بہتر ہوتا اگر دہلی میں ہوٹل کھولنے کی اجازت دی جاتی: وزیر صحت ستیندر جین

Source: S.O. News Service | Published on 1st August 2020, 9:46 PM | ملکی خبریں |

نئی دہلی،یکم اگست(ایس او نیوز؍ایجنسی) دہلی کے وزیر صحت ستیندر جین نے سنیچر کے روز کہا ہے دہلی میں ہوٹل کھولنے کے فیصلے کو لیفٹیننٹ گورنر انیل بیجل کی جانب سے اجازت نہیں ملنے پر کہا کہ اگر اجازت دی جاتی تو بہتر ہوتا ۔ ستیندر جین نے دہلی میں کورونا کی اصل صورتحال کا جائز لینے کے لئے آج سے شروع ہونے والے پانچ روزہ دوسرے سروے کے موقع پر میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا ’’لیفٹیننٹ گورنر نے تین بڑے فیصلے پلٹ دیے ہیں ۔ اترپردیش میں ہوٹل کھلے ہوئے ہیں۔ دہلی کی سرحد سے متصل غازی آباد ، نوئیڈا ، ہریانہ میں کھلے ہوئے ہیں ، وہاں کیسز بڑھ رہے ہیں اور ہوٹل کھلے ہوئے ہیں ، لیفٹیننٹ گورنر کی مرضی ہے ، میں آپ کو اصل صورتحال بتا سکتا ہوں کی ان لاک کے لئے جب مرکز نے اعلان کیا تھا ، اجازت دی تھی ، ہم چاہتے تھے کہ اگر اجازت دی جاتی تو بہتر ہوتا‘‘۔

واضح رہے کہ دہلی حکومت نے آج سے شروع ان لاک 3 میں ہوٹلوں اور ہفتہ وار بازاروں کو تجربے کے طور پر ایک ہفتے کے لئے کھولنے کا فیصلہ کیا تھا ، لیکن لیفٹیننٹ گورنر بیجل نے اسے مسترد کردیا۔ ستیندر جین نے کہا کہ آج سے دہلی میں دوسرا سیرولوجیکل سروے شروع ہورہا ہے جو 5 اگست تک چلے گا۔ سیرولوجیکل سروے میں خون کا نمونہ لے کر جانچ کی جاتی ہےکہ آپ کے جسم میں اینٹی باڈیزبنی یا نہیں ، اگر پازیٹو آیا تو اس کا مطلب یہ ہے کہ کورونا ہوا تھا اور آپ صحت یاب ہوچکے ہیں اور جسم میں اینٹی باڈیز بن چکی ہیں۔

سیرولوجیکل سروے کی رپورٹ میں 24 فیصد لوگوں میں اینٹی باڈیز بننے کا انکشاف ہو ا تھا ۔ اس کا مطلب ہے کہ 24 فیصد لوگ پازیٹو ہو کر صحت یاب ہو گئے تھے۔ اب ہم دیکھنا چاہتے ہیں کہ ڈیڑھ ماہ کے بعد اس میں کتنا فرق پڑا ہے ،پچھلی بار 24 فیصد تھا ، اس بار ہم دیکھنا چاہتے ہیں کہ اس میں کتنا فرق آیا ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

”دہلی کا فساد بدلے کی کارروائی تھی۔ پولیس نے ہمیں کھلی چھوٹ دے رکھی تھی“۔فسادات میں شامل ایک ہندوتوا وادی نوجوان کے تاثرات

دہلی فسادات کے بعد پولیس کی طرف سے ایک طرف صرف مسلمانوں کے خلاف کارروائی جاری ہے۔ سی اے اے مخالف احتجاج میں شامل مسلم نوجوانوں اور مسلم قیادت کے اہم ستونوں پر قانون کا شکنجہ کسا جارہا ہے، جس پر خود عدالت کی جانب سے منفی تبصرہ بھی سامنے آ چکا ہے۔

کورونا کے خلاف لڑائی میں بہار حکومت سب سے پیچھے: یشونت سنہا

سابق مرکزی وزیر خزانہ یشونت سنہا نے کورونا وبا کے خلاف لڑائی میں حکومت بہار کو پھسڈی قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ مناسب وقت ملنے کے باوجود بھی حکومت اس سنگین صورت حال میں لوگوں کے لئے معقول انتظام کرنے میں ناکام رہی ہے۔

مدھیہ پردیش: کورونا سے کل 886 افراد ہلاک، 921 نئے معاملے

مدھیہ پردیش میں کورونا وائرس کووڈ۔19 کے انفیکشن میں مسلسل اضافہ ہو رہا ہے اور 921 نئے معاملے سامنے آنے کے بعد ان کی مجموعی تعداد بڑھ کر 33535 ہوگئی ہے۔ ان میں سے 23550 صحتیاب ہوچکے ہیں۔ سرگرم معاملوں کی تعداد 9099 ہے۔

ملک کے وزیرداخلہ کے بعد اب کرناٹک کے وزیراعلیٰ کی کورونا رپورٹ بھی نکلی پوزیٹیو؛ کرناٹک میں آج بھی کورونا کے معاملات پانچ ہزار سے زائد

کرناٹک کے وزیراعلیٰ بی ایس یڈی یورپا نے ٹویٹ کرتے ہوئے خبر دی ہے کہ اُن کی کوویڈ۔19 رپورٹ آج اتوار کو  پوزیٹیو پائی گئی ہے۔ رات قریب 11:30 بجے ٹویٹ کرتے ہوئے انہوں نے بتایا کہ ویسے تو وہ بالکل ٹھیک ٹھاک ہیں لیکن ڈاکٹروں کی ہدایت پر   احتیاطاً   اسپتال میں  ایڈمٹ ہوگئے ہیں۔