کرناٹک کانگریس نے کووڈ کے بڑھتے ہوئے معاملوں کے درمیان میکے ڈاٹو پیدل مارچ کو کردیا معطل؛ سدرامیا نے کورونامعاملوں میں اضافے کےلئے بی جے پی کو قرار دیا ذمہ دار

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 13th January 2022, 2:20 PM | ریاستی خبریں |

رام نگر 13 جنوری (ایس او نیوز) میکے ڈاٹو واٹر پروجکٹ کا مطالبہ  لے کر شروع کی گئی کانگریس کی میکے  ڈاٹو پیدل ریلی کو کانگریس نے  کووڈ کے بڑھتے ہوئے معاملوں کو دیکھتے ہوئے عارضی طور پر معطل کرنے کا اعلان کیا ہے۔

جمعرات کو رام نگر میں  کانگریس کے ضلعی دفتر میں  کرناٹک کے سابق وزیراعلیٰ اور اپوزیشن لیڈر سدرامیا نے پارٹی قائدین کی میٹنگ کے بعد بتایا کہ  جب ہم نے  جب ہم نے دو ماہ قبل اس احتجاجی پیدل ریلی  کا اعلان کیا تھا تو وہاں کوئی کورونا طاعون  نہیں تھا جس کو نظر میں رکھتے ہوئے ہم نے پیدل یاترا  شروع کی تھی، مگر  اب ہم یہاں کووڈ انفیکشن میں اضافے کو دیکھتے ہوئے اپنی ریلی کو  روک رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کورونا کی تیسری لہر ختم ہونے کے بعد ہم  اسی گراؤنڈ سے دوبارہ  اس ریلی کی شروعات کریں گے۔

سدارمیا نے بتایا کہ ریاست میں کووڈ سے متاثرہ افراد میں اضافے کے لیے کانگریس نہیں بلکہ  بی جے پی ذمہ دار ہے۔  بی جے پی لیڈروں نے کئی پروگرام کئے اور اُن پروگراموں میں سینکڑوں اور ہزاروں لوگوں نے شرکت کی اور اب یہ لیڈران عوام کے سامنے مگرمچھ کے آنسو بہارہے ہیں۔ 

میکے ڈاٹو پیدل یاترا کا اغاز سنگم سے ہوا تھا، آج ہمیں اپنی ریلی روکنی پڑی رہی ہے۔  کانگریس بہت پرانی قومی پارٹی ہے اس لئے ملک کے عوام کے لئے  ہماری ذمہ داری ہے۔ کورونا کی تیسری لہر کے چلتے  کوود معاملوں میں اضافے  کے لئے  بی جے پی ذمہ دارہے۔ تاہم وزیر اعلیٰ نے کسی بھی  پروگرام کو نہیں روکا۔  6 تاریخ کو ایوان بالا کے لیے منتخب ہونے والے اراکین اسمبلی نے حلف اٹھایا۔ وزیر اعلیٰ، وزراء وغیرہ سبھی لوگوں نے شرکت کی ، تب کسی نے کووڈ کی کوئی پرواہ نہیں کی۔ سابق ایم ایل اے سبھاش گوڈیوادر نے احتجاج کیا تھا جبکہ رینوکاچاریہ نے ریلی نکالی تھی۔

کورونا کی دوسری لہر کے دوران مرکزی وزراء   نے جنا آشیرواد یاترا نکالی اور کئی جلسے بھی کئے ، اس کے لئے کسی کی اجازت نہیں لی گئی تھی۔  وزیر داخلہ آروگا جنانیندر  نے بھی حلقہ میں میلہ لگایا ایسوں کے خلاف کوئی مقدمہ درج نہیں ہو۔ لیکن ہم نے ریلی نکالی تو ہم پر جھوٹے مقدمے درج کر کے عدالت میں ایف آئی آر درج کرائی گئی ہے۔

سدرامیا نے کہا کہ ہم حکومت سے ڈرنے والے نہیں ہیں، بی جے پی کا مقصد کسی نہ کسی طرح ہماری پیدل یاترا پر پابندی لگانا ہے،   لیکن ہم یہ بھی ہرگز نہیں چاہتے کہ ہماری ریلی کی وجہ سے لوگوں کی صحت پر کوئی اثر پڑے۔ یہ ہماری ذمہ داری ہے کہ ہم اس بات کو یقینی بنائیں کہ کورونا انفیکشن کسی بھی وجہ سے ہماری پیدل یاترا  سے نہ بڑھے۔  ہم نے میکے ڈاٹو پدیاترا کو معطل کرنے کا فیصلہ عوام کی صحت کے پیش نظر اور عوام کے مفاد کو سامنے رکھ کر کیا ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

ریاستی سرکاری نصاب کی غلطیوں کی تصحیح کےلئے متبادل نصابی کتب تیار کریں گے اور بچوں کو توہم پرستی اور اندھی تقلید سے بچائیں گے : دیونور مہادیو

آر ایس ایس کی سرکار اسکولی بچوں کو جو کچھ سکھانا چاہتی ہے وہ سکھائے ۔ لیکن ہم متبادل کے طورپر دستور کی تمہید، منشاء سمیت سب کچھ انہیں سکھانے کا کام کریں گے۔ ریاست کے مشہور و معروف کنڑا ادیب دیونورمہادیو نے ان خیالات کااظہار کیا۔

ملک میں ایک نہ ایک دن ’یکساں سول کوڈ‘ ضرور نافذ ہوگا، کرناٹک کے وزیرکوٹا سرینواس پجاری کا خیال

 کرناٹک کے سماجی بہبود کے وزیر کوٹا سرینواس پجاری نے بدھ کے روز کہا کہ متنازعہ یونیفارم (یکساں) سول کوڈ ایک نہ ایک دن ملک میں نافذ ہوگا۔ انہوں نے کہا، ’’بی جے پی یکساں سول کوڈ لانے کے لیے پرعزم ہے اور اسے نافذ کرنے جا رہی ہے۔ یہ بی جے پی ہی ہی ہے جس نے جموں و کشمیر میں دفعہ 370 کو ...

منگلورو : ملالی مسجد کے مقام پر دیوی موجود ہے - کیرالہ کے نجومی کا دعویٰ - ضلع انتظامیہ نے نافذ کیے امتناعی احکامات

ملالی میں واقع السید عبداللہ جامع مسجد میں تجدید نو کے دوران مندر کے باقیات پائے جانے کا دعویٰ کرتے ہوئے ہندو شدت پسند تنظیموں نے جو تنازعہ کھڑا کیا ہے اس میں اب مزید پیچیدگی پیدا ہوگئی ہے ، کیونکہ ہندو مذہبی عقیدہ کے مطابق کیرالہ سے بلائے گئے علم زائچہ کے ماہر اور نجومی ...

شیموگہ ضلع میں بارش کی وجہ سے 40 کروڑ کا نقصا ن

پچھلے ہفتے ہوئی مسلسل بارش سے ضلع میں تقریباً 40کروڑ روپئے کا نقصان ہونے کا اندازہ لگایاگیاہے۔وزیر اعلیٰ کے ساتھ اس سلسلے میں تبادلہئ خیال کرنے کے بعد ضروری معاوضہ دلانے کیلئے اقدامات کئے جائیں گے۔یہ بات ضلع نگران کار وزیر نارائن گوڈانے کہی۔