کرناٹک میں کورونا کے 4267 ؍نئے کیس، 114 ؍ اموات ،5218 ؍ڈسچارج

Source: S.O. News Service | Published on 11th August 2020, 12:52 PM | ریاستی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

بنگلورو، 11؍اگست (ایس او نیوز) کرناٹک میں کورونا وائرس کا خوفناک پھیلاؤ رکنے اور تھمنے کا نام نہیں لے رہا ہے، ہر گزرتے لمحے اور دن کے ساتھ کورونا وائرس کے نئے معاملات میں اضافہ ہی ہوتا جارہا ہے ۔

کرناٹک میں گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران کورونا متاثرین کی تعداد میں تشویشناک حد تک اضافہ دیکھا جارہا ہے۔ ریاست میں ایک ہی دن کورونا وائرس کے پوزیٹیو معاملات کی تعداد 4267 ریکارڈ کی گئی ہے۔

ریاستی محکمہ صحت کی جانب سے جاری تازہ جانکاری ہیلتھ بلیٹن کے مطابق بروز اتوار شام 5 بجے سے بروز پیر شام 5 بجے تک 4267 نئے کورونا کیس سامنے آئے ، اس کے ساتھ ہی ریاست میں کورونا سے متاثر ہونے والوں کی تعداد بڑھ کر 1،82،354 ہوگئی ہے۔ راجدھانی بنگلورو میں ایک ہی دن 1243 معاملات پیش آئے، متاثرین کی تعداد بڑھ کر 75،428 ہوگئی ہے۔ بنگلورو شہر میں کورونا سے 36 افراد جاں بحق ہوگئے، اسطرح اب تک 41،166 کورونا سے شفایاب ہوئے ہیں، شہر میں کورونا کے فعال اور ایکٹیو کیسوں کی تعداد 32،985 ہے۔

جن اضلاع میں کورونا وائرس کے پوزیٹیو معاملے سامنے آئے ان کی تفصیل اس طرح ہے۔ بنگلورو میں 1243، میسورو میں 374، بیلاری میں 253، داونگیرے میں 225، کلبرگی میں 196، رائچور میں 165، دھارواڑ میں 157، باگل کوٹ میں 147، دکشن کنڑا میں 146، وجئے پور میں 139، ہاسن میں 126، کوپل میں 110، کولار میں 100، ٹمکورو میں 98، اُڈپی میں 90، رام نگر میں 84، چامراج نگر میں 70، یادگیر میں 68، منڈیا میں 66، بیلگاوی میں 54، اُتر کنڑا میں 53، بنگلورو دیہی ضلع میں 50، ہاویری اور چکمگلورو میں فی کس 45، گدگ میں 42، چترادرگہ میں 38، کورگ میں 29، بیدر اور چکبالاپور میں فی کس28، سمیت ریاست بھر کے 4،267 افراد میں کورونا وائرس کی تصدیق ہوئی ہے۔

ریاست میں کورونا وائرس سے علاج کے دوران 114 مریض فوت ہوگئے ، اس سے ریاست میں اب تک مرنے والوں کی تعداد بڑھ کر 3312 ہوگئی ہے ، جبکہ کورونا وائرس سے اب تک 99،126 افراد صحت یاب ہوئے ہیں جنہیں اسپتالوں سے ڈسچارج بھی کردیا گیا ہے، ایک ہی دن 5218 مریض ڈسچارج ہوئے ہیں۔ فی الحال ریاست میں ایکٹیو اور فعال کیسوں کی تعداد 79،908 ہے۔ جبکہ 681 مریض آئی سی یو میں زیر علاج ہیں۔

ایک نظر اس پر بھی

زرعی بل کی مخالفت میں کسان تنظیموں کا ملک بھر میں احتجاج؛ کیا اس بل کے خلاف جمعہ کو کرناٹکا بند ہوگا ؟

ملک بھر میں تنازعہ  کھڑا کرنے والے زرعی بل کی سخت مخالفت کرتے ہوئے ایک طرف ملک کی مختلف ریاستوں میں احتجاج کئے جارہے ہیں وہیں   ریاست کرناٹک کے کسانوں کی طرف سے  جمعہ 25 ستمبرکو ریاست گیر سطح پر کرناٹک بند کرنے کے تعلق سے سوچا جارہا ہے۔زرعی بل کو کسانوں کے لئے موت کے منہ میں ...

شموگہ میں زبردست بارش کے نتیجے میں ہوناور کے شراوتی ندی کے اطراف رہنے والوں کے لئے بج گئی خطرہ کی گھنٹی؛ ڈیم سے کسی بھی وقت پانی چھوڑے جانے کی وارننگ

پڑوسی ضلع شموگہ میں زبردست بارش  کے بعد  لنگن مکّی ڈیم میں پانی کی سطح کافی حد تک بڑھ گئی ہے جس کو دیکھتے ہوئے کرناٹکا پاور کارپوریشن (کے پی سی ایل) کی طرف سے  ہوناور تعلقہ کے شراوتی ندی کے اطراف بسنے والوں کے لئے خطرے کا الارم بجا دیا گیا ہے اور ندی کے اطراف بسنے والے دیہات کے ...

سرسی: اسمبلی اسپیکر کے دفتر کے سامنے  دھرنا۔شمالی کینر ا کو تقسیم کرکے سرسی کو علیحدہ ضلع تشکیل دینے کا مطالبہ

عوامی مفادات اور انتظامی سہولیات کے پیش نظر ضلع شمالی کینرا کو تقسیم کرکے الگ سے سرسی ضلع تشکیل دینے اور بنواسی کو تعلقہ کا درجہ دینے کا مطالبہ کرتے ہوئے کل 21ستمبر کوسرسی ضلع ہوراٹا سمیتی نے احتجاجی ریالی  نکالی اوراسمبلی اسپیکروشویشور ہیگڈے کاگیری کے دفتر کے باہر  دھرنا ...

کاروار: سابق وزیر آنند اسنوٹیکر کے سامان میں پستول۔ بنگلورو ایئر پورٹ پر تفتیش کے بعد جانے کی دی گئی اجازت

بنگلورو سے بذریعہ ہوائی جہاز گوا ہوتے ہوئے کاروار کے لئے نکلے سابق وزیر اور جنتا دل لیڈر آنند اسنوٹیکر کو سنٹرل انڈسٹریل سیکیوریٹی فورس  نے سنیچر کو  بنگلورو ایئر پورٹ پراپنی تحویل میں لیا گیا تھا  کیونکہ ان کے سامان میں پستول  موجود تھا جسے ساتھ لے جانے کی اجازت انہوں نے ...