کرناٹک سیاسی بحران : کمار سوامی حکومت کو آج چھ بجے تک دینا ہوگا فلور ٹیسٹ

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 22nd July 2019, 1:06 PM | ریاستی خبریں |

بنگلورو،22؍جولائی (ایس او نیوز؍ایجنسی) کرناٹک میں ایچ ڈی کمار سوامی کی قیادت والی کانگریس اور جے ڈی ایس اتحادی حکومت کیلئے پیر کو اگنی پریکشا کا دن ہے ۔ اسمبلی میں فلور ٹیسٹ ہونا ہے ، جہاں کمار سوامی حکومت کو اکثریت ثابت کرنا ہے ۔ اسمبلی اسپیکر کے آر رمیش کمار نے اتحادی حکومت کو اکثریت ثابت کرنے کیلئے شام چھ بجے تک کا وقت دیا ہے ۔ کانگریس – جے ڈی ایس نے اس کیلئے ہامی بھر دی ہے ۔ اسمبلی اسپیکر نے یہ بھی بتادیا ہے کہ 16 باغی ممبران اگر ایوان میں نہیں پہنچتے ہیں تو انہیں غیر حاضر مانا جائے گا۔

دھر فلور ٹیسٹ سے پہلے کرناٹک کے سنکٹ موچک مانے جانے والے وزیر ڈی کے شیو کمار نے اتحادی حکومت بچانے کیلئے آخری داو چل دیا ہے ۔ باغی ممبران کو راضی کرنے کیلئے وزیر اعلی کمار سوامی کی جگہ پر کسی اور کو وزیر اعلی بنایا جاسکتا ہے ۔ ڈی کے شیو کمار کا کہنا ہے کہ جے ڈی ایس حکومت بچانے کیلئے کسی بھی طرح کی قربانی کیلئے تیا رہے ۔ یہی نہیں ایچ ڈی کمار سوامی کی پارٹی کانگریس کی جانب سے کسی کو وزیر اعلی بنانے کیلئے بھی تیار ہے ۔

دوسری طرف بہوجن سماج پارٹی کے این مہیش نے کہا ہے کہ اعلی کمان نے فلور ٹیسٹ کے دوران حاضر نہیں رہنے کیلئے کہا ہے ، اس لئے انہوں نے پیر اور منگل کو سیشن میں حصہ نہیں لینے کا فیصلہ کیا تھا ۔ حالانکہ ان کے بیان کے کچھ گھنٹوں بعد بی ایس پی سپریمو مایا وتی نے ٹویٹ کیا اور کہا کہ انہوں نے ممبر اسمبلی کو کمار سوامی کی حکومت کے حق میں ووٹ دینے کی ہدایت دی ہے ۔

خیال رہے کہ کانگریس کے 13 اور جے ڈی ایس کے تین ممبران اسمبلیوں نے استعفی دیدیا ہے جبکہ آزاد ممبران اسبملی آر شنکر اور ایچ ناگیشن نے اتحادی حکومت سے اپنی حمایت واپس لے لی ہے ۔ اب آزاد امیدواروں کی حمایت کے ساتھ اپوزیشن پارٹی بی جے پی کے پاس 225 رکنی اسمبلی میں 107 ممبران اسمبلی ہوگئے ہیں ۔ وہیں استعفی دینے والے ممبران کو ہٹادیا جائے تو اتحادی حکومت کے پاس صرف 101 ممبران ہی باقی رہ گئے ہیں ۔

کانگریس کے ایک رکن رام لنگ ریڈی نے کہا کہ وہ حکومت کی حمایت کریں گے ۔ حکمراں اتحاد کی طاقت 117 ممبران اسمبلی کی ہے ، جس میں کانگریس 78 ، جے ڈی ایس 37 ، بی ایس پی ایک اور اسپیکر کے علاوہ ایک نامزد رکن ہیں ۔

ایک نظر اس پر بھی

  مسلم متحدہ محاذ، جماعت اسلامی ہند اور کئی تنظیموں کے ایک نمائندہ وفدکا سابق وزیر اعظم ایچ ڈی دیوے گوڈا سے ملاقات اور شہریت ترمیمی بل   کی مخالفت اور دستور کے تحفظ میں تعاون کرنے کی اپیل

مسلم متحدہ محاذ، جما عت اسلامی ہند، سدبھاؤ نا منچ بورڈ آف اسلامک ایجوکیشن کرناٹک، ایف ڈی سی اے، ایس آئی او، اے پی سی آر  اور مومنٹ فار جسٹس جیسے ہم خیال تنظیموں کی قیادت میں مسلم نمائندوں کا ایک وفد 7 / دسمبر 2019  ء  بروز سنیچر، سابق وزیر اعظم شری ایچ ڈی دیوے گوڈا سے ملاقات کرتے ...

ہوناورمیں پریش میستا کی مشتبہ موت کوگزرگئے2سال۔ سی بی آئی کی تحقیقات کے باوجود نہیں کھل رہا ہے راز۔ اشتعال انگیزی کرنے والے ہیگڈے اور کرندلاجے کے منھ پر کیوں پڑا ہے تالا؟

اب سے دو سال قبل 6دسمبر کو ہوناور میں دو فریقوں کے درمیان معمولی بات پر شرو ع ہونے والا جھگڑا باقاعدہ فرقہ وارانہ فساد کا روپ اختیار کرگیا تھا جس کے بعد پریش میستا نامی ایک نوجوان کی لاش شنی مندر کے قریب واقع تالاب سے برآمد ہوئی تھی۔     اس مشکوک موت کو فرقہ وارانہ رنگ دے کر پورے ...

کاروار:ہائی وے توسیع کے لئے سرکاری زمین تحویل میں لینے پرمعاوضہ کی ادا ئیگی۔ ملک میں قانون وضع کرنے کے لئے ضلع شمالی کینرا بنا ماڈل

نیشنل ہائی وے66 توسیعی منصوبے کے لئے سرکاری زمینات کو تحویل میں لینے کے بعد خیر سگالی کے طورمعاوضہ ادا کرنے کی پہل ضلع شمالی کینرا میں ہوئی جس کی بنیاد پر نیشنل ہائی وے ایکٹ 1956میں ترمیم کرتے ہوئے ملک بھر میں تحویل اراضی پرمعاوضہ ادائیگی کا نیا قانون2017میں وضع کیا گیا ہے۔

منگلور انڈیانا اسپتال میں 'کی ہول سرجری ٹوی' سے دل کا والو کامیابی کے ساتھ تبدیل؛ اوپن ہارٹ سرجری کی اب ضرورت نہیں

انڈیا اسپتال میں ڈاکٹر یوسف کمبلے کی قیادت میں ڈاکٹروں کی ایک ٹیم نے مریض کے دل کا والوvalve) (بدلنے کے لئے جدید ترین طریقہ ’ٹوی‘ کا استعمال کیا اور کی ہول سرجری کے ذریعے ’شہ رگ‘ (aorta)کے خراب والو کو نئے والوسے بدلنے میں پوری طرح کامیاب رہے۔