بھٹکل میں کورونا لاک ڈاون کے بعد ملی چھوٹ میں دس سال سے کم عمر بچوں اور عمر رسیدہ لوگوں کو نہیں ہوگی جمعہ نماز میں شریک ہونے کی اجازت

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 11th June 2020, 2:44 AM | ساحلی خبریں |

بھٹکل 10 جون (ایس او نیوز) کورونا وباء کے پھیلنے پر ملک بھر میں ہوئے لاک ڈاون کے بعد دی گئی چھوٹ میں اس بات کا فیصلہ کیا گیا ہے کہ  جمعہ کی نماز تمام جمعہ مساجد میں ہی ادا کی جائے گی اور جمعہ نماز کے دوران سماجی فاصلہ  کا خیال رکھا جائے گا۔ یہ بات مرکزی خلیفہ جماعت المسلمین بھٹکل کے قاضی مولانا خواجہ معین الدین اکرمی مدنی نے بتائی۔ 

مجلس اصلاح و تنظیم بھٹکل میں بھٹکل کی تمام جمعہ مساجد کے ذمہ داران کے ساتھ منعقدہ اہم میٹنگ میں انہوں نے بتایا کہ  بھٹکل کے دونوں قاضی صاحبان اور دونوں جماعتوں کے ذمہ داران نے متفقہ طور پر اس بات کا فیصلہ کیا ہے کہ  تمام جمعہ مساجد میں  ایک دوسرے سے فاصلہ رکھتے ہوئے جمعہ کی نماز دوگانہ ادا کی جائے۔ اس کے لئے بارہ بجے ہی مسجدوں کو کھولا جائے گا۔

جمعہ کی نماز  میں تمام جمعہ مساجد نمازیوں سے بھری ہوتی ہیں، ایسے میں اگر ایک دوسرے کے درمیان  فاصلہ رکھ کر نماز کے لئے کھڑے ہوں گے تو  مسجدوں میں نماز کےلئے جگہ ناکافی ہونے کا خدشہ پایا جارہا تھا  مگر   اس تعلق سے  مولانا نے بتایا کہ  حکومت کی ہدایات کے  مطابق چونکہ  دس سال یا  اس سے کم عمر بچوں سمیت عمر رسیدہ لوگوں  کو مسجدوں میں داخل ہونے سے منع کیا گیا ہے اور اُنہیں گھروں پر ہی نماز پڑھنے کی تلقین کی گئی ہے، جماعتوں کے ذمہ داران نے  محسوس کیا کہ ہم بھی اگر اس  بات کو یقینی بنائیں اور بچوں اور  60/65  سال سے زائد عمر والے لوگوں کو گھروں میں ہی نماز پڑھنے کی  تلقین کریں تو 40 فیصد لوگ  کم ہوجائیں گے، اس مناسبت سے مسجدوں میں جگہ ناکافی ہونے کا خدشہ باقی نہیں رہے گا۔  مولانا نے  تمام جمعہ مساجد کے ذمہ داران پر زور دیا کہ وہ  اپنی مسجدوں میں اس ہدایت کو لاگو کریں اور سختی کے ساتھ حکماً انہیں یہ کہا جائے کہ وہ مسجد میں نماز کے لئے نہ آئیں۔ انہوں نے یہ بھی بتایا کہ  قاضی جماعت المسلمین مولانا محمد اقبال مُلا ندوی صاحب نے  عوام کے لئے اپنی ہی  مثال پیش کی ہے اور بتایا ہے کہ وہ خود چونکہ عمر رسیدہ ہیں اس لئے  وہ خود  بھی جمعہ کی نماز کے لئے مسجد میں نہیں جا ئیں گے اور گھر پر ہی ظہر کی نماز ادا کریں گے۔ 

جمعہ مسجدوں کے ذمہ داران کو بتایا گیا کہ جمعہ کی نماز کا خطبہ مختصر کیا جائے، خطبہ  کے بعد اس کا ترجمہ پیش نہ کیا جائے اور  نماز ہوتے ہی گھر چلے جائیں، کسی سے مصافحہ کرنے اور مسجدوں کے باہر  جمع ہوکر ایک دوسرے سے ملاقات کرتے کھڑے ہونے  سے بھی احتراز کرنے کی ہدایت دی گئی۔ایک ذمہ دار نے اس بات کی بھی رائے دی کہ نماز مکمل ہوتے ہی آخری صفوں سے لوگ پہلے باہر جانا شروع کریں، ایک ساتھ باہر جانے سے احتراز کیا جائے۔ باہر جانے کے بعد ہجوم  جمع نہ ہونے پائے۔

