کلبرگی میں منعقدہ ورکنگ جرنلسٹ کانفرنس سے ملیکارجن کھرگے اور دیوے گوڑا کا خطاب ۔کہا؛ اظہار خیال کی آزادی خطرہ میں ہے ، جمہوریت کو مستحکم کرنا میڈیا کی اہم ذمہ داری

Source: S.O. News Service | Published on 6th January 2022, 1:42 PM | ریاستی خبریں |

کلبرگی، 6؍ جنوری (ایس او نیوز)کلبرگی میں منعقدہ ریاستی سطح کی ورکنگ جرنلسٹ اسوسی ایشن کی 36 ویں کانفرنس کی اختتامی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے  قائد اپوزیشن راجیہ سبھا اور ممتاز کانگریسی قائد ڈاکٹر ملیکا رجن کھرگے نے کہا  کہ  میڈ یا کی آزادی جمہوریت کا ایک اہم حصہ ہے اور ہندوستانی میڈیا   ہمیشہ سے جمہوریت کی بنیادوں کو مضبوط ومستحکم کرنے کے لئے اور اس کی حفاظت کرنے کے لئے ایک اہم کردار ادا کرتا رہا ہے ، لیکن   آج اظہار خیال کی آزادی خطرہ میں  ہے۔ اگر یہی صورت حال جاری رہی  مہاتما گاندھی  کی آزادی خیال  کو  ممکن بنانے کے لئے چلائی گئی تحریک  اور ڈاکٹر بابا صاحب امبیڈکر کا  دستور  خطرے میں پڑ جائے گا۔

انہو نے کہا کہ دستور ہند میں دۓ گئے اختیارات کا غلط استعمال کرنے سے حالات بگڑتے جار ہے ہیں اور اگر یہی صورت حال جاری رہی تو اس صورت میں پریس جسے  جمہوریت اور آزادی   خیال کا چوتھا ستون قرار دیا جاتا ہے وہ بھی آزادی سے محروم ہوجاۓ گا۔ مہاتما گاندھی ، جو ہرلال   نہرو اور ڈاکٹر بابا صاحب امبیڈ کر پریس و میڈیا کی اہمیت سے واقف تھے ۔ اسی  لئے گاندھی جی نے جنوبی افریقہ کے شہر جو بانس برگ سے ایک اخبار کی اشاعت شروع کی تھی۔نہرو جی نے ہندی ، اردو اور انگریزی میں مضامین  شائع کروانا شروع کئے ۔ اگر چیکہ امبیڈ کر کے پاس اتنی رقمی  استطاعت نہیں تھی اور انھیں اتنی زیادہ عوامی تائید حاصل نہیں تھی لیکن انھوں نے بھی  ایک اخبار  نکالا تھا۔

اس موقع پر سابق وزیراعظم  ایچ ڈی دیوے گوڑا  نے کہا کہ آج ملک کی صورت حال بہت کچھ بدل چکی ہے ۔ اگرچیکہ میں سابق میں ملک کا وزیراعظم رہ چکا ہوں لیکن کئی بار مجھے پارلیمنٹ میں اظہار خیال کی اجازت نہیں دی گئی  اور اس طرح جو کچھ ڈاکٹر ملیکارجن کھرگے نے کہا  وہ بالکل  سچ ہے  ۔ دیوے گوڈا نے کہا کہ سابق میں وہ قوم کو در پیش مسائل کو سمجھانے کے لئے گھنٹوں تک اظہار خیال کیا کرتے تھے۔ انھوں نے کہامیں نے دیکھا ہے کہ جس وقت مسٹر کھر گے کو سرکاری طور پرقائداپوزیشن کی حیثیت بھی نہیں ملی تھی تو اس کے باوجود بھی وہ قوم کو درپیش مسائل حکومت کے علم میں  لایا کرتے تھے ۔

مسٹر دیوے گوڈا نے الزام عائد کیا کہ آج کل لوک سبھا میں کسی بھی پارٹی کی تعداد کی بنیاد پر ہی اس کے نمائندوں کو بات کرنے کا موقع دیا جارہا ہے ۔ اس طرح اب ہم یہ  نہیں جان پار ہے ہیں کہ عوام کو درپیش مسائل کس طرح حکومت کے علم میں لائیں۔ اانھوں نے کہا کہ ان کی خواہش ہے کہ  ریاست میں علاقائی پارٹی کو مضبوط کیا جاۓ ۔مسٹر دیوے گوڈا نے کہا کہ وہ اس کے لئے اپنی جدو جہد جاری رکھیں گے۔

ریاستی ورکنگ جرنلسٹ کی کلبرگی میں منعقدہ مذکورہ بالا کانفرنس  کے اختتامی اجلاس سے قبل ریاست کرناٹک اور کلبرگی کے مختلف صحافیوں کو ایوارڈ سے نوازا گیا۔

ایک نظر اس پر بھی

ریاستی سرکاری نصاب کی غلطیوں کی تصحیح کےلئے متبادل نصابی کتب تیار کریں گے اور بچوں کو توہم پرستی اور اندھی تقلید سے بچائیں گے : دیونور مہادیو

آر ایس ایس کی سرکار اسکولی بچوں کو جو کچھ سکھانا چاہتی ہے وہ سکھائے ۔ لیکن ہم متبادل کے طورپر دستور کی تمہید، منشاء سمیت سب کچھ انہیں سکھانے کا کام کریں گے۔ ریاست کے مشہور و معروف کنڑا ادیب دیونورمہادیو نے ان خیالات کااظہار کیا۔

ملک میں ایک نہ ایک دن ’یکساں سول کوڈ‘ ضرور نافذ ہوگا، کرناٹک کے وزیرکوٹا سرینواس پجاری کا خیال

 کرناٹک کے سماجی بہبود کے وزیر کوٹا سرینواس پجاری نے بدھ کے روز کہا کہ متنازعہ یونیفارم (یکساں) سول کوڈ ایک نہ ایک دن ملک میں نافذ ہوگا۔ انہوں نے کہا، ’’بی جے پی یکساں سول کوڈ لانے کے لیے پرعزم ہے اور اسے نافذ کرنے جا رہی ہے۔ یہ بی جے پی ہی ہی ہے جس نے جموں و کشمیر میں دفعہ 370 کو ...

منگلورو : ملالی مسجد کے مقام پر دیوی موجود ہے - کیرالہ کے نجومی کا دعویٰ - ضلع انتظامیہ نے نافذ کیے امتناعی احکامات

ملالی میں واقع السید عبداللہ جامع مسجد میں تجدید نو کے دوران مندر کے باقیات پائے جانے کا دعویٰ کرتے ہوئے ہندو شدت پسند تنظیموں نے جو تنازعہ کھڑا کیا ہے اس میں اب مزید پیچیدگی پیدا ہوگئی ہے ، کیونکہ ہندو مذہبی عقیدہ کے مطابق کیرالہ سے بلائے گئے علم زائچہ کے ماہر اور نجومی ...

شیموگہ ضلع میں بارش کی وجہ سے 40 کروڑ کا نقصا ن

پچھلے ہفتے ہوئی مسلسل بارش سے ضلع میں تقریباً 40کروڑ روپئے کا نقصان ہونے کا اندازہ لگایاگیاہے۔وزیر اعلیٰ کے ساتھ اس سلسلے میں تبادلہئ خیال کرنے کے بعد ضروری معاوضہ دلانے کیلئے اقدامات کئے جائیں گے۔یہ بات ضلع نگران کار وزیر نارائن گوڈانے کہی۔