کرناٹک کے گورنر تھاورچند گہلوت ریاست کے اولمپک کھلاڑیوں کو انعام دیں گے

Source: S.O. News Service | Published on 21st August 2021, 1:00 PM | ریاستی خبریں |

بنگلورو، 21؍ اگست (ایس او نیوز) حال ہی میں ٹوکیو اولمپکس میں شرکت کرنے والے کرناٹک کے چار کھلاڑیوں کو فی کس ایک لاکھ روپئے کا تحفہ دینے کا ریاستی گورنر تھاورچند گہلوت نے اعلان کیا ہے۔ 

ادتتی اشوک، ایکوسٹرین ، فواد مرزا، تیراک شری ہر نٹراج اور خاتون ہاکی ٹیم کے کوچ انکیتا سریشن کو آئندہ راج بھون میں منعقد ہونے والی ایک تقریب میں اعزاز سے نوازنے کے ساتھ فی کس ایک ایک روپئے نقد انعام دیا جائے گا۔ 

گورنر کے خصوصی سکریٹری آر پر بھو شنکر نے کہا کہ ان کھلاڑیوں نے ٹوکیو اولمپکس میں شرکت کر کے کرناٹک کا نام اونچا کیا ہے۔ پچھلے ماہ ریاستی نے ادتتی ، فواد اور شری ہری کو 10 لاکھ روپئے پیش کئے تھے ۔حکومت کرناٹک نے پچھلے ماہ یہ اعلان کیا تھا کہ جو کھلاڑی گولڈ میڈل حاصل کرے گا اس کو 5 کروڑ روپئے نقد انعام دیا جائے گا۔ 

ایک نظر اس پر بھی

بنگلورو: محض 3 سال میں جھکی پولیس رہائش گاہ کی عمارت، 32 خاندانوں کو محفوظ نکالاگیا

بنگلورو میں پولیس کی رہائش کیلئے بنائی گئی عمارت صرف تین سالوں میں خستہ حالت میں پہنچ گئی ہے۔ صورتحال ایسی ہو گئی ہے کہ تہہ خانے میں کئی دراڑیں آ گئی ہیں اور عمارت نے ایک طرف جھکاؤ بھی شروع کر دیا ہے۔

بی جے پی کی مدد کرنے جے ڈی ایس نے مسلم امیدواروں کو ٹکٹ دیا ہے: ضمیر احمد خان 

رکن اسمبلی بی زیڈ ضمیر احمد خان نے جے ڈی ایس  پر الزام لگایا ہے کہ 30 ؍ اکتوبر کو سندگی ہانگل اسمبلی حلقوں میں ہونے والے ضمنی انتخابات میں بی جے پی کی مدد کرنے کے مقصد سے جے ڈی ایس نے مسلم امیدواروں کو ٹکٹ دیا ہے۔

کلبرگی کے چنچولی میں زلزلوں کے جھٹکوں سے خوفزدہ لوگ گاؤں چھوڑنے پر مجبور۔شمالی کرناٹک میں زلزلوں کی وجہ ’’ہائیڈرو سسمسیٹی‘‘، این جی آر آئی کے ابتدائی مطالعہ میں انکشاف

شمالی کنڑا کے بیدر اور کلبرگی ضلع میں سلسلہ وار زلزلے درحقیقت ’’ہائیڈ رو سسمسیٹی‘‘ ( زمین کے اندر پانی کے دباؤ کاعمل  ) کا معاملہ ہے جو مانسون کے بعد ہوتا ہے ۔ یہ انکشاف این جی آر آئی کے ابتدائی مطالعہ میں ہوا ہے ۔

آئی ٹی کے دھاوے سیاسی تھے، کانگریس کے ساتھ کام کرنے پر نشانہ بنایا گیا ؛ انتخابی مہم کی کمپنی کا دعویٰ

بنگلورو میں محکمہ آئی ٹی کی جانب سے جس ڈیزائن با کسڈ‘‘ نامی کمپنی پر حال ہی میں دھاوا کیا ، اس کے منیجنگ ڈائرکٹر نریش اروڑا نے مرکزی محکمہ کو نشانہ بناتے ہوئے  کہا کہ یہ دھاوے واضح طور پر سیاسی تھے اور آئی ٹی عہد یداروں کو دھاوؤں کے دوران کچھ بھی ہاتھ نہیں لگا۔