پٹرول پر ٹیکس میں کٹوتی پرجلد فیصلہ لے گی حکومت، کرناٹک کے لوگوں کومل سکتی ہے راحت

Source: S.O. News Service | Published on 18th October 2021, 11:51 AM | ریاستی خبریں |

بنگلورو،18؍ اکتوبر(ایس او نیوز) کرناٹک کے وزیر اعلیٰ باسوراج بومائی نے اتوار کو کہا کہ حکومت ریاست کی معیشت کا جائزہ لینے کے بعد ہی پٹرول پر ٹیکس کم کرنے کا فیصلہ کرے گی۔ پٹرول کی قیمت میں کمی پر ردعمل دیتے ہوئے وزیراعلیٰ نے کہا کہ میں پہلے ہی کہہ چکا ہوں کہ اس کا انحصار معیشت پر ہے، ضمنی انتخابات کے بعد میں معیشت کا جائزہ لوں گا، اس وقت اگر مثبت علامات ہوں گی تو یقینی طور پر قیمت کم ہوگی۔ریاست کے سندھگی اور ہنگل اسمبلی حلقوں میں ضمنی انتخابات 30 اکتوبر کو ہوں گے اور ووٹوں کی گنتی 2 نومبر کو ہوگی۔ وزیراعلیٰ نے کہا کہ وہ ہنگل اور سندھگی دونوں میں طویل عرصے تک انتخابی مہم چلائیں گے اور مجھے یقین ہے کہ بی جے پی امیدوار دونوں نشستوں پر بھاری فرق سے جیتے گی۔ سندھگی سے جے ڈی ایس ایم ایل اے ایم سی مناگولی اور ہنگل سے بی جے پی ایم ایل اے سی ایم اداسی کی موت کے بعد خالی نشستوں کی وجہ سے ضمنی انتخاب ضروری ہو گیا ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

جے ڈی ایس امیدواروں کی جیت کے ذریعے پارٹی کارکن اپنی طاقت کا مظاہرہ کریں: انیتاکمارسوامی

بنگلورو دیہی لوکل باڈیز حلقے سے ریاستی قانون ساز کونسل کیلئے ہورہے انتخابات کو جے ڈی ایس پارٹی نے سنجیدگی سے لیاہے اور اس انتخابات میں پارٹی امیدواروں کوکامیاب کرکے پارٹی کارکنوں کو اپنی طاقت کا مظاہرہ کرناہوگا۔یہ بات رکن اسمبلی انیتاکمار سوامی نے کہی۔

منگلورو : طلبہ کے درمیان گروہی تصادم - کئی طلبہ ہوئے زخمی -  پولیس نے مارا ہاسٹل پر چھاپہ - 6 طالب علم گرفتار ۔ مقامی لوگوں کا احتجاج ۔ ہاسٹل خالی کروانے کا مطالبہ  

شہر کے ایک ڈگری کالج میں زیر تعلیم اور گوجرکیرے علاقے میں واقع ہاسٹل میں قیام پزیر طلبہ کے دو گروہ آپس میں لڑ پڑے جس کے نتیجے میں بعض طلبہ زخمی بھی ہوگئے ۔ مار پیٹ اور تصادم کی اطلاع ملنے پر پولیس نے دیر رات ہاسٹل پر چھاپہ مار کر کئی طالب علموں کو گرفتار کر لیا ۔

چامنڈی پہاڑ پر زمین کھسکنے کے واقعات: نندی مجسمے کے راستے کو پیدل چلنے والے راستہ میں تبدیل کرنے اپیل

گزشتہ چند دنوں سے میسورو ضلع میں مسلسل بارشوں کی وجہ سے میسور کے قریب واقع چامنڈی پہاڑ پر زمین کھسکنے کے واقعات پیش آرہے ہیں جس کی وجہ سے پہاڑ پر واقع چامنڈیشوری دیوی کے درشن کو پہنچنے والے زائرین کو کافی پریشانیوں کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