کولار؛ اسکول کے کمرے میں جمعہ کی نماز پڑھنے کی اجازت دینے پر ہیڈ مسٹریس معطل؛ انصاف کا مطالبہ کرتے ہوئے آئیٹا نے کیا تشویش کا اظہار

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 28th January 2022, 12:03 AM | ریاستی خبریں |

کولار27 جنوری (ایس او نیوز) ہندو تنظیموں کے احتجاج اور اُن کی ناراضگی کے بعد محکمہ تعلیم کے حکام نے کرناٹک کے کولار ضلع میں ایک سرکاری اسکول کی ہیڈ مسٹریس کو مسلم طلباء کو کلاس روم میں نماز پڑھنے کی اجازت دینے پر معطل کر دیا ہے۔

گزشتہ اتوار کو، ہندو تنظیموں کے ارکان مُلباگل سومیشورا پالیا بالے چنگپا گورنمنٹ کنڑا ماڈل ہائر پرائمری اسکول میں گھس گئے تھے اوراسکول کی میر معلمہ کے خلاف اسکول کے ایک کلاس روم میں جمعہ کی نماز پڑھنے کی اجازت دینے پرسخت احتجاج کیا تھا۔ بتایا گیا تھا کہ جمعہ کے روز اسکول کے بعض بچوں کو اسکول کے ایک کلاس روم میں پڑھنے کی اجازت دی گئی تھی اور کلاس روم میں نماز پڑھنے کی وڈیو وائرل ہوگئی تھی۔

ہندو تنظیموں کے احتجاج پر ریاست کی بی جے پی حکومت فوراً حرکت میں آگئی اور کولار ضلعی انتظامیہ کو واقعے کی انکوائری کا حکم دیا، جس کے بعد بلاک ایجوکیشن آفیسر (بی ای او) گریجشوری دیوی نے اسکول کی ہیڈ مسٹریس اوما دیوی کو معطل کردیا۔

ہیڈ مسٹریس کو معطل کرنے پر آئیٹا کا اعتراض، کیا انصاف کا مطالبہ: ضلع کولار کے ملباگل تعلقہ کے اسکول میں جمعہ کی نماز کی ادائیگی کو لیکر اسکول کی  میر معلمہ شریمتی اوما دیوی کو معطل کرنے پرسخت تشویش کا اظہار کرتے ہوئے آئیٹا کے ریاستی صدررضا مانوی نے  میر معلمہ کو واپس بحال کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔

آل انڈیا آئیڈیل ٹیچرس اسوسی ایشن (آئیٹا) کے صدر نے اس واقعے کے بعد ضلع کولار کے ڈی ڈی پی آئی شری ریونسدپا اور  بی ای او شریمتی گریجشوری دیوی سے بات کی اورکہا کہ  میر معلمہ کے ساتھ نا انصافی کی گئی ہے۔انہوں نے مانگ کی کہ فوری طور پر ان کی معطلی ختم کی جائے اور انہیں واپس اُن کے عہدہ پر بحال کیا جائے۔

پریس ریلیز جاری کرتے ہوئے آئیٹا کے صدر نے بتایا کہ چنگپا سرکاری  اسکول میں تقریبا 400 طلبہ زیر تعلیم ہیں جن میں 161 طلبہ مسلم ہیں جو ہر جمعہ کو  نماز کے لئے مسجد جاتے ہیں۔ چونکہ اسکول سے متصل ایک بڑی سڑک ہونے کے سبب  بچوں  کے ساتھ حادثہ کا خدشہ لگا رہتا تھا  اوربعض طلبا جمعہ کے روزاکثر اسکول سے غیر حاضر بھی ہوتےہیں، ان وجوہات کی بنا پر بچوں کو اسکول میں ہی روکنے کے لئے وہاں کی میر معلمہ نے جمعہ کی نمازایک کلاس روم میں ہی پڑھنے کی سہولت فراہم کی تھی۔ رضا مانوی نے بتایا کہ میر معلمہ شریمتی اوما دیوی کے نیک ارادے اور  تعلیمی و  حفاظتی  نقطہء نظر سے کئے گئے ان کے اس اقدام پر انکی ہمت افزائی کرنے کے بجائے ان کو ملازمت سے ہی برطرف کیا گیا ہے، جو بالکل غلط ہے اور اُن کے ساتھ ناانصافی ہے۔ پریس ریلیز میں آئیٹا کرناٹکا نے اس اقدام کی مذمت کرتے ہوئے میر معلمہ پر کی گئی اس کاروائی کو غلط ٹہراتے ہوئے انکی بحالی کا مطالبہ کیا ہے۔ اس سلسلے میں ایک تحریر ی یاداشت بھی  چیف منسٹر کرناٹکا، ریاستی وزیر تعلیم حکومت کرناٹکا، چیر مین میناریٹی کمیشن اور ڈی ڈی پی آئی کولار کو ارسال کی گئی ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

