مودی۔امیت شاہ کی حرکتوں سے ملک کا اتحاد خطرے میں : راج ٹھاکرے

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 18th April 2019, 11:35 AM | ملکی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

ممبئی،18؍اپریل (ایس او نیوز؍یواین آئی) مہاراشٹر نونرمان سینا کے سربراہ راج ٹھاکرے نے آج ایک بارپھر بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کو آڑے ہاتھوں لیتے ہوئے کہاکہ بی جے پی کی اور اس کے لیڈروں مودی ۔امیت شاہ کی وجہ سے ملک کی جمہوریت کو شدید خطرہ ہے ،اچل کرنجی میں ایک جلسہ سے خطاب کرتے ہوئے راج نے مزید کہا کہ ملک کی تاریخ میں ایسا پہلی بار ہوا کہ سپریم کورٹ کے چار ججوں نے ایک پریس کانفرنس میں متنبہ کیا کہ ملک کی آزادی ،جمہوریت اور مقننہ کو شدید خطرہ ہے ۔ انہوں نے مزید کہا کہ ملک ایک بار ان کے جھانسے میں پھنس گیا ہے ،لیکن اب دوسری بار عوام کو ان کی جال میں پھنسنا نہیں ہے ،ان کا کہنا تھاکہ بی جے پی کے پاس ان کے سوالات کے جواب نہیں ہیں۔راج ٹھاکرے نے سپریم کورٹ کے ججوں کی پریس کانفرنس کے حوالے سے بی جے پی اور مودی ۔امیت شاہ کی جوڑی کو نشانہ بناتے ہوئے جج لویا کی پراسرارموت کا بھی ذکر کیا ۔انہوں نے اشارے میں اس کے لیے بی جے پی صدرامیت شاہ کوذمہ دار قراردیا۔انہوں نے کہا کہ میں نے حال کے جلسوں میں بی جے پی کے سربراہوں مودی اور شاہ سے ملک کی موجودہ صورتحال پر متعدد سوالات کیے ہیں ،لیکن ان کے پاس میرے سوالات کے جواب نہیں ہیں۔ایم این ایس سرابرہ راج ٹھاکرے نے کہاکہ ریزروبینک کے دوگورنروں کو دباؤ میں لیا گیا اور انہیں عہدے سے ہاتھ دھونا پڑا ، انہوں نے کہا کہ امیت شاہ وزیراعظم مودی کے پٹھو ہیں۔

ایک نظر اس پر بھی

وزیراعظم مودی نے کابینہ سمیت سونپا صدرجمہوریہ کو استعفیٰ، 30 مئی کو دوبارہ حلف لینےکا امکان

لوک سبھا الیکشن کے نتائج کے بعد جمعہ کی شام نریندرمودی نے وزیراعظم عہدہ سے استعفیٰ دے دیا۔ ان کے ساتھ  ہی سبھی وزرا نے بھی صدرجمہوریہ کواپنا استعفیٰ سونپا۔ صدر جمہوریہ نےاستعفیٰ منظورکرتےہوئےسبھی سے نئی حکومت کی تشکیل تک کام کاج سنبھالنےکی اپیل کی، جسے وزیراعظم نےقبول ...

نوجوت سنگھ سدھوکی مشکلوں میں اضافہ، امریندر سنگھ نے کابینہ سے باہرکرنے کے لئے راہل گاندھی سے کیا مطالبہ

لوک سبھا الیکشن میں زبردست شکست کا سامنا کرنے والی کانگریس میں اب اندرونی انتشار کھل کرباہرآنے لگی ہے۔ پہلےسے الزام جھیل رہے نوجوت سنگھ سدھو کی مشکلوں میں اضافہ ہونےلگا ہے۔ اب نوجوت سنگھ کوکابینہ سےہٹانےکی قواعد نے زورپکڑلیا ہے۔

اعظم گڑھ میں ہارنے کے بعد نروہوا نے اکھلیش یادو پر کسا طنز، لکھا، آئے تو مودی ہی

بھوجپوری سپر اسٹار نروہوا (دنیش لال یادو) نے لوک سبھا انتخابات کے دوران سیاست میں ڈبیو کیا تھا،وہ بی جے پی کے ٹکٹ پر یوپی کی ہائی پروفائل سیٹ اعظم گڑھ سے انتخابی میدان میں اترے تھے لیکن اترپردیش کے سابق وزیر اعلی اکھلیش یادو کے سامنے نروہا ٹک نہیں پائے۔

مسلمانوں کے خلاف اشتعال انگیز بیانات دینے والوں کی بھاری اکثریت کے ساتھ جیت

مسلمانوں کے خلاف ہمیشہ اشتعال انگیز بیانات دینے والوں کو اس مرتبہ لوک سبھا انتخابات میں بھاری اکثریت کے ساتھ کامیابی حاصل ہوئی ہے۔ اترکنڑا لوک سبھا حلقے کے بی جے پی اُمیدوار اننت کمار ہیگڈے جنہوں نے کہا تھا کہ جب تک اسلام رہے گا دہشت گردی رہے گی،اسی طرح انہوں نے  دستور کی ...

ایچ کے پاٹل نے راہل گاندھی کو بھیجا استعفیٰ

ریاست میں کانگریس کے تشہیری مہم کمیٹی کے صدر ایچ کے پاٹل نے لوک سبھا انتخابات میں ریاست میں پارٹی کی شکست کی اخلاقی ذمہ داری لیتے ہوئے اپنے عہدے سے استعفی دینے کی پیشکش کی ہے۔