اوبی سی تحفظات کیلئے سپریم کورٹ سے مزید مہلت طلب کیے جانے کی توقع: وزیر اعلیٰ بومئی

Source: S.O. News Service | Published on 14th May 2022, 12:33 AM | ریاستی خبریں |

بنگلورو،14؍مئی (ایس او نیوز؍ایجنسی) سپریم کورٹ کے احکام کے بعد مجالس مقامی کے زیرالتواء انتخابات کے امکان کے پیش نظر کرناٹک کے  وزیر اعلیٰ بسواراج بومئی نے کہا کہ حکومت دیگر پسماندہ طبقات (او بی سیز) کے لیے تحفظات مقرر کرنے کی مہلت طلب کرنے یا موجودہ تحفظات پر عمل کرنے کا موقع دینے کی درخواست کے لیے سپریم کورٹ سے رجوع ہونے پرغور کررہی ہے۔

وزیر اعلیٰ نے وقت ملنے کے تعلق سے امید ظاہر کی۔ بومئی نے کہا کہ او بی سی تحفظات پر‘ بی بی ایم پی سے متعلق ایک کیس سپریم کورٹ میں زیرالتواء ہے۔۔ ضلع اور تعلقہ پنچایت انتخابات کے معاملے میں بھی ہمیں درخواست کرنی ہوگی کہ ہمیں (حکومت کو) قانونی اور دستوری طور پر او بی سی تحفظات فراہم کرنا ہوگا۔

صحافیوں سے بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ حکومت کے پاس دو راستے ہیں یا تو مزید مہلت کے لیے اپیل کی جائے یا پھر پرانے او بی سی تحفظات پر عمل کرنے کا موقع فراہم کی درخواست کی جائے۔ انہوں نے کہا کہ ہم وقت ملنے کے تعلق سے پُرامید ہیں۔ ہمیں او بی سی تحفظات کے ساتھ انتخابات کروانا ہے۔ یا تو موجودہ تحفظات کے ساتھ یا پھر نئے تحفظات کے لیے وقت طلب کرکے۔

سپریم کورٹ نے منگل کو مدھیہ پردیش کے ریاستی الیکشن کمیشن (ایس ای سی) کو اندرون دو ہفتے مجالس مقامی کے انتخابات کا اعلامیہ جاری کرنے کی ہدایت دی تھی۔ بنچ نے اپنے احکام میں کہا تھا کہ اس کے احکام صرف مدھیہ پردیش تک محدود نہیں ہیں بلکہ تمام ریاستوں /مرکزی زیرانتظام علاقوں پر لاگو ہوتے ہیں اور متعلقہ الیکشن کمیشن‘ دستور ی لزوم کو برقرار رکھنے بہرصورت اس پر عمل کرے۔ضلع اور تعلقہ پنچایت کے انتخابات مئی جون2021میں منعقد شدنی تھے، مگر نہیں ہوسکے، کیوں کہ ریاستی حکومت نے پنچایت کی ازسرنو حد بندی کے لیے حد بندی کمیشن قائم کردیا۔

اس کے بعد سپریم کورٹ نے کہا کہ مجالس مقامی میں او بی سی تحفظات‘ تین نکاتی اہلیتی امتحان سے گزرنے کے بعد فراہم کیے جانے چاہیے۔ بی بی ایم پی کے کیس میں بلدیہ میں 2020سے منتخب کونسل نہیں ہے اور سینئر آئی اے ایس عہدیداران‘ بطور منتظم اور کمشنر اس پر حکمرانی کررہے ہیں۔

 بلدیہ کے انتخابات جون 2020میں ہونے تھے، مگر حکومت نے بی بی ایم پی کے وارڈس کو 198سے بڑھا کر 243کرنے کے لیے حد بندی کا عمل شروع کردیا۔ دسمبر2020 میں سپریم کورٹ نے انتخابات پر روک لگادی اور یہ کیس ہنوز زیرالتواء ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

حجاب کیس: ججوں کو دھمکیاں دینے والے شخص کی درخواست ضمانت مسترد

بنگلورو کی ایک سیشن عدالت نے تمل ناڈو کے ترونیل ویلی سے تعلق رکھنے والے رحمت اللہ کی ضمانت کی درخواست مسترد کر دی ہے، جو حال ہی میں کلاس رومز میں حجاب پہننے پر فیصلہ سنانے والے کرناٹک ہائی کورٹ کے ججوں کی جان کو مبینہ طور پر خطرے میں ڈالنے کے الزام میں عدالتی حراست میں ہے۔ سٹی ...

صد فیصد مارکس لینے والے اردو میڈیم طلبہ کا ذکر نہ ہونے پر ایس ایس ایل اسی بورڈ سے بزم اردو وجئے پور نے چاہی وضاحت

بزم اردو وجئے  پور نے ایس ایس ایل کی بورڈ بنگلورو سے وضاحت طلب کی ہے کہ امسال ایس ایس ایل سی اردو میڈیم میں 625 میں سے 625 مارکس حاصل کرنے والے اردو میڈیم طلبہ کو آیا دور رکھا گیا ہے یا پھر اردو میڈیم کے طلبہ قابل نہیں تھے۔

بنگلور: ایس ایس ایل سی نتائج کے بعد پرائیویٹ سمیت سرکاری کالجوں میں بھی رش ۔ پی یوسی میں داخلہ لینے کالج میں طلبہ اوروالدین کی لمبی قطاریں

ایس ایس ایل سی امتحانات کے نتائج کے اعلان کے بعد پی یوکالجوں میں داخلہ کارروائی زوروں سے شروع ہوگئی ہے۔والدین اورطلبہ قطاروں میں کھڑے ہوکر فارم لیتے ہوئے عرضیاں پر کررہے ہیں۔ بنگلورو شہرکے معروف کالجوں میں عرضی حاصل کرنے کے لیے کلو میٹرکی مسافت تک کھڑے ہوئے والدین عرضیاں ...

بنگلورو کے ترقیاتی کاموں کی نگرانی کیلئے8ٹاسک فورس قائم کرنے کا فیصلہ:   وزیر اعلیٰ  بسواراج بومئی

  وزیر اعلیٰ  بسواراج بومئی نے کہا کہ بنگلورو میں ترقیاتی کاموں کی نگرانی اور شدید بارش جیسی کسی بھی ہنگامی صورت حال میں درکار فیصلے لینے کے لیے شہر کے تمام آٹھ زونس میں وزیر کی قیادت میں ٹاسک فورس تشکیل دی جائے گی۔ چیف منسٹر نے ارکا ن اسمبلی اور وزراء کے ہمراہ جمعہ کو شہر کے ...

گیان واپی مسجد کےخلاف سازشیں ناکام بنائیں،عبادت گاہوں سے متعلق ایکٹ 1991ء کو نافذ کرنے کا مطالبہ ، ایس ڈی پی آئی کا ریاست گیر احتجاجی مظاہرہ

سوشیل  ڈیموکریٹک پارٹی آف انڈیا نے وارانسی میں گیان واپی مسجد کے ایک حصے کو سیل کرنے کے وارانسی عدالت کے حکم پر سخت اعتراض کرتے ہوئے ‘گیان واپی مسجد کے خلاف سازشیں ناکام بنائیں۔ عبادت گاہوں کے ایکٹ 1991کو نافذ کرو ‘کے مطالبے کے تحت بنگلور، میسور، چتر ...