راجستھان میں اگلے سال ایک اپریل سے نافذہوگا ’جن آدھار کارڈ‘

Source: S.O. News Service | Published on 15th December 2019, 11:31 PM | ملکی خبریں |

نئی دہلی،15/دسمبر(ایس او نیوز/آئی این ایس انڈیا) راجستھان حکومت نے ریاست کے شہریوں کو مختلف سرکاری اسکیموں کا فائدہ دینے کے لئے ایک نیا کارڈ ’جن آدھارکارڈ لانے کا باقاعدہ اعلان کر دیا ہے۔اشوک گہلوت حکومت کے دور کا ایک سال پورے ہونے کے موقع پر 18 دسمبر کو یہاں جن آدھار یوجنا کا آغاز ہوگا اور اگلے سال ایک اپریل سے یہی کارڈ نافذ ہوگا۔ایک سینئر افسر نے بتایا کہ نئے ’جن آدھار کارڈ‘ کے وجود میں آنے کے بعد پیشرو بی جے پی حکومت کی طرف سے جاری کیا گیا ’بھاماشاہ کارڈ‘ بند ہو جائے گا۔افسر نے کہا کہ موجودہ ’بھاماشاہ کارڈ‘ کی جگہ ’جن آدھار کاڈر‘ جاری کرنے کے عمل کو شروع کر دیاگیا ہے اسے اگلے تین ماہ میں مکمل ہونے کی امید ہے۔انہوں نے کہا کہ جن آدھار کارڈ 10 ہندسوں کا مخصوص نمبر والا ہوگا۔اس کا رجسٹر جن آدھارپورٹل یا ای مترپر جاکر ڈاؤن کرایا جا سکے گا۔ریاست کے وزیر صحت ڈاکٹر رگھو شرما نے اسی ہفتے کابینہ کے اجلاس کے بعد کہا تھاکہ پورے راجستھان میں بھاماشاہ کارڈ 31 مارچ 2020 تک رپلیس ہو جائے گا۔اس کے بعد جن آدھار کارڈ ہی کام میں آئے گا۔ جن آدھار کارڈ کا نمبر الگ بنے گا۔بھاماشاہ کارڈ کا نمبر 31 مارچ 2020 کے بعد ختم ہوجائے گا۔قابل ذکر ہے کہ بھاماشاہ کارڈ کے آغاز 2014 میں اس وقت کے وسدھرا راجے حکومت نے کیا تھا۔اس میں خاندان کی خواتین کے نام پر کارڈ جاری کیا جاتا ہے اور عوامی تقسیم کے نظام، مفت طبی، پنشن سمیت تمام سرکاری منصوبوں کے فوائد اسی کارڈ کے ذریعے ہوں گے۔ اسی ایم گہلوت نے جولائی میں پیش اپنے بجٹ میں راجستھان جن آدھار منصوبہ لانے کی بات کہی تھی۔اس گاڈلان کے مطابق اس کے تحت ریاست کے ہر خاندان کو جن آدھار کارڈ دیا جائے گا۔

ایک نظر اس پر بھی

باپ کی املاک پر بیٹی کا بیٹے کی طرح یکساں حق: سپریم کورٹ

سپریم کورٹ نے منگل کو ایک دور رس نتائج والے اپنے فیصلہ میں کہا ہے کہ ہندو غیر منقسم خاندان کی آبائی املاک میں بیٹی کو بیٹے کی طرح ہی حقوق حاصل ہوں گے، یہاں تک کہ اگر ہندو جانشینی (ترمیمی) ایکٹ 2005 کے نفاذ سے قبل ہی اس کے والد کی موت کیوں نہ ہوگئی ہو۔

راجستھان میں سیاسی صلح، بی جے پی کے منھ پر زور کا طمانچہ: کانگریس

کانگریس نے راجستھان یونٹ میں کئی دنوں سے جاری تنازعہ کے سلجھنے پر ریاست کے عوام کو مبارکباد دیتے ہوئے اسے پارٹی اعلیٰ کمان کے ’سب کو ساتھ لے کر چلنے‘ کی پالیسی کا نتیجہ بتایا کہ اور کہا کہ یہی بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کو کرارا جواب ہے۔

یو جی سی امتحانات معاملے میں سماعت جمعہ تک ملتوی

سپریم کورٹ نے پیر کے روز حکومت سے یہ جاننے کی کوشش کی کہ کیا اسٹیٹ ڈیزاسٹر مینجمنٹ ایکٹ یونیورسٹی گرانٹس کمیشن (یو جی سی) کی ہدایت کو متاثر کر سکتا ہے؟ ۔ اس کے ساتھ ہی عدالت نے معاملے کی سماعت 14 اگست تک ملتوی کردی ۔