ضمنی اسمبلی انتخاب: سابقہ اسمبلی میں نااہل قرار دئے گئے امیدواروں کو کرنا پڑ رہا ہے مشکلات کا سامنا

Source: S.O. News Service | Published on 2nd December 2019, 11:13 AM | ریاستی خبریں |

بنگلورو2/دسمبر (ایس او نیوز) سابقہ اسمبلی میں اپنی پارٹیوں سے بغاوت کرکے مخلوط حکومت گرانے اور بی جے پی کو بر سراقتدار لانے میں معاون بننے والے امیدواروں کو نااہل قرار دیا گیا تھا۔ اب ان میں سے بیشتر افراد کو بی جے پی نے اپنے ٹکٹ پر ضمنی انتخاب میں اتار ا ہے۔ لیکن کئی مقامات پر ایسے امیدواروں کے لئے ووٹروں کا سامنا کرنا مشکل ہورہا ہے۔

سابقہ کانگریسی ایم ایل اے اور موجودہ بی جے پی امیدوار شیو رام ہیبار کو اجّارانی گاؤں میں ووٹروں نے آڑے ہاتھوں لیاتھا اور انہیں وہاں سے منھ لٹکائے واپس لوٹنے پر مجبور کیا تھا۔ اس موقع پر شیورام ہیبار کے حمایتی اور مخالف افراد کے درمیان جھگڑے کی نوبت آگئی تھی۔

 کچھ ایسا ہی معاملہ ہونسور حلقہ اسمبلی میں بھی پیش آیا جہاں بی جے پی کے امیدوار وشواناتھ اے ایچ کو مقامی لوگوں کے اس سوال کا جواب دینے اور انہیں مطمئن کرنے میں کامیابی نہیں ملی کہ گزشتہ مرتبہ جنتا دل ایس کے امیدوار کے طورپر انہیں منتخب کرنے کے بعدپورے سال میں جب ایک مرتبہ بھی انہوں نے گاؤں کا دورہ نہیں کیااور عوام کے مسائل حل نہیں کیے تو پھر کیوں اس بار انہیں ووٹ دیا جائے۔اسی طرح کے آر پیٹ حلقے میں بی جے پی امیدوارکے سی نارائن کو تشہیری مہم کے دوران جب لوگوں نے گھیرنا اور ان کا مذاق اڑانا شروع کیا تو پھر انہوں نے اپنے لئے پولیس تحفظ حاصل کرلیا ہے۔اس کے علاوہ شمالی کرناٹکا اور بیلگاوی  جیسے علاقوں میں ضمنی انتخا ب کے امیدواروں کوسیلاب سے متاثرہ افراد کا سامنا کرنے میں بڑی دشواری پیش آرہی ہے۔ 

خیال رہے کہ کرناٹکا اسمبلی کے پندرہ حلقوں میں ضمنی انتخابات ہورہے ہیں جس کے لئے 5دسمبر کو پولنگ ہونے والی ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

’’سنڈے لاک ڈاؤن ‘‘ ریاست بھر میں مؤثر۔ سڑکیں ویران ، کاروبار بند

کورونا وائرس سے بچنے کے لئے ریاستی حکومت نے ہر اتوار مکمل لاک ڈاؤن کرنے کا جو فیصلہ لیا اس کے مطابق 5 ؍ جولائی پہلی اتوار ہی جب ان لاک ڈاؤن ماحول میں ریاست بھر کے شہریوں نے مکمل لاک ڈاؤن کر کے اس وائرس سے بچنے کے لئے حکومت کے اقدام کو اپنا بھر پور تعاون پیش کیا۔

کورونا وائرس کی روک پر لاک ڈاؤن بے اثر ؛ کرناٹک میں ایک ہی دن 1925 پوزیٹیو کیس، 37؍اموات

ریاست کرناٹک میں کل ایک ہی دن کورونا وائرس کی زد میں آکر 38 مریض ہلاک ہوگئے جبکہ 1925 کووڈ معاملات کا پتہ چلا ہے۔ کرناٹک میں بھی کورونا وائرس کا خوفناک پھیلاؤ رکنے اور تھمنے کا نام نہیں لے رہا ہے، ہر گزرتے لمحے اور دن کے ساتھ کورونا وائرس کے نئے معاملات میں اضافہ ہی ہوتا جارہا ہے،

کورونا سے متاثر ہو کرمرنے والوں کی تدفین میں رکاوٹ درست نہیں، لاک ڈاؤن ہو یا نہ ہو اپنے آپ احتیاط برت کر وائرس سے بچنے کی کوشش کریں: ضمیر احمد خان

شہر بنگلورو میں کورونا وائرس کے کیسوں کی تعداد میں جس طرح کا بے تحاشہ اضافہ ہو رہا ہے اسی رفتار سے اس مہلک وباء کی زد میں آکر مرنے والوں کی تعداد میں بھی اضافہ ہو تا جارہا ہے۔ اس وباء کا شکار ہو کر مرنے والے افراد کی تدفین اور دیگر آخری رسومات کے لئے عالمی صحت تنظیم کی طرف سے جو ...

کوروناکاقہر جاری،کرناٹک میں ایک ہی دن 21اموات، 24گھنٹوں کے دوران بنگلورومیں 994سمیت جملہ 1694کووڈکاشکار

ریاست میں آج ایک ہی دن کوروناوائرس کی زدمیں آکر21مریض ہلاک ہوگئے جبکہ 1694 کووڈمعاملات کا پتہ چلاہے۔ کرناٹک میں بھی کوروناوائر س کاخوفناک پھیلاؤ رکنے اورتھمنے کا نام نہیں لے رہاہے،ہرگزرتے لمحے اوردن کے ساتھ کوروناوائرس کے نئے معاملات میں اضافہ ہی ہوتاجارہاہے،