کرناٹک بحران:سی ایم ایچ ڈی کمارسوامی نے کہا،اعتماد کے ووٹ کے لیے تیار ہوں 

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 12th July 2019, 9:32 PM | ریاستی خبریں | ملکی خبریں |

نئی دہلی،12/جولائی (ایس او نیوز/ آئی این ایس انڈیا) کانگریس جے ڈی ایس مخلوط حکومت پرآئے بحران کے درمیان وزیراعلیٰ ایچ ڈی کمارسوامی نے کہا ہے کہ وہ اسمبلی میں اعتمادکاووٹ حاصل کرنے کے لیے تیارہیں۔اس کے ساتھ ہی انہوں نے اسمبلی اسپیکر سے وقت مقرر کرنے کے لیے کہاہے۔انہوں نے کہاکہ میں نے طے کیا ہے اعتماد کا ووٹ حاصل کروں گا۔براہ مہربانی اس کے لیے وقت مقررکیاجائے۔آپ کو بتا دیں کہ کمارسوامی نے یہ بات جمعہ کو شروع ہوئے اسمبلی بجٹ اجلاس کے دن کہی ہے۔اوراسی دن سپریم کورٹ میں بھی کرناٹک میں باغی ممبران اسمبلی کو لے کر سماعت ہوئی ہے۔جس کوسپریم کورٹ نے منگل تک صورتحال برقرار رکھنے کا حکم دیا ہے۔سپریم کورٹ نے چیف جسٹس رنجن گوگوئی، جسٹس دیپک گپتا اور جسٹس انروددھ بوس کی بنچ نے یہ حکم دیا ہے۔بنچ کرناٹک کے سیاسی بحران کو لے کر دائر درخواستوں پر سماعت کر رہی ہے۔بنچ نے اپنے حکم میں خاص طور پر اس بات کا ذکر کیا کہ کرناٹک اسمبلی اسپیکر کے آر رمیش کمار ان باغی اراکین اسمبلی کے استعفیٰ اور نااہلی کے معاملے پر کوئی فیصلہ نہیں لیں گے تاکہ معاملے کی سماعت کے دوران اٹھائے گئے وسیع مسائل پر عدالت فیصلہ کر سکے۔بنچ نے اپنے حکم میں اس حقیقت کا بھی ذکر کیا ہے کہ صدر اور کرناٹک کے وزیر اعلیٰ ایچ ڈی کمارسوامی نے آئین کے آرٹیکل 32 کے تحت باغی ممبران اسمبلی کی طرف سے دائر درخواست کے غورکا مسئلہ بھی اٹھایا ہے۔بنچ نے یہ بھی کہا کہ باغی ممبران اسمبلی کی جانب سے سینئر وکیل مکل روہتگی نے صدر کی اس دلیل کو ردکیا ہے کہ حکمران اتحاد کے ممبران اسمبلی کے استعفی کے مسئلہ پر غور کرنے سے پہلے ان کی نااہلی کے معاملے پر فیصلہ لینا ہوگا۔بنچ نے کہا کہ ان تمام پہلوؤں اور ہمارے سامنے موجود ناقص حقائق کی وجہ سے اس معاملے میں آگے سننے کی ضرورت ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

کرناٹک: بی ایس پی ارکان اسمبلی کمارسوامی کے حق میں ووٹ کریں گے:مایاوتی

کرناٹک میں کانگریس اورجے ڈی ایس کی مخلوط حکومت رہے گی یا جائے گی اس کا فیصلہ آج ہو جائے گا ۔ برسر اقتدار اتحاد کے ارکان اسمبلی کو بی جے پی ٹوڑنے کی کوشش کر رہی ہے لیکن اس بیچ بی ایس پی سپریموں نے کہا ہے کہ اس کی پارٹی کے ارکان اسمبلی کمارسوامی حکومت کے حق میں ہی ووٹ ڈالیں گے ۔ یہ ...

مخلوط حکومت کی بقا کا سسپنس برقرار آج بھی اسمبلی میں تحریک اعتماد پر ووٹنگ کا امکان،باغیوں کو واپس لانے کیلئے سدارامیا کو وزیر اعلیٰ بنانے کی پیش کش

ریاست میں کانگریس جے ڈی ایس مخلوط حکومت کوبچانے کے لئے اتحادی جماعتوں کے قائدین کی کوششوں کا سلسلہ جاری ہے تو دوسری طرف اپوزیشن بی جے پی اس کوشش میں ہے کہ کسی طرح پیر کے روزتحریک اعتماد پر اسمبلی میں ووٹنگ ہو جائے لیکن خدشات ظاہر کئے جارہے ہیں