’کرناٹک میں وزیر اعلیٰ عہدہ 2500 کروڑ روپے میں فروخت ہو رہا‘

Source: S.O. News Service | Published on 20th August 2022, 7:57 PM | ریاستی خبریں |

بنگلورو،20؍اگست (ایس او نیوز؍ایجنسی) کرناٹک کی بی جے پی حکومت میں اس وقت ایک ہلچل کا ماحول دیکھنے کو مل رہا ہے۔ کئی بار وزیر اعلیٰ بسوراج بومئی کو ہٹائے جانے کے امکانات بھی ظاہر کیے گئے ہیں۔ ایسے میں کانگریس لگاتار ریاست کی بی جے پی حکومت کو تنقید کا نشانہ بنا رہی ہے۔ کانگریس لیڈر بی کے ہری پرساد نے بھی بی جے پی پر حملہ آور رخ اختیار کیا ہے۔ انھوں نے بی جے پی پر ایک انتہائی سنگین الزام بھی عائد کیا ہے۔ وہ کہتے ہیں کہ ’’ریاست میں وزیر اعلیٰ عہدہ بہت مہنگا ہے۔ وزیر اعلیٰ عہدہ 2500 کروڑ روپے میں فروخت ہو رہا ہے۔‘‘ انھوں نے یہ بھی کہا کہ یہ قیمت انھیں کسی اور نے نہیں بلکہ بی جے پی کے ہی ایک لیڈر نے بتائی ہے۔

کانگریس لیڈر ہری پرساد نے کسی کا نام لیے بغیر کہا ہے کہ ’’کرناٹک میں وزیر اعلیٰ عہدہ کے لیے بہت سارے امیدوار ہیں، اور اس میں بڑی رقم شامل ہے۔ بی جے پی کے ایک سینئر لیڈر کے مطابق کسی کو یہ عہدہ چاہیے تو اسے 2500 کروڑ روپے خرچ کرنے ہوں گے۔‘‘ بسوراج بومئی کو وزیر اعلیٰ عہدہ سے ہٹائے جانے کی قیاس آرائیاں تو ایک ماہ سے زیادہ وقت سے ہو رہی ہیں، لیکن یہ پہلی بار ہے جب کسی نے وزیر اعلیٰ عہدہ کے لیے رقم طے کیے جانے کا الزام عائد کیا ہے۔

ہری پرساد کے اس بیان کو بومئی کابینہ میں وزیر پربھو چوہان نے مسترد کر دیا ہے۔ انھوں نے بیان پر رد عمل ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ ’’یہ افواہوں کے علاوہ کچھ بھی نہیں ہے۔ کانگریس کے پاس کام نہیں ہے، بولنے کے لیے کچھ ہے نہیں اس لیے ایسی باتیں ہو رہی ہیں۔ انھیں صرف ایسی باتیں کرنی ہیں جس سے وہ سرخیاں بٹور سکیں۔‘‘ پربھو چوہان نے مزید کہا کہ ’’میں اس بیان کی مذمت کرتا ہوں۔ یہ صرف ایک جھوٹ ہے۔ وزیر اعلیٰ کا عہدہ فروخت کے لیے نہیں ہے۔‘‘

ایک نظر اس پر بھی

منگلورو:کانگریس لیڈر رماناتھ رائے نے کہا؛ سی ٹی روی کے بیان نے بی جےپی کو ننگا کردیا ہے

بی جے پی میں راؤڈی شیٹر وں کی شمولیت کی حمایت میں سی ٹی روی نے جو بیان دیا ہے، اُس بیان نے بی جے پی کو ننگاکردیا ہے۔ ان خیالات کا اظہار  سابق وزیر  اور کے پی سی سی کے نائب صدر بی ، رماناتھ رائی  نے کیا۔

مہاراشٹر-کرناٹک سرحد تنازعہ میں شدت، بیلگاوی میں مہاراشٹر کے ٹرکوں پر پتھراؤ، حالات کشیدہ

کرناٹک اور مہاراشٹر کے درمیان جاری سرحد تنازعہ نے بیلگاوی علاقہ میں حالات کو کشیدہ کر دیا ہے۔ سرحدی علاقہ بیلگاوی میں تشدد کے واقعات پیش آ رہے ہیں اور منگل کے روز تو بیلگاوی کے باگیواڑی میں شدید احتجاجی مظاہرہ دیکھنے کو ملا۔ اس دوران کرناٹک رکشن ویدیکے سے جڑے کارکنان نے ...

’مہاراشٹر کے وزراء نے بیلگاوی میں قدم رکھا تو ہوگی قانونی کارروائی‘، کرناٹک کے وزیر اعلیٰ بسوراج بومئی نے کیا متنبہ

مہاراشٹر اور کرناٹک کے درمیان سرحدی تنازعہ کو لے کر بیان بازی لگاتار بڑھتی جا رہی ہے۔ تازہ بیان کرناٹک کے وزیر اعلیٰ بسوراج بومئی کا سامنے آیا ہے جس میں انھوں نے مہاراشٹر حکومت کو متنبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ اگر ان کے وزراء نے کرناٹک کے بیلگاوی میں قدم رکھنے کی کوشش کی تو ان کے ...

منڈیا : مالا دھاری بھکتوں نے لگائے سری رنگا پٹن جامع مسجد کو ہنومان مندر بنانے کے نعرے - مسجد میں گھسنے کی کوشش پولیس نے کر دی ناکام  

زعفرانی جھنڈے اٹھائے ہوئے ہزاروں  مالا دھاری ہنومان بھکتوں کا جلوس 'سیکیرتھنا یاترا' کی شکل میں ہنومان مندر کی طرف جاتے ہوئے جب تاریخی سری رنگا پٹن جامع مسجد کے سامنے پہنچا تو نوجوان بھکتوں نے اچانک اشتعال انگیزی شروع کر دی اور جامع مسجد کو ہنومان مندر میں بدلنے کے نعرے لگانے ...

مرکزی حکومت کی طرف سے دلت، پسماندہ اور اقلیتی طلباء کا اسکالرشپ ختم کیا جانا انہیں تعلیمی حقوق سے بتدریج محروم کرنے کی حکمت عملی ہے: ایس ڈ ی پی آئی

سوشیل ڈیموکریٹک پارٹی آف انڈیا کرناٹک کے ریاستی صدر عبدالمجید نے اپنے جاری کردہ اخباری بیان میں کہا ہے کہ مرکزی حکومت کی طرف سے تعلیمی سال 23۔2022سے ایس سی، ایس ٹی، پسماندہ طبقات، اور اقلیتی برادریوں سے تعلق رکھنے والے پہلی سے آٹھویں جماعت کے تمام طلباء کو کوئی اسکالرشپ ختم ...