امریکہ کو شام اور عراق سے نکال دیا جائے گا: ایرانی سپریم لیڈر

Source: S.O. News Service | Published on 18th May 2020, 4:20 PM | عالمی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

  تہران،18؍ مئی (ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا) ایران کے سپریم لیڈر آیت اللہ خامنہ ای نے امریکی فورسز کے مشرق وسطیٰ سے نکل جانے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ امریکیوں کو عراق اور شام سے نکال دیا جائے گا۔

آیت اللہ خامنہ ای نے اتوار کو طلبہ کے ایک اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ افغانستان، عراق اور شام میں امریکی اقدامات کی وجہ سے اس سے نفرت کی جاتی ہے۔ امریکہ کو شام اور عراق میں رہنے نہیں دیا جائے گا اور اسے وہاں سے نکال دیا جائے گا۔

آیت اللہ خامنہ ای کی ویب سائٹ پر اس خطاب کی تفصیلات میں مزید کہا گیا ہے کہ امریکی حکومت کی کارکردگی نے امریکہ کو اس مقام تک پہنچا دیا ہے کہ دنیا کے بیشتر ممالک اس سے نفرت کرتے ہیں۔

اُن کا مزید کہنا تھا کہ امریکہ کی طرف سے دنیا میں رائے عامہ کو بہتر بنانے پر خرچ کردہ رقم کے باوجود اس کی حکومت اور نظام دنیا کے بیشتر حصوں میں بدنام ہو گیا ہے۔ یہی وجہ ہے کہ امریکہ سمیت دنیا کے کئی ممالک میں امریکہ کے جھنڈے نظر آتش کیے جا رہے ہیں۔

رواں برس تین جنوری کو امریکہ نے ایک ڈرون حملے میں ایران کی قدس فورس کے کمانڈر جنرل قاسم سلیمانی کو عراق میں نشانہ بنایا تھا جس میں وہ مارے گئے تھے۔ اس حملے کے جواب میں آٹھ جنوری کو ایران نے عراق میں امریکہ کی دو تنصیبات کو نشانہ بنایا تھا۔

جنرل قاسم سلیمانی کی ہلاکت کے بعد امریکہ اور ایران کے درمیان دھمکی آمیز بیانات کا سلسلہ جاری ہے۔

گزشتہ ماہ ہی امریکہ کے صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے ملک کی بحریہ کو ہدایت دی تھی کہ اگر خلیج فارس میں کوئی ایرانی جہاز اُنہیں ہراساں کرتا ہے تو وہ اُسے نشانہ بنا سکتے ہیں۔

صدر ٹرمپ کے اس بیان کے بعد ایران کے پاسدارانِ انقلاب کے کمانڈر میجر جنرل حسین سلامی نے اپنے ردِ عمل میں کہا تھا کہ ایران کی سالمیت کو کوئی خطرہ لاحق ہوا تو ایران امریکی بحری بیڑے کو تباہ کر دے گا۔

دونوں ملکوں کے درمیان جاری لفظی جنگ کے دوران اتوار کو ایران کے رہبرِ اعلیٰ کی طرف سے ایک اور سخت بیان سامنے آیا ہے۔

اتوار کو طلبہ سے خطاب میں آیت اللہ خامنہ ای کا مزید کہنا تھا کہ امریکہ سے نفرت کے ذمہ دار امریکی حکومت میں شامل متشدد لوگ ہی نہیں بلکہ امریکی حکومت کی کارکردگی، افغانستان، شام اور عراق میں جارحیت کی وجہ سے بھی امریکہ سے نفرت کی جاتی ہے۔

انہوں نے الزام لگایا کہ امریکہ کی جانب سے شدت پسند گروپ 'داعش' کی حمایت کی وجہ سے بھی امریکہ کو نفرت کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ تاہم امریکہ داعش کی حمایت کا ایرانی الزام مسترد کرتا آیا ہے اور امریکی فورسز عراق اور شام میں اس شدت پسند تنظیم کے خلاف گزشتہ کئی سال سے سرگرم ہیں۔

ایرانی سپریم لیڈر کا مزید کہنا تھا کہ امریکہ دہشت گردی کی ترویج اور ناانصافی کر رہا ہے اور خاص کر کرونا وائرس سے نمٹنے میں کوتاہی کی وجہ سے بھی امریکہ کو عالمی نفرت کا سامنا ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

لبنان کی ہرحکومت حزب اللہ کو غیر مسلح کرنے کی پابند ہو گی: امریکا

اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل میں امریکی مندوب کیلی کرافٹ نے منگل کے روز العربیہ کے ساتھ ایک انٹرویو میں کہا ہے کہ لبنان کی کوئی بھی حکومت حزب اللہ کو اسلحہ کے حصول سے باز رکھنے کی پابند ہو گی۔ ان کا کہنا تھا کہ اقوام متحدہ کی لبنان میں تعینات امن فوج ' UNIFIL' جنوبی لبنان میں اپنا مشن ...

ترکی کے وزیر دفاع کا دورہ بغداد منسوخ، سرحدی خلاف ورزی پر عراق کا شدید احتجاج

دو روز قبل ترکی کے ایک مسلح ڈرون طیارے کے حملے میں عراق کے صوبہ کردستان میں دو عراقی افسروں اور ایک فوجی کے قتل کے بعد بغداد اور انقرہ کے درمیان سخت کشیدگی سامنے آئی ہے۔ عراق نے ترک وزیر دفاع کے کل جمعرات کے روز ہونے والے دورہ بغداد کی اجازت دینے سے انکار کر دیا ہے۔ اس کے علاوہ ...

پاکستان اپنی برآمدات میں 12 ارب ڈالرز تک اضافہ کر سکتا ہے: عالمی بینک

عالمی تجارتی تنظیم انٹرنیشنل ٹریڈ سینٹر (آئی ٹی سی) نے اپنی تازہ رپورٹ میں کہا ہے کہ کرونا وبا کے باوجود پاکستان اپنے تجارتی شعبے میں اصلاحات لا کر آئندہ تین سال کے دوران اپنی برآمدات میں 12 ارب ڈالرز اضافہ کر سکتا ہے۔ ...

باپ کی املاک پر بیٹی کا بیٹے کی طرح یکساں حق: سپریم کورٹ

سپریم کورٹ نے منگل کو ایک دور رس نتائج والے اپنے فیصلہ میں کہا ہے کہ ہندو غیر منقسم خاندان کی آبائی املاک میں بیٹی کو بیٹے کی طرح ہی حقوق حاصل ہوں گے، یہاں تک کہ اگر ہندو جانشینی (ترمیمی) ایکٹ 2005 کے نفاذ سے قبل ہی اس کے والد کی موت کیوں نہ ہوگئی ہو۔

بنگلور: ٹرانسفرس کے احکامات ملتوی کرانے میں مبینہ طور پر با رسوخ اساتذہ کی لابی شامل، چار سال سے ڈگری کالجوں کے لکچررس کے تبادلے نہیں ہوسکے

ریاست کرناٹک کے سرکاری فرسٹ گریڈ کالجوں میں خدمات انجام دے رہے لکچررس کے تبادلے نہیں ہوسکے ہیں، جس کے سبب انہیں کافی مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے اس تعلق سے الزامات لگائے جارہے ہیں کہ  چند با رسوخ لکچررس کی طرف سے سیاسی اثر و رسوخ کا استعمال کرکے تبادلوں کی کاروائی ملتوی ...