سیلاب متاثرین کے معاوضہ کیلئے 300 کروڑ روپئے جاری: آر اشوک

Source: S.O. News Service | Published on 7th August 2022, 11:27 AM | ریاستی خبریں |

 بنگلورو، 7؍اگست(ایس او نیوز)ریاست میں بی جے پی کی سوپر سرکار ہے، کانگریس پارٹی کی طرف سے لگایاجارہاالزام ”سیلاب متاثرین کیلئے معاوضہ فراہم کرنے ریاستی حکومت کے پاس رقم نہیں ہے“بالکل جھوٹا اور بے بنیادہے،سیلاب متاثرین کیلئے مرحلہ وار معاوضہ دئے جانے کا انتظام کیاجارہاہے۔یہ بات ریاستی وزیر برائے مالگزاری آر اشوک نے کہی۔

انہوں نے  سیلاب متاثرہ علاقوں کا دورہ کرکے جائزہ لینے کے بعد اخباری نمائندوں سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ سیلاب متاثرین کو معاوضہ فراہم کرنے کیلئے صرف بلگاوی ضلع میں ہی 80کروڑ روپئے موجود ہیں،ہرایک ڈپٹی کمشنر کے کھاتے میں بھی بہت ساری رقم موجود ہے،اپوزیشن لیڈروں کی طر ف سے لگایاجارہاالزام جھوٹا او ربے بنیادہے۔

اشوک نے بتایاکہ بارش سے متاثر علاقوں کا بحیثیت وزیر مالگزار ی ریاست بھر کا دورہ کیاہے اور متاثرین کے علاوہ کسانوں کو ضروری معاوضہ فراہم کیاجارہاہے،معاوضے کی رقم دوگنی کردئے جانے کے بارے میں بھی بی جے پی حکومت غور کررہی ہے۔ریاست میں اس وقت نازک حالات ہیں،ایسے میں حکومت کے پاس فنڈ نہ ہونے کے بارے میں افواہیں پھیلا کر عوام کو الجھن میں ڈالناٹھیک نہیں ہے۔بی جے پی حکومت متاثرین کو معاوضہ فراہم کرنے کیلئے تیارہے اور رقم دوگنی کرنے کے معاملے میں بھی سنجیدگی سے غور کررہی ہے۔

وزیر مالگزاری نے کہاکہ ریاست کے کسانوں کو پریشان ہونے کی کوئی ضرورت نہیں ہے،حکومت ان کے حق میں ضرور کھڑی ہوگی اور فصلوں کی تباہی کے بارے میں تفصیل اکٹھاکرنے کے بعد ضروری معاوضہ فراہم کرے گی۔دلالوں کے چکر اور رشوت سے بچانے کیلئے معاوضے کی رقم راست طورپر کسانوں کے بینک کھاتے میں منتقل کرنے کا انتظام کیاجائے گا۔ریاست کے تمام ڈپٹی کمشنر وں کے بینک کھاتوں میں سیلاب متاثرین کے معاوضے کیلئے 800کروڑ روپئے کی رقم مختص کی گئی ہے۔فی الحال حکومت نے 300کروڑ روپئے جاری کردئے ہیں۔

اس موقع پر وزیر آر اشوک کے ساتھ رکن اسمبلی این مہیش،ڈپٹی کمشنر چارولتا سومل اور دیگر موجود تھے۔

ایک نظر اس پر بھی

صدر جمہوریہ دروپدی مرمو نے میسور و کے دس روزہ دسہرہ تقریبات کا افتتاح کیا

دوماہ کی تیاریوں کے بعد آج بروز پیر صدر جمہوریہ دروپدی مرمو نے میسور کے چامنڈی پہاڑ پر دس روزہ دسہرہ تقریبات کا چامنڈیشوری دیوی کی مورتی پر پھول نچھاور کرکے افتتاح کیا۔ پہلے صدر جمہوریہ نے چامنڈیشوری دیوی کے درشن کئے اور اس مندر کی تاریخ کے تعلق سے تفصیل سے جانکاری حاصل کی۔

ذہنی دباؤ بیسویں صدی کا ایک مہلک مرض؛ آئیٹا گلبرگہ کے ورک شاپ سے ڈاکٹر عرفان مہا گا وی کا خطاب

نئے دور کی شدید ترین بیماریوں میں ذہنی دباؤ اور اس سے پیدا ہونے والے اثرات کو مہلک امراض میں شمار کیا جاتا ہے ۔ روز مرہ کی مشینی زندگی میں ذہنی دباؤ  میں بہت زیادہ اضافہ ہوا ہے ۔ لیکن اس کو کیسے کم کیا جائے اس پر غور کر نے اور اس سلسلے میں کوشش کرنے کی ضرورت ہے ۔

پی ایف آئی پر ای ڈی اور این آئی اے کے کریک ڈاون کے بعد ایس ڈی پی آئی نے کہا؛ ایجنسیوں نے کبھی بھی آر ایس ایس اور اس سے منسلک تنظیموں پر چھاپہ نہیں مارا

 سوشیل ڈیموکریٹک پارٹی آف انڈیا (SDPI) کرناٹک یونٹ نے بنگلور میں اپنے ریاستی مرکزی دفتر میں ایک پریس کانفرنس کا انعقاد کرتے ہوئے الزام لگایا کہ ای ڈی اور این آئی اے نے کبھی بھی آر ایس ایس اور اس سے منسلک تنظیموں پر چھاپہ نہیں مارا بلکہ صرف پاپولرفرنٹ آف انڈیا کو ہی نشانہ بنایا ...