کورونا: کنیکا کپور نے لی راحت کی سانس، چھٹے اور ساتویں ٹیسٹ رپورٹ میں ملی خوشخبری

Source: S.O. News Service | Published on 6th April 2020, 11:41 PM | ملکی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

لکھنؤ،6؍اپریل (ایس او نیوز؍یو این آئی) متعدد بار کورونا وائرس کی جانچ رپورٹ مثبت آنے کے بعد بلآخر بالی ووڈ گلوکارہ کنیکا کپور کی آخری دو رپورٹیں منفی آئی ہیں اور اب اسپتال انتظامیہ ان کو پیر یعنی آج ڈسچارج کرنے کی تیاری میں ہے۔ اسپتال انتظامیہ کی جانب سے پیر کی صبح جاری کی گئی گلو کارہ کی ساتویں رپورٹ دوسری بار بھی منفی آئی ہے۔ انتظامیہ نے اتوار کو جانچ کے نمونے لئے تھے۔ ذرائع کے مطابق آخری دو مرتبہ رپورٹ منفی آنے کی وجہ سے اگرچہ گلوکارہ کو ایس جی پی جی آئی سے نکال دیا جائے گا۔ لیکن انہیں اگلے 14 دنوں تک گھر میں قرنطینہ میں رہنا ہوگا۔ اس دوران ان کی لگاتار جانچ بھی ہوگی۔

ابتداء میں کنیکا کپور نے ایس جی پی جی آئی میں اپنی جھنجھلاہٹ کا اظہار کرتے ہوئے بہتر سہولیات کا مطالبہ کیا تھا لیکن سختی کے بعد انہوں نے ڈاکٹروں کے مشورے کو مانتے ہوئے ان کے ساتھ کوآپریٹ کیا۔ کنیکا کپور کے اندر کووڈ۔19 کی تصدیق کے بعد متعدد سیاسی لیڈروں بشمول یوپی کے وزیر صحت جے پرتاپ سنگھ نے خود 14 دنوں کے لئے قرنطینہ میں چلے گئے تھے۔ تمام افراد جو کنیکا کپور کے رابطے میں آئے تھے جن میں ان کے والدین اور افراد خانہ بھی شامل تھے سب کی رپورٹ منفی آئی ہے۔

کورونا وائرس سے متاثر ہونے اور انتظامیہ کی جانب سے خود کو گھر میں قرنطنیہ میں رکھنے کی ہدایت کے باجود متعدد سماجی پروگرام میں شرکت کرنے کی پاداش میں لکھنؤ پولیس نے کنیکا کپور کے خلاف ایف آئی آر بھی درج کی ہیں۔

ایک نظر اس پر بھی

کورونا: ہندوستان میں ہلاکتوں کی تعداد 46 ہزار کے پار، 24 گھنٹے میں پھر 60 ہزار سے زائد کیسز درج

ہندوستان میں کورونا وائرس کے بڑھتے قہرکے درمیان اس جان لیوا وبا سے شفایابی حاصل کرنے والوں کی تعداد میں بھی تیزی سے اضافہ ہورہا ہے اور گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران 56 ہزار سے زیادہ افراد کی شفایابی کے بعد اب تک تقریبا 16.40 لاکھ صحت مند ہوئے ہیں۔

باپ کی املاک پر بیٹی کا بیٹے کی طرح یکساں حق: سپریم کورٹ

سپریم کورٹ نے منگل کو ایک دور رس نتائج والے اپنے فیصلہ میں کہا ہے کہ ہندو غیر منقسم خاندان کی آبائی املاک میں بیٹی کو بیٹے کی طرح ہی حقوق حاصل ہوں گے، یہاں تک کہ اگر ہندو جانشینی (ترمیمی) ایکٹ 2005 کے نفاذ سے قبل ہی اس کے والد کی موت کیوں نہ ہوگئی ہو۔

بنگلور: ٹرانسفرس کے احکامات ملتوی کرانے میں مبینہ طور پر با رسوخ اساتذہ کی لابی شامل، چار سال سے ڈگری کالجوں کے لکچررس کے تبادلے نہیں ہوسکے

ریاست کرناٹک کے سرکاری فرسٹ گریڈ کالجوں میں خدمات انجام دے رہے لکچررس کے تبادلے نہیں ہوسکے ہیں، جس کے سبب انہیں کافی مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے اس تعلق سے الزامات لگائے جارہے ہیں کہ  چند با رسوخ لکچررس کی طرف سے سیاسی اثر و رسوخ کا استعمال کرکے تبادلوں کی کاروائی ملتوی ...