ڈیوٹی پر غیر حاضر ڈاکٹروں کی تقرری منسوخ کرنے ہدایت

Source: S.O. News Service | Published on 22nd August 2021, 11:58 PM | ریاستی خبریں |

بنگلورو،22؍اگست (ایس او نیوز) حال ہی میں تقرر کئے گئے ڈاکٹرس جو اب تک اپنی ڈیوٹی پر حاضر نہیں ہوئے ہیں، ان ڈاکٹروں کو فوری نوٹس جاری کرنے اور ایسے ڈاکٹروں کی تقرری منسوخ کردینے وزیراعلیٰ بسوراج بومئی نے محکمہ صحت کے افسروں کو سخت ہدایت دی ہے۔

انہوں نے کہا کہ ڈاکٹروں اور اسٹاف کی قلت کو دور کرنے ڈاکٹروں کا تقرر کیا گیا تھا۔تقرر کے باوجود یہ لوگ ڈیوٹی پر حاضر نہ ہوئے ہوں تو ان کی تقرری منسوخ کردیناچاہئے۔انہوں نے محکمہ کے افسروں کو یہ بھی ہدایت دی ہے کہ جن اسپتالوں اور طبی مراکز میں ڈاکٹر اور نیم میڈیکل اسٹاف کی کمی ہے وہاں فوری ڈاکٹروں اور اسٹاف کا تقرر کیا جائے۔

وزیراعلیٰ نے بتایا کہ ریاست کے مختلف اسپتالوں میں کووڈ متاثرین کا علاج جاری ہے۔کن کن طبی مراکز میں کووڈ کا علاج ہوتا ہے اس کی تفصیلات بھی منظرعام پر لانی چاہئے۔

ایک نظر اس پر بھی

مسلمانوں میں نکاح معاہدہ ہے نہ کہ ہندو شادی کی طرح رسم، طلاق کے معاملے پرکرناٹک ہائی کورٹ کااہم تبصرہ

کرناٹک ہائی کورٹ نے اہم تبصرہ کرتے ہوئے کہاہے کہ مسلمانوں کے یہاں نکاح ایک معاہدہ ہے جس کے کئی معنی ہیں ، یہ ہندو شادی کی طرح ایک رسم نہیں ہے اور اس کے تحلیل ہونے سے پیدا ہونے والے حقوق اور ذمہ داریوں سے دور نہیں کیا جاسکتا۔

کرناٹک سے روزانہ 2100کلو بیف گوا کو سپلائی ہوتاہے : وزیر اعلیٰ پرمود ساونت

بی جے پی کی اقتدار والی ریاست کرناٹک سے روزانہ 2000کلوگرام سے زائد جانور اور بھینس کا گوشت (بیف)گوا کو رفت ہونےکی جانکاری بی جے پی اقتدار والی ریاست گوا کے وزیرا علیٰ پرمود ساونت نے دی۔ وہ گوا ودھان سبھا کو تحریری جواب دیتےہوئے اس بات کی جانکاری دی ۔

کرناٹک کے داونگیرے میں ایک لڑکی نے والدین سمیت 4 افرادکو سلایا موت کی نیند؛ کیا ہے پورا واقعہ

کرناٹک میں ایک لڑکی نے امتیازی سلوک سے تنگ آکر اپنے پورے خاندان کو زہر دے کر ہلاک کردیا۔ جب فارنسک رپورٹ منظر عام پر آئی تو انکشاف ہوا کہ اس خاندان کی موت رات کے کھانے میں پائے جانے والے زہر سے ہوئی۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق داونگیر میں ایک 17 سالہ لڑکی کو کچھ عرصے سے اپنے خاندان ...

ہبلی میں مبینہ تبدیلی مذہب کی مخالفت کرتے ہوئے شدت پسند ہندو تنظیموں کے کارکنوں نے چرچ کے اندر گھس کر گایا بھجن

ہبلی میں تبدیلی مذہب کی مخالفت کرتے ہوئے ہندو شدت پسند تنظیموں کے کارکنوں نے ایک چرچ کے اندر گھس کر بھجن گانا شروع کردیا جس کی وائرل ہونے والی ویڈیو میں درجنوں مرد و خواتین کو دیکھا گیا ہے کہ وہ کس طرح ہبلی کے بیری ڈیوارکوپا چرچ کے اندر بیٹھے ہاتھ جوڑ کر بھجن گارہے ہیں۔