کرناٹک میں 15 اسمبلی سیٹوں پر 248 امیدواروں نے داخل کی پرچہ نامزدگی

Source: S.O. News Service | Published on 19th November 2019, 8:18 PM | ریاستی خبریں |

بنگلورو،19/نومبر(ایس او نیوز/آئی این ایس انڈیا) کرناٹک میں 15 اسمبلی سیٹوں پر پانچ دسمبر کو ہونے والے ضمنی انتخابات کے لئے کل 248 امیدواروں نے پرچہ نامزدگی داخل کئے ہیں۔الیکشن افسر نے یہ معلومات دی۔کرناٹک کے چیف الیکشن افسر کی جانب سے بتائے گئے اعداد و شمار کے مطابق 152 امیدواروں نے پرچہ نامزدگی داخل کرنے کے آخری دن یعنی پیر کو 237 نامزدگی داخل کئے۔پیر تک کل 248 امیدواروں نے پرچہ نامزدگی داخل کئے تھے جن میں سے 56 امیدوار قومی پارٹی کے ہیں، 17 امیدوار ریاست کی پارٹیوں سے ہیں۔وہیں 47 امیدوار رجسٹرڈ غیر منظورشدہ پارٹیوں سے ہیں اور 128 آزاد امیدوار ہیں۔سب سے زیادہ 28 امیدواروں نے شیواجی نگر علاقے سے پرچہ نامزدگی داخل کی ہے۔اس کے بعد 27 امیدواروں نے ہوسکوٹے سیٹ سے نامزدگی داخل کی ہے۔پرچہ نامزدگی کی جانچ آج یعنی منگل کو ہوگی اور نام واپس لینے کی آخری تاریخ 21 نومبر ہے۔ووٹوں کی گنتی نو دسمبر کو ہوگی۔

ایک نظر اس پر بھی

مرکزی حکومت کے خلاف 8/جنوری کو ملک گیر ہڑتال کا اعلان

آل انڈیا اسٹوڈنٹس فیڈریشن (اے آئی ایس ایف) نے تعلیم، روزگار، خواتین کے حقوق کی پامالی، معاشی شعبہ میں گراوٹ اوربے روزگاری کے مسئلہ کو حل کرنے میں ناکام مرکزی حکومت کے خلاف 8/جنوری کو ملک گیر ہڑتال کا اعلان کیا ہے-

شہریت ترمیمی قانون کے خلاف ہلیال میں دیا گیا میمورنڈم

مرکزی حکومت کی جانب سے متنازع شہریت ترمیمی بل منظور کیے جانے کے خلاف ہلیال میں جمیت العلماء الہند ضلع کاروارکے پرچم تلے مسلمانوں اور غیر مسلم ایس سی / ایس ٹی لیڈروں نے مشترکہ طور پر تحصیلدار کی معرفت سے صدر ہند کو میمورنڈم پیش کیا۔

شہریت ترمیمی بل کے خلاف بنگلورو میں کرناٹکامسلم متحدہ محاذ کے زیر اہتمام ملّی و سماجی تنظیموں کا زبردست احتجاجی مظاہرہ

سماج کو مذہبی بنیادوں پر تقسیم کرنے والے مرکزی حکومت کے شہریت ترمیمی بل (سی اے بی) کے خلاف بنگلورو میں کرناٹکا متحدہ محاذ کے زیر اہتمام دوپہر 12بجے ٹاؤن ہال کے پاس ایک زبردست احتجاجی مظاہرہ کیا گیا۔