کرناٹک اردو اکیڈمی کی جانب سے اردو کے طلبہ کی حوصلہ افزائی کرنے کا فیصلہ؛ اُردو میں 80 فیصد یا اس سے زائد مارکس لینے والے توجہ دیں

Source: S.O. News Service | Published on 23rd August 2020, 8:48 PM | ریاستی خبریں | ساحلی خبریں |

بنگلورو،23؍اگست (ایس او نیوز) کرناٹک میں دسویں اور بارہویں جماعت کے امتحانات میں اردو مضمون میں امتیازی نمبرات حاصل کرنے والے طلباء و طالبات کی حوصلہ افزائی کے لئے انہیں نقد رقم دینے کا اعلان کیا گیا ہے۔ ساحل آن لائن سے گفتگو کرتے ہوئے   کرناٹک اردو اکیڈمی کی رجسٹرار عائشہ فردوس نے کہا کہ 2020 کے سالانہ امتحانات میں اردو مضمون میں 80 فیصد سے زائد مارکس حاصل کرنے والے طلبہ کو نقد رقم بطور انعام دی جائے گی۔ ایس ایس ایل سی کے طلباء کو 2 ہزار روپئے جبکہ پی یو سی دوم کے طلباء کو 3 ہزار روپئے کی رقم انعام کے طور پر دی جائیگی۔ انہوں نے کہا کہ اس سلسلہ میں تعلیمی اداروں کے ذریعہ فہرست حاصل کی جارہی ہے۔ عائشہ فردوس نے کہا کہ اردو میں ایم اے کرنے والے طلبہ کو بھی اسکالرشپ دینے کا کرناٹک اردو اکیڈمی نے فیصلہ لیا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ  ایک سال کیلئے ایم اے اردو کے فی طالب علم کو 25 ہزار روپئے کی اسکالرشپ دینے کا اردو اکیڈمی نے منصوبہ بنایا ہے۔

 عائشہ فردوس نے ریاست کے اردو داں طبقہ سے اپیل کی ہے کہ وہ اپنے  بچوں کو اردو اسکولوں میں داخل کروائیں۔ اگر انگریزی یا کنڑا میڈیم اسکولوں میں طلبہ زیرتعلیم ہیں تو وہ اردو مضمون اختیار کریں۔ اگر کالج میں اردو مضمون موجود نہ ہو تو اس کیلئے والدین اور مقامی اردو تنظیمیں کالج کی انتظامیہ سے رجوع ہوکر اردو مضمون رائج کرنے کا مطالبہ کریں۔ عائشہ فردوس نے بتایا  کہ انگریزی اور کنڑا ہائی اسکولوں میں اردو تیسری زبان کی حیثیت سے پڑھانے کی گنجائش موجود ہے۔  انہوں نے کہا کہ اردو تعلیم کو فروغ دینے کی ہر سطح پر کوششیں ہونی چاہئے۔ اردو تنظیمیں اردو زبان کی اہمیت اور ضرورت سے والدین کو آگاہ کریں۔ سماج  میں اردو تہذیب، اردو زبان و ادب کے سلسلے میں بیداری پیدا کریں۔

ایک نظر اس پر بھی

مرسی مشن کی کورونا متاثرین کیلئے خدمات کے 6 ماہ مکمل، ضرورت مندوں کی مدد کے لئے جوش کے ساتھ سلیقہ مندی کے امتزاج کی انوکھی مثال

شہر بنگلورو میں جب سے کورونا وائرس کے واقعات نے سر اٹھانا شروع کیا، اس وقت سے ہی شہر کے نوجوانوں کی ٹیم ضرورت مندوں کی مختلف زاویوں سے ہر ممکن مدد کرنے کے لئے متحرک رہی ہے

اڈپی میں نابالغ ہندو لڑکی کامبینہ اغواء۔ سنگھیوں نے کیا احتجاجی مظاہرہ۔ لگایا ’لوجہاد‘ کا الزام

تین دن پہلے ایک ہندونابالغ لڑکی کا اغواء مسلم نوجوان کی طرف سے کیے جانے کا الزام لگاتے ہوئےہیری اڈکا پولیس اسٹیشن کےسامنے بشمول بی جے پی دیگر ہندونواز سنگھی تنظیموں نے احتجاجی مظاہرا کیا اور اے ایس پی کے توسط سے سپرنٹنڈنٹ آ ف پولیس کےنام میمورنڈم پیش کیا۔

بھٹکل میں 3نومبرکو ہوگی اتی کرم داروں کی خصوصی میٹنگ

حالیہ دنوں میں بھٹکل تعلقہ کےمختلف علاقوں میں محکمہ جنگلات کے افسران اور عملےکی طرف سے اتی کرم داروں کو جو اذیت دی جارہی ہے اس کا جائزہ لینے کے لئے ایک خصوصی میٹنگ  3نومبر کو بھٹکل کے ستکار ہوٹل صبح 10بجے منعقد ہوگی۔

بھٹکل میں محکمہ جنگلات کے دفتر کے باہر اتی کرم داروں نے کیا احتجاجی مظاہرہ

بھٹکل تعلقہ کے جالی پنچایت، ہیبلے پنچایت اور دوسرے علاقوں میں کل محکمہ جنگلات کےافسران اور عملے نے اتی کرم  جگہوں پر تعمیرات روکنے اور قبضہ خالی کروانے کی جو مہم چلائی تھی اس کے خلاف بھٹکل محکمہ جنگلات کے دفتر کےسامنے اتی کرم داروں نے احتجاجی مظاہرہ کیا۔