کاروار: گو ا سے لوٹ رہا ہے مہاجر مزدوروں کا ہجوم۔ ماجالی میں سرکاری افسران اور بسیں ہیں تیار

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 6th May 2020, 12:42 PM | ساحلی خبریں | ملکی خبریں |

کاروار6/مئی (ایس او نیوز) ملک میں لاک ڈاؤن لاگو ہونے کے بعد گزشتہ 42 دنوں سے کرناٹکا کے ہزاروں مزدور ریاست گوا میں پھنسے ہوئے ہیں۔ان مہاجر مزدوروں کوگوا سے واپس لانے اور ان کے گھروں تک پہنچانے کے لئے حکومت کرناٹکا نے پوری طرح تیاریاں کرلی ہیں۔   چونکہ ان مزدوروں کو ضلع شمالی کینرا سے گزر کر ریاست کے دیگر مقامات تک جانا ہے اس لئے ان کو کاروار میں ماجالی سرحد پر  کے ایس آ ر ٹی سے بسوں کے ذریعے روانہ کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

 ایک ہفتے تک چلے گاسلسلہ:     مہاجر مزدوروں کی آمد کا سلسلہ بدھ کے دن صبح سے شروع ہونے والا ہے اس لئے یہاں پرمناسب تعداد میں سرکاری بسوں کا انتظام کرنے کے علاوہ افسران کی ٹیمیں بھی تعینات کی گئی ہیں۔گوا سے مہاجر مزدوروں کی آمد اور پھر اندرون ریاست ان کی روانگی کا سلسلہ ایک اندازے کے مطابق آئندہ ایک ہفتے تک چلنے والا ہے۔پتہ چلا ہے کہ کاروار کی سرحد پر جنوبی کرناٹکا کے اضلاع شیموگہ، چکمگلورو، ٹمکورو، بنگلورو، منگلورو، کولار وغیرہ کی طرف جانے والے مزدور پہنچیں گے جبکہ شمالی کرناٹکا کے اضلاع سے تعلق رکھنے والے مزدور بیلگاوی کی سرحد پرپہنچنے والے ہیں۔

 سرکاری بسوں کا انتظام:    کے ایس آر ٹی سی کے ذرائع کے مطابق مزدوروں کو ان کے گاؤں تک پہنچانے کے لئے  300بسیں مختص کی گئی   ہیں۔اور اس کام کو بحسن وخوبی انجام دینے کے لئے ضلع شمالی کینرا کے سابق ایس پی ونائیک پاٹل کو نوڈل آفیسر کے طورپر نامزد کیاگیا ہے۔ انہیں ہدایت دی گئی ہے کہ تمام مزدوروں کو اپنے اپنے گھر پہنچنے کی سہولت فراہم کرنے میں کوئی کوتاہی نہ ہوا ور اس کے پیش نظر کوئی سیاسی رنگ پیدا نہ ہوجائے جو ریاست میں ایڈی یورپا کے لئے پشیمانی کا سبب بن جائے۔دوسری طرف کے ایس آر ٹی سی کے ذمہ داران کے لئے اپنے عملے کی صحت اور ان کاتحفظ بھی ایک بڑا مسئلہ بن کر سامنے آیا ہے، جس سے نپٹنے کے لئے تمام احتیاطی تدابیر اختیار کی جارہی ہیں۔

 مزدوروں کی طبی جانچ:    گوا اور کرناٹکا کی سرحد پر مزدوروں کی آمد کے بعد سب سے پہلے ان کا طبی معائنہ کیاجائے گا۔ چونکہ سابقہ الیکشن کے موقع پر اسی راستے سے تقریباً 2000مزدوروں کو گوا سے کرناٹکا میں لایا گیا اور اس وقت بھی تمام مزدوروں کی طبی جانچ کی گئی تھی، اس لئے اس تجربے کی روشنی میں اب کی بار محکمہ صحت کے افسران کو زیاد ہ پریشانی نہیں ہوگی۔ پھر ان مزدوروں کو کاروار کے سرکاری اسپتال میں مزید تفصیلی جانچ کے لئے لایا جائے گا۔اور بیماری کی کوئی علامت نہ ہونے کی صورت میں ان کو اپنے اپنے گھر کے لئے روانہ کیا جائے گا۔ضلع ڈی سی نے بتایا کہ ان مزدوروں کو آروگیہ سیتو ایپ پر فارم بھرنے کے بعد اور ان کو ایپ پر رجسٹر کرنے کے بعد ہی کاروار سے آگے جانے کی اجازت دی جائے گی۔اس کام کی ذمہ داری کاروار اسسٹنٹ کمشنر ایم پریانگا اور بلدیہ کے ایکزیکٹیو انجینئر آر پی نائک کو سونپی گئی ہے۔

