی ہے اور اس کے ساتھ ساتھ جنگلات ، فوریسٹ کے نام پر ادھورے منصوبہ جات کو بھی نئی سانس ملنے کی توقع ہے۔

ہبلی۔ انکولہ کے درمیان سڑک توسیع  کےلئے 54ہیکٹر اور ریلوے لائن کی ترقی کےلئے 595ہیکٹر زمین کی ضرورت ہے۔ اس سلسلےمیں بہت پہلے ہی پیش کش ارسال کی جاچکی ہے، لیکن فوریسٹ کا کانٹا اس کو روکے رکھاہے۔ فوریسٹ ترمیمی قانون نافذ ہوتا ہے تو ساحل اور مغربی گھاٹ کے میدانی علاقوں کے درمیان رابطہ ممکن ہوگا۔

قانون میں ترمیم کیوں ؟:1980میں نافذ کئے گئے سخت فوریسٹ قانون کی وجہ سے کئی منصوبہ جات فائل کی حدتک بند  ہیں اور منصوبوں کو دیمک لگ رہی ہے۔ متعلقہ قانون کے چلتے کسی بھی منصوبے کے لئے فوریسٹ زمین کا استعمال کرنا ہے تو مرکزی وزارت ماحولیات اور جنگلات سے منظوری لینا لازمی ہے۔ وزارت کی منظوری کے بغیر زمین کا استعمال نہیں کرسکتے۔ مگر اب  مرکزی حکومت کے مجوزہ ترمیمی بل کے تحت کسی بھی منصوبے کےلئے وزارت کی منظوری ضرور ی نہیں ہوگی۔

موجودہ دورکے ماحولیاتی ، معاشیاتی اور سماجیاتی نظام میں کئی ساری تبدیلیاں  ہوئی ہیں۔ ترقی کے پیش نظر زمانے کے تقاضوں کے تحت فوریسٹ قانون میں ترمیم کی ضرورت ہے۔ شہر جیسے جیسے وسعت پاتے ہیں اسی طرح آبادی میں بھی اضافہ ہوتارہتاہے، ضروریات کےمطابق ترقی کےلئے فوریسٹ زمین بھی درکار ہوتی ہے۔ اسی لئے مرکزی حکومت فوریسٹ قانون میں ترمیم کرنے جارہی ہے۔

 اس سلسلےمیں مرکزی حکومت کے وزارت ماحولیات اور جنگلات نے ملک کی سبھی ریاستوں کو مجوزہ ترمیمی بل روانہ  کی ہے  اور عوام سےصلاح مشورہ طلب کرتے  ہوئے 15دنوں کا وقت دیاگیا ہے جس کو ای میل کے ذریعے بھیج سکتےہیں۔ پھر اس کے بعد فائدے اور نقصانات کا جائزہ لینےکے بعد فیصلہ لیا جائے گا۔ محفوظ  اور مختص جنگلات سمیت دیگر فوریسٹ علاقے ترمیم کا حصہ نہیں ہونگے لیکن مختلف محکمہ جات کے زمینی دستاویزات میں کسی وجہ سے ’فوریسٹ‘ درج کیاگیا ہے،کئی علاقے ایسے ہیں جن کے  ایک ہی زمینی دستاویزات میں فوریسٹ اور روینیو کے  درج ہونے سے  پیچیدگی ہورہی ہے اور کئی مسائل پیدا ہورہے ہیں۔ اسی طرح کئی مقامات پر زرعی زمین کو فوریسٹ زمین کہاگیا ہے۔ تو متعلقہ محکمہ جات کےلئے فوریسٹ محکمہ سےمنظوری لینا لازمی ہے۔ انہی وجوہات سے کئی سارے منصوبہ جات التوا مںیں پڑے ہیں یا پھر متعینہ وقت میں پورے نہیں ہورہے ہیں۔ انہی قانونی رکاوٹوں کو دورکرتے ہوئے حل نکالنے کےلئے  مرکزی حکومت نے  فوریسٹ قانون میں ترمیم کا فیصلہ کیا ہے۔

ترمیمی قانون کے فائدے :آب پاشی ، سڑک رابطہ ، ایندھن ،ریلوے لائن،  صنعت کاری ، ہوائی اڈے  سمیت مختلف منصوبوں کے نفاذ کے لئے جو رکاوٹیں ہیں ان کو دورکرنے کےلئے مرکزی حکومت نے مجوزہ ترمیمی بل لانےکا فیصلہ کیا ہے۔ اگر یہ ترمیمی بل منظور ہوجاتاہے تواترکنڑا ضلع میں  ہبلی۔ انکولہ ریلوےلائن منصوبہ، شاہراہ کی تعمیرات، سرسی ۔ کمٹہ شاہراہ اور انکولہ ۔الگیری ہوائی اڈے کی تعمیر کےلئے درپیش رکاوٹیں بھی حل ہونےکی بات کہی جارہی ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

بھٹکل کے اعلیٰ افسران کے خلاف ہتک ذات مقدمہ درج ہونے کا معاملہ : سرکاری ملازمین سنگھا کی کڑی مذمت

18اکتوبر کو بھٹکل میونسپالٹی کے دکانوں کی نیلامی میں شریک ہوئے بھٹکل اسسٹنٹ کمشنر، تحصیلدار اور چیف آفیسر کے خلاف بغیر کسی وجہ کے ، غیرقانونی طورپر ہتک ذات کا معاملہ درج کئےجانے کی کرناٹکا ملازمین سنگھ بھٹکل شاخ نے مذمت کی ہے۔

کاروار: طلبا اور روزگار وں کےلئے تعلقہ ، ضلعی ، ریاستی اور قومی سطح کا تقریری مقابلہ : 18سے 29سال کی عمر والے توجہ دیں؛ قومی سطح پر اول آنے پر دولاکھ روپیہ انعام

یوتھ اینڈ اسپورٹس وزارت کے تعاون سے نہرو یوا کیندر کی جانب سے تعلقہ ، ضلع، ریاستی اور قومی سطح پر ہندی اور انگریزی زبانوں میں  تقریری مقابلوں کا انعقاد کئے جانے نہرو یوا کیندر کے ذمہ داروں نے پریس ریلیز کے ذریعے جانکاری دی ہے۔

بھٹکل جماعت اسلامی ہند اور سدبھاؤنا منچ بھٹکل کے اشتراک سے’حضرت محمد  ﷺ مثالی رہنما‘ کے عنوان پر پروگرام کا انعقاد

آخری نبی حضرت محمد ﷺ کی تعلیمات کو ریاستی عوام کے سامنے پیش کرنےکی غرض وغایت لے کر جماعت اسلامی ہند کرناٹکا کی طرف سے 17سے 26اکتوبر تک منائی جارہی ’سیرتؐ مہم ‘ کی مناسبت سے بھٹکل کے دعوت سنٹر میں 26اکتوبر بروزمنگل کو  منعقدہ سیرت پروگرام میں مقررین نے اپنے خیالات کا اظہار ...

بھٹکل ہیبلے گرام پنچایت انتظامیہ پر رشوت خوری کا الزام : خصوصی میٹنگ میں الزام ثابت کرنے کا مطالبہ

تعلقہ کے ہیبلے گرام پنچایت کے چند ممبران نے گرام پنچایت انتظامیہ  پر رشوت خوری کا الزام عائد کئےجانےکو لےکر ہیبلے پنچایت ہال میں پنچایت ممبران کی  خصوصی میٹنگ منعقد ہوئی ۔