کرناٹک بحران:سی ایم ایچ ڈی کمارسوامی نے کہا،اعتماد کے ووٹ کے لیے تیار ہوں 

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 12th July 2019, 9:32 PM | ریاستی خبریں | ملکی خبریں |

نئی دہلی،12/جولائی (ایس او نیوز/ آئی این ایس انڈیا) کانگریس جے ڈی ایس مخلوط حکومت پرآئے بحران کے درمیان وزیراعلیٰ ایچ ڈی کمارسوامی نے کہا ہے کہ وہ اسمبلی میں اعتمادکاووٹ حاصل کرنے کے لیے تیارہیں۔اس کے ساتھ ہی انہوں نے اسمبلی اسپیکر سے وقت مقرر کرنے کے لیے کہاہے۔انہوں نے کہاکہ میں نے طے کیا ہے اعتماد کا ووٹ حاصل کروں گا۔براہ مہربانی اس کے لیے وقت مقررکیاجائے۔آپ کو بتا دیں کہ کمارسوامی نے یہ بات جمعہ کو شروع ہوئے اسمبلی بجٹ اجلاس کے دن کہی ہے۔اوراسی دن سپریم کورٹ میں بھی کرناٹک میں باغی ممبران اسمبلی کو لے کر سماعت ہوئی ہے۔جس کوسپریم کورٹ نے منگل تک صورتحال برقرار رکھنے کا حکم دیا ہے۔سپریم کورٹ نے چیف جسٹس رنجن گوگوئی، جسٹس دیپک گپتا اور جسٹس انروددھ بوس کی بنچ نے یہ حکم دیا ہے۔بنچ کرناٹک کے سیاسی بحران کو لے کر دائر درخواستوں پر سماعت کر رہی ہے۔بنچ نے اپنے حکم میں خاص طور پر اس بات کا ذکر کیا کہ کرناٹک اسمبلی اسپیکر کے آر رمیش کمار ان باغی اراکین اسمبلی کے استعفیٰ اور نااہلی کے معاملے پر کوئی فیصلہ نہیں لیں گے تاکہ معاملے کی سماعت کے دوران اٹھائے گئے وسیع مسائل پر عدالت فیصلہ کر سکے۔بنچ نے اپنے حکم میں اس حقیقت کا بھی ذکر کیا ہے کہ صدر اور کرناٹک کے وزیر اعلیٰ ایچ ڈی کمارسوامی نے آئین کے آرٹیکل 32 کے تحت باغی ممبران اسمبلی کی طرف سے دائر درخواست کے غورکا مسئلہ بھی اٹھایا ہے۔بنچ نے یہ بھی کہا کہ باغی ممبران اسمبلی کی جانب سے سینئر وکیل مکل روہتگی نے صدر کی اس دلیل کو ردکیا ہے کہ حکمران اتحاد کے ممبران اسمبلی کے استعفی کے مسئلہ پر غور کرنے سے پہلے ان کی نااہلی کے معاملے پر فیصلہ لینا ہوگا۔بنچ نے کہا کہ ان تمام پہلوؤں اور ہمارے سامنے موجود ناقص حقائق کی وجہ سے اس معاملے میں آگے سننے کی ضرورت ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

شیواجی نگر حلقے سے کانگریس کا راست مقابلہ بی جے پی سے عوام کو حلقے کی فلاح کے حق میں فیصلہ لینا ہوگا۔ انتشار سے فرقہ پرست بی جے پی کو فائدہ ہوگا: رضوان ارشد

یواجی نگر اسمبلی حلقہ جو ان اسمبلی حلقوں میں شامل ہے جس کے اراکین اسمبلی نے بی جے پی کے آپریشن کنول کا حصہ بن کر اپنی رکنیت سے استعفیٰ دیا اور نا اہل قرار پائے اس حلقے میں 5دسمبر کو ضمنی انتخابات کے لئے تینوں اہم سیاسی جماعتوں سے امیدوار میدان میں آچکے ہیں۔

مرکزی یا ریاستی حکومت کسی بھی شخص کے کمپیوٹر سے خفیہ طورپر معلومات حاصل کرسکتی ہے۔ پارلیمنٹ میں وزیربرائے داخلی امور کرشنا ریڈی کا جواب

گزشتہ مہینے وہاٹس ایپ کے توسط سے اسرائیلی وائرس ’پیگاسس‘کا استعمال کرنے اور کچھ خاص لوگوں کی نگرانی کرنے اور ان کے موبائل اور کمپیوٹر سے ذاتی معلومات خفیہ طور پر اکٹھا کرنے سے میڈیا میں جو ہنگامہ مچا تھا اس کے بارے میں مرکزی حکومت نے کوئی اقرار یا انکار کرنے کے بجائے مبہم ...

پارلیمنٹ میں گونجا جے این یو طلباء پر ’لاٹھی چارج‘ کا معاملہ، اعلی سطحی تفتیش کا مطالبہ

  کانگریس، ترنمول کانگریس(ٹی ایم سی) اور بہوجن سماج پارٹی (بی ایس پی) نے جواہر لال نہرو یونیورسٹی (جے این یو) کے اسٹوڈنٹس پر دہلی پولس کی لاٹھی چارج کا معاملہ اٹھاتے ہوئے اس کی اعلی سطحی تفتیش کرنے اور یونیورسٹی کی فیس میں اضافہ واپس لینے کی مانگ کی۔ ادھر، جے این یو نے 18 نومبر کو ...

امیر بی جے پی لیڈر غریب ’جے این یو طلبہ‘ کی حمایت کیوں کریں گے: سماج وادی پارٹی

  سماج وادی پارٹی کے رہنما رام گوپال یادو نے فیس میں اضافہ کے خلاف پرامن مظاہرہ کر رہے جواہر لال نہرو یونیورسٹی کے طلبہ پر پیر کے روز پولس لاٹھی چارج کی سخت مذمت کرتے ہوئے کہا کہ ان کی پارٹی طلبہ کے مطالبات کی مکمل حمایت کرتی ہے اور ضرورت پڑنے پر وہ بھی احتجاجی مظاہروں میں شامل ...

ڈیوڈ اٹنبروکو 2019 کا اندرا گاندھی امن انعام

سابق صدر پرنب مکرجی کی سربراہی میں ایک بین الاقوامی جیوری نے نامور دانشوراور براڈکاسٹر سر ڈیوڈ اٹنبرو کو’اندرا گاندھی امن ،ترک اسلحہ اور ترقی‘ ایوارڈ 2019 کیلئے منتخب کیا ہے ۔

کشمیر میں غیر یقینی صورتحال کا 107 واں دن، صحافی، طلبہ اور تاجر ہنوز متاثر

   وادی کشمیر میں 107 دنوں سے جاری غیر یقینی صورتحال اور غیر اعلانیہ ہڑتال کے بعد اگرچہ معمولات زندگی بحالی کی طرف بڑھنے کی رفتار تیز گام ہے لیکن انٹرنیٹ اور ایس ایم ایس خدمات پر مسلسل پابندی کے باعث مختلف شعبہ ہائے حیات سے وابستہ لوگوں بالخصوص صحافیوں، طلبا اور تجار کا کام کاج ...