بسواراج بومئی کا این آر سی پر بیان مسلمانوں کو دھمکیاں دینے کی ناکام حکمت عملی:ایس ڈی پی آئی 

Source: S.O. News Service | Published on 7th October 2019, 5:57 PM | ریاستی خبریں |

بنگلور و،7/اکتوبر (ایس او نیوز/ پریس ریلیز) سوشیل ڈیموکریٹک پارٹی آف انڈیا (SDPI) کے ریاستی صدر الیاس محمد نے اپنے جاری کردہ اخباری اعلامیہ میں کہا ہے کہ ریاستی وزیر داخلہ بسواراج بومئی کا یہ کہنا کہ کرناٹک میں جلد ہی این آر سی نافذ کیا جائے گا، مسلمانوں کو دھمکیاں دینے کی ایک ناکام حکمت عملی کے سوا کچھ نہیں ہے۔ مرکزی اور ریاستی حکومتیں این آ ر سی کو بطور آلہ استعمال کرتے ہوئے مسلمانوں کو دبانے کی کوشش کررہے ہیں۔یہ ایک بدقسمتی کی بات ہے کہ شیطانی اور تفرقہ انگیز ذہنوں کے ہاتھوں ملک کی حکمرانی چلی گئی ہے جو عوام کی ترقی اور خوشحالی کے بارے میں سوچنے کے بجائے شہریوں کو ملک سے نکالنے کی سازشیں کررہے ہیں۔ الیاس محمد نے مزید کہا ہے آر ایس ایس کے نسلی اور تفرقہ انگیز نظریات کو نافذ کرنے کی وجہ سے بی جے پی ہمارے ملک کی سا  لمیت، یکجہتی اور بقائے باہمی کیلئے ایک بہت بڑا خطرہ بن گئی ہے۔ مرکزی وزیر داخلہ امیت شاہ مسلم کمیونٹی کو یہ کہتے ہوئے دھمکی دی ہے کہ آئین مخالف 'شہریت ترمیمی بل 'پیش کیا جائے گا اور اس پر عمل در آمد کیا جائے گا'۔ایس ڈی پی آئی ریاستی صدر الیاس محمد نے اس بات پر زور دیکر کہا ہے کہ ایس ڈی پی آئی آئین سے محبت کرنے والے تمام سیکولر افراد کے ساتھ ملکر سنگھ پریوار کی سازش کو شکست دے گی۔ انہوں نے کہا کہ اس ملک کے عوام این آر سی سے خوفزدہ نہیں ہوں گے جو محض ایک ڈراؤنا کوا ہے۔ ایس ڈی پی آئی اسے پوری طرح مسترد کرتی ہے اور اس کا انکار کرتی ہے۔ریاستی اور مرکزی حکومتیں اس طرح کے بیانات کے ذریعے عوا م کو گمراہ کررہی ہیں۔ کرناٹک میں سیلاب متاثرین جو اپنے مکانات اور املاک کھوچکے ہیں اور ان کو مدد کی اشد ضرورت ہے لیکن حکومت ان کی باز آبادکاری اور معاوضے کیلئے کچھ نہیں کررہی ہے۔ الیاس محمد نے کہا ہے کہ اس ملک کے عوام، انتہائی عوام دشمن حکمرانی کی وجہ سے مشکلات کا شکار ہیں لیکن امیت شاہ اور بسوارج بومئی عوام کی توجہ ہٹانے کی حکمت عملی پر عمل پیرا ہیں جو انتہائی قابل مذمت ہے۔ 

ایک نظر اس پر بھی

منگلورو میں سی اے اے مخالف احتجاج کے دوران ہوئی پولیس فائرنگ میں ہلاک ہونے والے افراد کے خاندانوں کو معاوضہ

بنگلورو میں آئی یو ایم ایل کے نیشنل سکریٹریٹ کا اجلاس منعقد ہوا۔ اس موقع پر کرناٹک کے ساحلی شہر منگلورو کے دو متاثرہ خاندانوں کو پانچ پانچ لاکھ روپئے کے چیک دئے گئے۔

چکمگلورو میں واقع امولیہ کے گھر پر ہندو نواز نوجوانوں کا حملہ

سی اے اے،این آر سی اور این پی آر کے خلاف بنگلور کے فریڈم پارک میں مختلف تنظیموں کی جانب سے منعقد پروگرام کے دوران پاکستان زندہ باد کا نعرہ لگانے والی طالبہ امولیہ لیونا کے چکمگلور ضلع کوپہ میں واقع اس کے گھر پر سنگھ پریوار کے کارکنوں نے حملہ کیا۔

ملک اور قوم کے تحفظ کیلئے ہمیشہ تیارہوں، امولیہ معاملہ میں جلد بازی میں کام لینے کی ضرورت نہیں: عمران پاشاہ

پاکستان کی حمایت میں نعرہ لگاکر سرخیوں میں آنے والی امولیہ کی گرفتاری اور 14دنوں کی تحویل میں دیئے جانے کے بعد فریڈم پارک میں سی اے اے مخالف احتجاجی اجلاس کے آرگنائزر کونسلر عمران پاشاہ کو اپارپیٹ پولیس نے حاضرہوکر اپنا موقف رکھنے کیلئے نوٹس دیاہے۔

معروف قانون دان فیضان مصطفیٰ کا مدلل تبصرہ؛ امولیہ کی نعرے بازی ملک سے غداری کے زمرے میں نہیں آتی

ملک کے معروف قانون دان اور آئینی امور کے ماہر فیضان مصطفیٰ نے کہا ہے کہ بنگلور و کے فریڈم پارک میں شہریت قانو ن کے خلاف احتجاج کے دوران ایک لڑ کی امولیہ کی طرف سے ’پاکستان زندہ باد‘ کا جو نعرہ لگایا گیا وہ ملک سے غداری کے زمرے میں نہیں آتا البتہ موقع محل کے اعتبار سے یہ نعرہ ...