مہاراشٹر میں ’ہورس ٹریڈنگ‘ کا خدشہ، شیوسینا نے کہا- کچھ لوگ ’تھیلی‘ کی زبان بول رہے

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 7th November 2019, 9:06 PM | ملکی خبریں |

ممبئی،7؍نومبر (ایس او نیوز؍ایجنسی) مہاراشٹر میں بی جے پی اور شیو سینا کے درمیان سیاسی جنگ تیز تر ہو گئی ہے۔ شیوسینا نے بی جے پی پر آج ایک بار پھر اپنے ترجمان ’سامنا‘ میں زبردست حملہ کیا ہے۔ شیوسینا نے اشاروں اشاروں میں اراکین اسمبلی کی خرید و فروخت کی بات بھی کہہ ڈالی ہے۔ سامنا میں اس نے لکھا ہے کہ کچھ لوگ نئے اراکین اسمبلی سے رابطہ قائم کر کے ’تھیلی‘ کی زبان بول رہے ہیں۔ شیو سینا نے کہا کہ ریاست میں غیر معیاری سیاست کو وہ نہیں چلنے دے گی۔ اس کے لیے شیوسینک تلوار لے کر کھڑے ہیں۔ شیو سینا نے اس کے ساتھ ہی یہ بتانے کی کوشش کی ہے کہ ریاست میں اراکین اسمبلی کی خرید و فروخت کی کوشش کی جا رہی ہے۔

شیو سینا وزیر اعلیٰ عہدہ کو لے کر بضد ہے اور وہ اسے چھوڑنا نہیں چاہتی۔ شیو سینا کا کہنا ہے کہ ڈھائی سال اس کا اور ڈھائی سال بی جے پی کا وزیر اعلیٰ ہوگا۔ اس کے پیچھے شیو سینا کی دلیل ہے کہ لوک سبھا انتخاب کے دوران امت شاہ کے ساتھ ہوئی میٹنگ میں اس بات پر مہر لگی تھی۔

مہاراشٹر میں حکومت تشکیل کرنے کے لیے صرف جمعہ تک کا وقت بچا ہے۔ شیو سینا کو اس بات کا خوف ستا رہا ہے کہ کہیں بی جے پی اس کے اراکین اسمبلی کو نہ توڑ لے۔ خبر ہے کہ شیوسینا اپنے اراکین اسمبلی کو ہوٹل میں شفٹ کر سکتی ہے۔ حالانکہ اس بات سے شیوسینا نے سیدھے طور پر انکار کر دیا ہے۔ سنجے راؤت نے شیوسینا کے ذریعہ پارٹی کے اراکین اسمبلی کو ریسورٹ میں منتقل کرنے کے سوال پر کہا کہ ’’ہمیں ایسا کرنے کی کوئی ضرورت نہیں ہے، ہمارے اراکین اسمبلی ہمارے ساتھ مضبوطی کے ساتھ کھڑے ہیں۔ جو لوگ اس طرح کی افواہیں پھیلا رہے ہیں انھیں پہلے اپنے اراکین اسمبلی کی فکر کرنی چاہیے۔‘‘

قابل ذکر ہے کہ آج کا دن مہاراشٹر میں سیاسی لحاظ سے کافی اہمیت کا حامل ہے۔ بی جے پی کا ایک نمائندہ وفد آج ممبئی میں گورنر بھگت سنگھ کوشیاری سے ملاقات کرے گا۔ بی جے پی لیڈر گورنر کے سامنے حکومت بنانے کا دعویٰ بھی پیش کر سکتے ہیں، لیکن دیکھنے والی بات یہ ہوگی کہ کیا وقت پر وہ شیوسینا کو اپنے ساتھ لانے میں کامیاب ہو جائیں گے!

واضح رہے کہ بدھ کے روز سنجے راؤت نے بی جے پی کے تعلق سے ایک سخت رد عمل ظاہر کیا تھا۔ انھوں نے کہا تھا کہ ’’ہم مہاراشٹر کے گورنر سے ملے، ریپبلکن پارٹی آف انڈیا کے رام داس اٹھاولے نے بھی ان سے ملاقات کی اور اگر بی جے پی لیڈر جمعرات کو گورنر سے ملاقات کرنے جا رہے ہیں تو وہ حکومت سازی کا دعویٰ بھی کریں۔ انھیں حکومت بنانی چاہیے، کیونکہ ان کی پارٹی سب سے بڑی ہے۔‘‘

ایک نظر اس پر بھی

سبریمالہ مندر معاملہ 7 رکنی بنچ کے حوالے، جج نے کہا ’کیس کا اثر مندر ہی نہیں مسجد پر بھی پڑے گا‘

سپریم کورٹ نے آج ایک انتہائی اہم فیصلہ سناتے ہوئے سبریمالہ مندر میں سبھی عمر کی خواتین کے داخل ہونے سے متعلق نظر ثانی عرضی کو 7 رکنی بنچ کے حوالے کر دیا ہے۔ ساتھ ہی سپریم کورٹ نے فی الحال اس مندر میں خواتین کے داخلے پر روک لگانے سے انکار کر دیا ہے۔

پی ایم مودی، سونیا گاندھی، راہل گاندھی سمیت کئی اہم لیڈروں نے جواہر لال نہرو کو کیا یاد

آزاد ہندوستان کے پہلے وزیر اعظم پنڈت جواہر لال نہرو کا آج یوم پیدائش ہے۔ اس موقع پر کانگریس صدر سونیا گاندھی، سابق وزیر اعظم منموہن سنگھ، سابق صدر جمہوریہ پرنب مکھرجی، سابق نائب صدر حامد انصاری وگیرہ نے شانتی وَن جا کر انھیں عقیدت کا پھول پیش کیا۔

مہاراشٹرا معاملے پر امت شاہ نے توڑی چپی؛ کہا مودی اور میں نے ہمیشہ یہی کہا کہ فڑنویس ہی وزیر اعلیٰ بنیں گے

ایک طرف شیوسینا سربراہ ادھو ٹھاکرے اور پارٹی کے دیگر لیڈران بار بار بی جے پی پر دھوکہ بازی کا الزام لگا رہے ہیں اور کہہ رہے ہیں کہ پہلے ڈھائی ڈھائی سال کے وزیر اعلیٰ بنانے پر بات ہوئی تھی جس سے اب بی جے پی پیچھے ہٹ رہی ہے، دوسری طرف بی جے پی لیڈران ایسے کسی معاہدے سے انکار کر رہے ...

کرناٹکا اسمبلی کے سابق باغی اراکین کی نااہلیت برقرار۔ لیکن انتخاب لڑ نے پر نہیں ہوگی پابندی۔ سپریم کورٹ کا فیصلہ

سابقہ اسمبلی میں جن 17 کانگریس اور جے ڈی ایس اراکین نے بغاوت کی تھی، انہیں سپریم کورٹ سے تھوڑی سے راحت ملی ہے جس کا اثر ریاستی بی جے پی حکومت پر بھی پڑنے والا ہے۔