کرناٹک نے توڑا اب تک کا ریکارڈ؛ ایک ہی دن کورونا کے پانچ ہزار سے زائد معاملات؛ 2000 لوگ ڈسچارج بھی ہونے سے عوام کو راحت

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 24th July 2020, 12:39 PM | ریاستی خبریں |

بھٹکل  24 جولائی (ایس او نیوز) کرناٹک نے جمعرات کو کورونا کا اب تک کا ریکارد توڑتے ہوئے ایک ہی دن پانچ ہزار سے زائد معاملات درج کئے ہیں جس سے عوام میں خوف و ہراس کی لہر دوڑنا فطری بات ہے، مگر اس درمیان راحت کی خبر  یہ ہے کہ جمععرات کو ایک ہی دن 2071 لوگ صحت یاب ہوکر اسپتالوں سے ڈسچارج بھی ہوئے ہیں۔

سرکاری ہیلتھ بلٹین میں دی گئی اطلاع کے مطابق  جمعرات کو چوبیس گھنٹوں کے اندر 5,030 لوگوں کی رپورٹ کورونا پوزیٹیو درج ہوئی ہے جس میں پھر ایک بار سب سے زیادہ معاملات بنگلور سے درج کئے گئے ہیں۔ بلٹین میں دی گئی اطلاع کے مطابق صرف بنگلور شہر سے ہی 2,207   پوزیٹیو معاملات درج کئے گئے ہیں۔

تشویش کی بات یہ ہے کہ ریاست کے جملہ 30 اضلاع میں سے اس بار 13 اضلاع نے ایک ہی دن  سو کا ہندسہ پار کردیا ہے جس سے  تشویش میں اضافہ ہورہا ہے  کہ کورونا کے  معاملات  میں کمی آنے کے بجائے اس میں بتدریج اضافہ ہی ہورہا ہے اور اضافہ بھی اتنی تیزی کے ساتھ ہورہا ہے کہ ایسا لگتا ہے کہ اس پر قابو پانے کی تمام تدابیر ناکام ثابت ہورہی  ہیں۔

بنگلور کے بعد رائچور  میں سب سے زیادہ 258 معاملات درج ہوئے ہیں، کلبرگی میں 229، دکشن کنڑا میں 218  اور بیلگام میں 214 معاملات درج ہوئے ہیں۔

بلٹین کے مطابق  جمعرات کو ایک ہی دن 97 لوگوں کی اموات درج ہوئی ہے  جس میں صرف بنگلور میں ہی 48 لوگوں  نے جانیں گنوائی ہیں۔ رپورٹ کے مطابق  اب تک کورونا سے 1616 لوگ اپنی جانیں گنواچکے ہیں۔

اتنی  بڑی تعداد میں رپورٹ پوزیٹیو آنے کے تعلق سے وجہ یہ بتائی جارہی ہے کہ پہلے کے مقابلے میں  کافی زیادہ تعداد میں جانچ کی جارہی ہے اور بدھ کے روز  صرف ایک ہی دن 27773 لوگوں کے سمپل لئے گئے تھے۔

عوام کے لئے راحت کی خبر یہ ہے کہ  جمعرات کو ایک ہی دن 2071 لوگ اسپتالوں سے صحت یاب ہوکر ڈسچارج ہوئے ہیں جس میں صرف بنگلور سے ہی ڈسچارج ہونے والوں کی تعداد 1038 ہے۔ بتایا گیا ہے کہ ریاست کے مختلف اسپتالوں میں ڈسچارج ہونے والوں میں 640 مریض ایسے ہیں جو آئی سی یو میں تھے۔

ایک نظر اس پر بھی

کانگریس اور جے ڈی ایس لینڈریفارم ترمیمی ایکٹ کی سخت مخالف، کسانوں کے حقوق اورزمین کی حفاظت کیلئے جدوجہدکریں گے:سدارامیا

کسانوں کے حقوق کے ساتھ ان کی زمینوں سے بھی بے دخل کرنے پرآمادہ ریاستی حکومت کے لینڈریفارم ایکٹ کے ترمیمی مسودہ کے خلاف اسمبلی سیشن میں نہایت سختی کے ساتھ آوازاٹھائیں گے۔