حجاب کیس: ججوں کو دھمکیاں دینے والے شخص کی درخواست ضمانت مسترد

بنگلورو کی ایک سیشن عدالت نے تمل ناڈو کے ترونیل ویلی سے تعلق رکھنے والے رحمت اللہ کی ضمانت کی درخواست مسترد کر دی ہے، جو حال ہی میں کلاس رومز میں حجاب پہننے پر فیصلہ سنانے والے کرناٹک ہائی کورٹ کے ججوں کی جان کو مبینہ طور پر خطرے میں ڈالنے کے الزام میں عدالتی حراست میں ہے۔ سٹی ...

صد فیصد مارکس لینے والے اردو میڈیم طلبہ کا ذکر نہ ہونے پر ایس ایس ایل اسی بورڈ سے بزم اردو وجئے پور نے چاہی وضاحت

بزم اردو وجئے  پور نے ایس ایس ایل کی بورڈ بنگلورو سے وضاحت طلب کی ہے کہ امسال ایس ایس ایل سی اردو میڈیم میں 625 میں سے 625 مارکس حاصل کرنے والے اردو میڈیم طلبہ کو آیا دور رکھا گیا ہے یا پھر اردو میڈیم کے طلبہ قابل نہیں تھے۔

بنگلور: ایس ایس ایل سی نتائج کے بعد پرائیویٹ سمیت سرکاری کالجوں میں بھی رش ۔ پی یوسی میں داخلہ لینے کالج میں طلبہ اوروالدین کی لمبی قطاریں

ایس ایس ایل سی امتحانات کے نتائج کے اعلان کے بعد پی یوکالجوں میں داخلہ کارروائی زوروں سے شروع ہوگئی ہے۔والدین اورطلبہ قطاروں میں کھڑے ہوکر فارم لیتے ہوئے عرضیاں پر کررہے ہیں۔ بنگلورو شہرکے معروف کالجوں میں عرضی حاصل کرنے کے لیے کلو میٹرکی مسافت تک کھڑے ہوئے والدین عرضیاں ...

بنگلورو کے ترقیاتی کاموں کی نگرانی کیلئے8ٹاسک فورس قائم کرنے کا فیصلہ:   وزیر اعلیٰ  بسواراج بومئی

  وزیر اعلیٰ  بسواراج بومئی نے کہا کہ بنگلورو میں ترقیاتی کاموں کی نگرانی اور شدید بارش جیسی کسی بھی ہنگامی صورت حال میں درکار فیصلے لینے کے لیے شہر کے تمام آٹھ زونس میں وزیر کی قیادت میں ٹاسک فورس تشکیل دی جائے گی۔ چیف منسٹر نے ارکا ن اسمبلی اور وزراء کے ہمراہ جمعہ کو شہر کے ...

گیان واپی مسجد کےخلاف سازشیں ناکام بنائیں،عبادت گاہوں سے متعلق ایکٹ 1991ء کو نافذ کرنے کا مطالبہ ، ایس ڈی پی آئی کا ریاست گیر احتجاجی مظاہرہ

سوشیل  ڈیموکریٹک پارٹی آف انڈیا نے وارانسی میں گیان واپی مسجد کے ایک حصے کو سیل کرنے کے وارانسی عدالت کے حکم پر سخت اعتراض کرتے ہوئے ‘گیان واپی مسجد کے خلاف سازشیں ناکام بنائیں۔ عبادت گاہوں کے ایکٹ 1991کو نافذ کرو ‘کے مطالبے کے تحت بنگلور، میسور، چتر ...