 گوا سے کنڑیگاس کو بھگانے کی تحریک:     پچھلے کچھ عرصے سے سننے میں آرہا ہے کہ گوا میں موجود ہزاروں کنڑیگا مزدوروں کو وہاں سے بھگانے کے لئے ’پوگو‘ (پرسن آف گوون آریجین)نامی ایک انقلابی تحریک وہاں سرگرم ہوگئی ہے۔بتایا جارہا ہے کہ اسے گوا کی ریاستی حکومت کی درپردہ تائید بھی حاصل ہے۔ اس تحریک کامقصد گوا کے لوگوں کو ہی ریاست میں رہنے کے مواقع فراہم کرنا اور باہری لوگوں کو گوا سے خالی کروانا ہے۔ان کا خیال ہے کہ باہری لوگوں کے گوا میں موجود رہنے سے گوا کے جو اصلی باشندے ہیں ان کے حقوق مارے جارہے ہیں اور ان کے روزگار کے مواقع بیرون ریاست کے مزدور چھین رہے ہیں۔ اس سلسلے میں کئی مرتبہ جھڑپیں بھی ہوئی ہیں اور باہری مزدوروں کے ٹھکانوں پر حملے بھی ہوئے ہیں۔اب ایسا لگتا ہے کہ کورونا وباء کی صورت میں ’پوگو‘ کے لئے اپنے مقاصد پورے کرنے کا موقع ہاتھ آگیا ہے۔لیکن ماہرین کا کہنا ہے کہ بیرونی مزدوروں کے گوا سے چلے جانے کے بعد ریاست میں ماہی گیری، صفائی، تعمیرات وغیرہ کے شعبوں پر بڑا اثر پڑنے والا ہے، کیونکہ ان شعبہ جات میں پوری طر ح دیگر ریاستوں کے باشندے چھائے ہوئے تھے۔

ایک نظر اس پر بھی

بھٹکل میں اب کورونا کا قہر؛ 45 معاملات سامنے آنے کے بعدحکام کی اُڑ گئی نیند؛ انتظامیہ نےکیا دوپہر دوبجے سے ہی لاک ڈاون کا اعلان

بھٹکل میں کورونا کو لے کر گذشتہ چار پانچ دنوں سے جس طرح کے خدشات ظاہر کئے جارہے تھے، بالکل وہی ہوا، آج ایک ہی دن 45 کورونا کے معاملات سامنے آنے سے نہ صرف حکام  کی نیندیں اُڑ گئیں بلکہ عوام میں بھی خوف وہراس کی لہر دوڑ گئی۔  حیرت کی بات یہ رہی کہ آج جن لوگوں کے رپورٹس پوزیٹیو ...

منگلورو: رکن اسمبلی یوٹی قاد ر کی مداخلت کے بعد نجی اسپتال ہوا پوزیٹیو حاملہ خاتون کے علاج پر راضی

ایک نجی اسپتال میں زچگی کے لئے داخل ہونے والی خاتون کی کورونا جانچ رپورٹ پوزیٹیو آنے کے بعد اسپتال نے اس کاعلاج اور زچگی کرنے سے انکار کردیا۔ مگر رکن اسمبلی یوٹی قادر کی مداخلت کے بعداسپتال انتظامیہ اس خاتون کی زچگی اور علاج کے لئے راضی ہوگئی۔

کورونا سے متاثرہ لوگوں کو بھٹکل ویمن سینٹر کیا گیا شفٹ؛ مزید بستروں کی ہوگی ضرورت

بھٹکل ویمن سینٹر کو کوویڈ۔19 سینٹر میں منتقل کرنے کے بعد  آج اتوار کو بھٹکل سرکاری اسپتال سے تمام کورونا سے متاثرہ لوگوں کو منتقل کیا گیا۔ اس موقع پر قومی سماجی ادارہ مجلس اصلاح و تنظیم  بھٹکل کی جانب سے محمد صادق مٹا  موجود تھے۔ انہوں نے بتایا کہ کل سنیچر رات کو سونارکیری ...

سنڈے لاک ڈاون؛ بھٹکل میں مکمل خاموشی، راستوں کی چہل پہل مکمل بند؛ بازاراور دکانوں پر نظر آئے تالے

ریاست کرناٹک میں  کورونا کے  معاملات میں  روز بروز اضافہ کو دیکھتے ہوئے  ریاستی حکومت نے سنڈے لاک ڈاون کا اعلان کیا تھا، جس کے تحت کل سنیچر شام پانچ بجے سے کل پیر صبح پانچ بجے تک  مکمل لاک ڈاون  نافذ کیا گیا ہے، جس کے دوران آج بھٹکل  کی سڑکیں خاموش رہیں، عوامی چہل پہل مکمل بند ...

شیوسینا کا طنز:کانپور انکاؤنٹر نے’انکاؤنٹر اسپیشلسٹ‘یوپی حکومت کو بے نقاب کردیا 

شیوسینا نے کہا کہ کانپور انکاؤنٹر نے ’انکاؤنٹر اسپیشلسٹ‘اترپردیش حکومت کو بے نقاب کردیا ہے اور اس واقعے نے وزیر اعلی یوگی آدتیہ ناتھ کے ریاست میں غنڈہ گردی ختم کرنے کے دعوے پر سوالات کھڑے کردیئے ہیں۔

کورونا کے خلاف جنگ میں پنجاب دیگر ریاستوں سے آگے

عالمی وبا کورونا وائرس سے نمٹنے میں پنجاب ملک کی دیگرریاستوں سے آگے نکل گیا ہے۔ یہ اطلاع صحت اور خاندانی بہبود کے وزیر بلبیر سنگھ سدھو نے کل ربو اونچی گاؤں میں بابا مہاراج سنگھ کے شہیدی دیوس پر منعقدہ ریاستی سطح کے پروگرام کے بعد صحافیوں سے بات چیت کے دوران دی۔ انہوں نے کہا کہ ...