میٹنگ میں مساجد کے  ذمہ داران کو تاکید کی گئی کہ وہ اپنی اپنی مسجدوں کے باہر  متحرک   والنٹیرس کا انتظام کریں جو  اس بات کو یقینی بنائیں کہ بچے اور عمر رسیدہ لوگوں کو مسجد  میں داخل کرنے سے پیار محبت سے منع کریں اور انہیں گھروں میں ہی جاکر نماز پڑھنے کی تلقین کریں، اسی طرح مسجد میں داخل ہونے والوں کی تھرمل اسکیننگ کی جائے اور مسجد میں داخل ہونے سے پہلے انہیں ہاتھ دھونے کے لئے کہا جائے۔ نمازیوں کے لئے کہا گیا ہے کہ وہ گھروں پر ہی وضو کرکے مسجد کا رُخ کریں اور اپنے منہ پر ماسک لگانا نہ بھولیں۔

چونکہ جمعہ کا خطبہ مختصر ہوگا، اور مسجد میں داخل ہونے سے پہلے تھرمل اسکیننگ بھی کرنی ہوگی،  اس لئے  نمازیوں کے لئے ضروری  ہوگا کہ وہ وقت سے پہلے گھر سے جمعہ کی نماز کے لئے نکلیں۔ 

جمعہ مسجدوں کے ذمہ داران کے ساتھ   میٹنگ سے پہلے تنظیم ہال میں  بھٹکل کی جملہ مساجد کے ذمہ داروں کے ساتھ بھی میٹنگ رکھی گئی تھی جنہیں مسجدوں میں نماز پڑھنے کے تعلق سے مکمل ہدایات دی گئیں اور حکومت کی جانب سے جاری کئے گئے   گائیڈلائن سے آگاہ کیا گیا۔

 جناب عبدالرحمن محتشم، جناب سعدا میراں،  جناب  ایس ایم پرویز،  جناب عبدالرقیب ایم جے ندوی، عنایت اللہ شاہ بندری،  ایڈوکیٹ عمران لنکا،  عبدالعزیز رکن الدین ندوی،  ابوبکر قمری صاحب،  مولانا  یونس ندوی،    ڈی ایف صدیق،  مینارٹی آفسر جناب شمس الدین صاحب و دیگر کافی ذمہ داران موجود تھے۔

ایک نظر اس پر بھی

بھٹکل کا نوجوان اُدیاور میں ہوئے سڑک حادثہ میں شدید زخمی؛ علاج کے لئے مالی تعاون کی اپیل

بھٹکل مخدوم کالونی کا ایک نوجوان اُڈپی کے اُدیاور میں سڑک حادثہ میں شدید زخمی ہوا ہے اور اسے منی پال کستوربا اسپتال شفٹ کیا گیا ہے، نوجوان کی مالی حالت کمزور ہونے  کی وجہ سے علاج کے لئے  قریب تین لاکھ  روپیوں کی فوری ضرورت ہے۔ نوجوان کی شناخت سمیرسوکیری (34) کی حیثیت سے کی گئی ...

دبئی میں ایک سواری نے ایک شخص کو رونڈ ڈالا؛ مہلوک ایشیائی شخص کی شناخت ہنوز نہیں ہوپائی؛ پولس نے عوام سے کی تعاون کی اپیل

یہاں ایک سواری کی ٹکر میں ایک شخص ہلاک ہوگیا مگر اُس شخص کی شناخت ابھی تک معمہ بنی ہوئی ہے اور یہ کون ہے، کس ملک یا کس  شہر سے ہے کچھ پتہ نہیں چل پایا ہے۔ پولس کا کہنا ہے کہ یہ ایشیاء کے  کسی ملک سے تعلق رکھتا ہے۔

دبئی :شیرورگرین ویلی اسکول کے صدر ڈاکٹر سید حسن کی دختر دانیا کو ملا شیخہ فاطمہ بنت مبارک ایوارڈ آف ایکسلینس‘

عرب امارات میں بہترین ہمہ جہتی تعلیمی کارکردگی کے لئے طالب علموں کو دیا جانے والا ’’ہَرہا ئنیس شیخہ فاطمہ بنت مبارک ایوارڈ آف ایکسلینس“ امسال دانیا حسن کو تفویض کیا گیا ہے جس کا تعلق  بھٹکل کے پڑوسی علاقہ شرور سے ہے۔

بھٹکل میں الحاج محی الدین مُنیری کے نام سے موسوم ہائی ٹیک ایمبولنس کا خوبصورت افتتاح

   یہاں نوائط کالونی میں  دبئی کے معروف تاجر جناب عتیق الرحمن  مُنیری کی طرف سے ان کے والد مرحوم الحاج محی الدین مُنیری کے نام سے منسوب ایک ہائی ٹیک ایمبولنس کا خوبصورت افتتاح عمل میں آیا جس میں بھٹکل کی سرکردہ شخصیات سمیت علماء و عمائدین   موجود تھے۔