سدارامیا کے خلاف نامناسب تبصرہ کرنے سے گریز کریں جے ڈی ایس کے ریاستی صدر وشواناتھ کو پرمیشور کی وارننگ

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 14th May 2019, 12:35 PM | ریاستی خبریں |

بنگلورو،14؍مئی (ایس او نیوز) کانگریس کے سینئر لیڈر اور کرناٹک کے نائب وزیر اعلیٰ جی پرمیشور نے اتحاد ی جماعت جنتا دل (سیکولر) کے صدر ایچ وشو ناتھ کے خلاف سخت موقف اختیار کرتے ہوئے انہیں کانگریس لیجس لیچر پارٹی کے لیڈر سدا رامیا کے خلاف مستقبل میں نامناسب تبصرہ کرنے سے گریز کرنے کی وارننگ دی۔مسٹر وشو ناتھ نے اپنے بیان میں کہا تھا کہ مسٹر سدارامیا کے وزیر اعلیٰ رہتے ریاست میں کانگریس کی کارکردگی صفر رہی ہے۔ڈاکٹر پرمیشور نے آج نامہ نگاروں سے کہا کہ اتحادی حکومت کو اپنا پانچ سال کی مدت کار مکمل کرنا ہے اور مسٹر وشوناتھ کو چاہئے کہ وہ اس طرح کے بیانات نہ دیں۔ انہوں نے زور دیا کہ کانگریس نے بی جے پی کو اقتدار سے دور رکھنے کے لئے جنتا دل (ایس) سے ہاتھ ملایا ہے اور مسٹر وشو ناتھ کا بیان اتحادیوں کے درمیان اختلاف پیدا کرسکتا ہے اور عوام میں بھی اس کا غلط پیغام جائے گا۔انہوں نے کہا کہ اگر کوئی اختلاف ہے بھی تو اتحاد کی حلیف جماعتیں اسے بات چیت کے ذریعہ حل کرسکتی ہیں کیوں کہ عوامی طورپر کوئی بیان دینے سے بات مزید بگڑتی ہے۔بروز پیر سداشیونگر میں واقع اپنے رہائشی دفتر میں بنگلور کانگریس اور جے ڈی ایس پارٹی کے اراکین اسمبلی،اراکین پارلیمان، میئر،ڈپٹی میئر کے ساتھ آئندہ ہونے والے بی بی ایم پی انتخابات، بی بی ایم پی بجٹ سمیت دیگر اہم ترین موضوعات پر تبادلہ خیال کرنے کے بعد نائب وزیراعلیٰ نے اخباری نمائندوں سے کہاکہ وشواناتھ اور سدارامیا کے درمیان انفرادی و شخصی اختلاف رائے ہوسکتا ہے لیکن سیاسی طور پر مخلوط حکومت کی پارٹی بن کر رہتے ہوئے کوآرڈی نیشن کمیٹی کے چیرمین کے خلاف اس قسم کا بیان دینا مناسب نہیں ہے۔ مخلوط حکومت کو صحت مند طور پرآگے بڑھنے کے لئے اس قسم کے بیانات مددگار نہیں ہوسکتے۔ وزیراعلیٰ کمار سوامی اور جے ڈی ایس کے سربراہ ایچ ڈی دیوے گوڈا کو اس جانب توجہ دینی ہوگی۔ حکومت کو مزید چار سال تک اپنا کام کرنا ہے۔ دونوں پارٹیوں کا اتحاد برقرار رہنے کے لئے اس قسم کے بیانات سے گریز کرنا ہوگا۔ پرمیشور نے مزیدکہاکہ اگر واقعی کوئی ذاتی وانفرادی مسئلہ ہییااختلاف رائے ہے تو متعلقہ قائدین کے ساتھ تبادلہ خیال کیا جائے۔ کے پی سی سی کے صدر یا اے آئی سی سی کے صدر سے بات چیت کریں، انہوں نے کہاکہ رکن راجیہ سبھا کپیندرا ریڈی سے پوچھ کر ہم نے حکومت تشکیل نہیں دی۔ ہمارے قومی سطح کے قائدین کے ساتھ تبادلہ خیال کرنے کے بعد حکومت تشکیل پائی ہے۔ انہوں نے کہاکہ ہر عمل کا ردعمل ہوتا ہے۔ وشواناتھ نے چھیڑا ہے اس کے جواب میں کانگریس قائدین رد عمل ظاہر کررہے ہیں لیکن یہ مناسب نہیں ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

بنگلورو میں موسلادھار بارش سے ٹرافک جام موٹر گاڑیوں پر 25سے زائد درخت گرنے سے شدید نقصان

ہفتہ کی رات تیز ہواؤں کے ساتھ ہوئی موسلادھار بارش سے 25سے زائد درخت کئی گاڑیوں پر گرنے سے کافی نقصان پہنچاہے- ہفتہ کی شام 5بجے شروع ہوئی بارش 6:30بجے شہر کے اہم علاقوں میں کافی تیز ہواؤں کے ساتھ جاری رہی-

بنگلورو سنٹرل حلقہ: بی جے پی امیدوار پی سی موہن کو گاندھی نگر میں اکثریت

کانگریس کمیٹی کے صدر دنیش گنڈو راؤ کے اپنے حلقہ گاندھی نگر میں کانگریس کو اکثریت حاصل ہونے کی بجائے یہاں بی جے پی کو اکثریت ملی ہے- اس حلقہ میں بی جے پی امیدوار پی سی موہن کو 24,723 ووٹوں کی اکثریت حاصل ہوئی ہے-

خواب وخیال میں بھی نہیں تھا کہ لوک سبھا انتخابات کے نتائج کانگریس کے حق میں اتنے مایوس کن ہوں گے:دنیش گنڈو راؤ

لوک سبھا انتخابات میں کانگریس پارٹی کی شکست کی ذمہ داری میں اپنے سر لیتا ہوں۔ میرے خواب و خیال میں بھی نہیں تھا کہ ہم ریاست میں صرف ایک سیٹ پرکامیابی حاصل کریں گے۔