کاروار: نارائن گروکے مجسمہ کو یوم جمہوریہ میں قبول کرنے سے انکار کرنے پر آریہ اور اِڈگا طبقے میں ناراضگی

Source: S.O. News Service | By Abu Aisha | Published on 18th January 2022, 9:03 PM | ساحلی خبریں |

کاروار:18؍ جنوری (ایس اؤ نیوز) مرکزی حکومت  نے اس مرتبہ یوم جمہوریہ کی تقریب میں نارائن گرو کے مجسمے کو شامل کرنےسے انکارکیا ہے جس پر آریہ اور اِڈگا (نامدھاری) طبقات میں  سخت ناراضگی پائی جارہی ہے، ایسے میں ان طبقات کے لیڈران نے  مرکزی حکومت پر نا انصافی کئے جانے کا الزام لگایا ہے۔

مجسمہ کو قبول نہ کرنے پر قومی مہامنڈل کے پرنوانند سوامی جی نے پریس کانفرنس میں کہاکہ یوم جمہوریہ کی تقریب  میں نارائن گرو کے مجسمے کی نمائش کی تیاری کے لئے مرکزی حکومت کو عرضی دی گئی تھی۔ لیکن محکمہ دفاع نے اس کا انکار کرتےہوئے آدی شنکر کامجسمہ تیار کرنےاور اگر یہ ہو نہیں  سکتاہے تو اپنی عرضی واپس لینے کوکہا ہے۔سوامی جی نے الزام لگایا کہ  مرکزی حکومت ذاتوں کے درمیان جھگڑے پیدا کررہی ہے، ہم بھی آدی سنکر  کا احترام کرتے ہیں، وہ بھی ادویت(وحدانیت)کے حامی تھے جب کہ نارائن گرو نے بھی اسی اصول کے تحت اپنی زندگی گزاری تھی۔

پرنوانندسوامی جی نےکہاکہ مرکزی حکومت کی ناانصافی کو کسی حالت میں برداشت نہیں کیاجائےگا انہوں نے زور دیا کہ  اس مرتبہ کے یوم جمہوریہ کی تقریب میں نارائن گروکے  مجسمہ کو لازمی طورپر شریک کیا جائے۔ سوامی جی نے کہاکہ وہ اس  معاملےکو لے کر اگلے دو تین دنوں میں وزیر دفاع راج ناتھ سنگھ سےبھی ملاقات کرنے  کی کوشش  کریں گے۔

امدادمنظور کریں: ملک بھر میں 23فی صدآریہ ، اِڈگاکے مختلف نام ہیں  (نامدھاری ،بھلوا، پجاری )۔متعلقہ طبقے کی ترقی کے لئے کوئی نگم، کارپوریشن یا بورڈ کا حکومت نے ابھی تک کوئی اعلان نہیں کیا ہے۔ سوامی جی نے حکومت سے مطالبہ کیاکہ وہ پسماندہ طبقات کے لئے 500 کروڑروپیوں کی منظوری دے۔ طبقے کا اصل پیشہ سیندھی( دیشی شراب)اتارنے کی اجازت دی جائے۔ رائچور، کلبرگی کے علاقوں میں اس کا موقع دیاگیا ہے۔پروانند سوامی جی نے انتباہ دیتے ہوئے بتایا کہ  متعلقہ مطالبات کو قبول کرنا ضروری ہے ورنہ اس کے نتائج  2023کے انتخابات میں  حکومت کو مل جائیں گے۔

ایک نظر اس پر بھی

منگلور کے قریب بنٹوال میں کنواں چوری ہونے کا عجیب معاملہ - پی ڈی او نے درج  کروائی شکایت 

گمشدگی اور چوری کا ایک غیر معمولی معاملہ جس میں بنٹوال تعلقہ کے ناریکومبو گرام پنچایت میں ایک کنواں اپنی جگہ سے غائب ہوجانے کی رپورٹ پنچایت ڈیولپمنٹ آفیسر نے پولیس کے پاس درج کروائی ہے ۔

بنٹوال : سرکاری اسکول میں گنپتی پوجا - بی ای او کی طرف سے تحقیقات - اسکول ڈیولپمنٹ کمیٹی صدر مستعفی ۔ گاوں والے ناراض 

بنٹوال تعلقہ کے پڈی باگیلو نامی گاوں میں سرکاری اسکول دوبارہ کھلنے پر   'گنپتی ہاونا' انجام دی گئی جس پر بلاک ایجوکیشن آفیسر نے اسکول ڈیولپمنٹ کمیٹی صدر سے پوچھ تاچھ کی اور ڈی ڈی پی آئی کو رپورٹ بھیج دی ۔ اس کے جواب میں ایس ڈی سی صدر بال کرشنا کارنتھ نے اپنا استعفیٰ دے دیا جس کے ...

منگلورو : حجاب پر نیا ہنگامہ - منگلورو یونیورسٹی کالج میں حجاب مخالف اے بی وی پی کا احتجاجی دھرنا

شہر کے ہمپن کٹا میں واقع منگلورو یونیورسٹی کالج میں مسلم طالبات حجاب کے ساتھ  کالج میں حاضر ہونے پر اے بی وی پی سے تعلق رکھنے والے حجاب مخالف طلبہ نے احتجاجی مظاہرا کیا اور حجاب پہننے پر پابندی لگانے کا مطالبہ کرتے ہوئے کالج احاطہ میں دھرنا دیا۔

کنداپور : معاشی بحران کی وجہ سے چینمئی ہاسپٹل کے مالک نے کی خودکشی - ڈیتھ نوٹ میں بتایا 2 افراد کو ذمہ دار

مشہور تاجر اور چینمئی ہاسپٹل کے علاوہ کئی بنگلورو، اڈپی اور شمالی کینرا وغیرہ میں ہوٹلس اور دوسرے تجارتی مراکز کے مالک کٹّے گوپال کرشنا راو عرف کٹّے بھوجنّا (79 سال) نے اپنے ہی ریوالور سے گولی چلا کر جو خودکشی کی ہے اس سلسلے میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ انہوں نے معاشی بحران کی وجہ ...

وزیر دفاع راج ناتھ سنگھ کا دو روزہ کاروار دورہ : ملکی سطح پر تیار کردہ آب دوز میں سمندری سفر ؛ساحلی پٹی کو مضبوط ومستحکم کیاجائے گا

ملک کی ساحل پٹی پر امن و شانتی اور خیر سگالی کو مزید استحکام دینے میں بھارتی بحریہ کو مضبوط کیا جا رہاہے۔ یہ کسی بھی ملک کے خلاف نہیں ہے۔ کاروار کے دو روزہ دورے پر تشریف لائے وزیر دفاع راج ناتھ سنگھ نے ان خیالات کا اظہار کیا۔

سرسی : حجاب، حلال کی مخالفت کیوں ؟ اذان دی جائے تو کیا برائی ہے؟ : حزب مخالف لیڈر سدرامیا کا سوال

حجاب ، حلال بہت پہلے سے چلا آر ہاہے، اب کیوں ہنگامہ مچانے لگے ہیں؟ مسجد میں اذان دی جاتی ہے تو اس میں کیا برائی ہے؟ ہرایک کو اپنے مذہب کے مطابق عمل کرنے کی دستور نے انہیں حق دیا ہے، مذہبی معاملات کو سیاسی مقاصد کے لئے استعمال نہیں کرنا چاہئے۔ کانگریس لیڈر، حزب مخالف لیڈر سدرامیا ...