ایران میں خاتون وکیل نسرین ستودہ کو مرشد اعلیٰ کی توہین کی پاداش میں 7 سال قید

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 16th March 2019, 11:33 AM | عالمی خبریں |

تہران،16مارچ (ایس او نیوز؍ آئی این ایس انڈیا )ایران میں انسانی حقوق کارکن اور خاتون قانون دان نسرین ستودہ کو قید کی سزا سنائے جانے پرعالمی سطح پر شدید رد عمل سامنے آیا ہے۔

گذشتہ سوموارکو ایران کی ایک انقلاب عدالت نے نسرین ستودہ کو مظاہرے منعقد کرنے اور سپریم لیڈر آیت اللہ علی خامنہ ای کی شان میں گُستاخی کے جرم میں 7 سال قید کی سزا سنائی تھی۔

فرانسیسی اخبار'لی مونڈ' نے نسرین ستودہ کو دی جانے والی سزا کی شدید مذمت کرتے ہوئے لکھا ہے کہ نسرین کو اس کی انسانی حقوق کے لیے سرگرمیوں کی پاداش میں کڑی سزا دی گئی ہے۔ نسرین کو دی جانے والی سزا نے ایرانی رجیم کا سفاک اور مکروہ چہرہ پوری دُنیا کے سامنے بے نقاب کردیا ہے۔

ایرانی جج محمد مغیشہ نے کہا کہ نسرین کو نو ماہ قبل حراست میں لیا گیا تھا اوراسے دارالحکومت تہران کی 'ایفین' جیل میں قید رکھا گیا ہے۔ اس کے خلاف کئی الزامات ہیں۔ ان میں ایرانی نظام کے خلاف سازش کرنا، عوامی مظاہرے منعقد کرکے لوگوں کو حکومت کے خلاف اکسانا اور رہبر انقلاب آیت اللہ علی خامنہ ای کی توہین کرنا ہے۔

اسے حکومت مخالف مظاہروں اور ایرانی رجیم کے خلاف سازش کے الزامات میں پانچ سال اور سپریم لیڈر کی توہین پردو سال قید کی سزا سنائی گئی ہے۔ سزا سنائےجانے کے وقت نسرین کو عدالت میں پیش نہیں کیا گیا۔ اسے گذشتہ برس حراست میں لیا تھا۔ اس کے ساتھ 7 ہزار دوسرے ایرانیوں کو بھی گرفتار کیا گیا۔

خیال رہے کہ نسیرن ستودہ کو ایران میں پرامن مظاہرین کا حامی اور ان کے آئینی حقوق کی وکیل قراردیاجاتا ہے۔ اس نے ہمیشہ ایران کے خواتین کے خلاف سخت قوانین کی مخالفت کی اور ظالمانہ قوانین سے متاثرہ خواتین کی مدد کی۔ 55 سالہ نسرین کو پبلک مقامات پر حجاب نہ پہننے والی خواتین کی حمایت کرتے دیکھا گیا۔

ایرانی عدالت کی طرف سے قید کی سزا سنائے جانے کے باوجود نسرین ستودہ اپنے موقف پرقائم ہے اوربین الاقوامی سطح پراس کی حمایت میں مسلسل اضافہ ہو رہا ہے۔ انسانی حقوق کی عالمی تنظیموں‌نے نسرین کو سنائی جانے والی سزا کو غیرانسانی اور ظالمانہ قرار دے کر اسے ختم کرنےکا مطالبہ کیا ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

جرمنی: سی ایس یو کی طرف سے پہلا مسلمان میئر اُمیدوار

اسلام اور جرمنی کی سیاسی جماعت کرسچن سوشل یونین کے مابین تعلقات کو ایک حساس اور مشکل موضوع تصور کیا جاتا ہے۔ لیکن اب اسی جماعت نے میئر کی سیٹ کے لیے ایک 37 سالہ مسلمان امیدوار اوزان ایبش کا انتخاب کیا ہے۔ اس مسلمان امیدوار کا انتخاب میونخ کے شمال میں واقع قصبے 'نوئے فارن‘ کی سی ...

کولمبیا میں حکومت مخالف مظاہروں میں جھڑپیں 

کولمبیا کے دارالحکومت بوگوٹا کی شاہراہوں پر حکومت مخالف مظاہروں میں پولیس اور مظاہرین کے درمیان جھڑپوں میں کم از کم چار افراد زخمی ہوگئے، جن میں سے تین پولیس اہلکار تھے۔ منگل کے روز بوگوٹا سٹی ہال میں 20 مظاہروں کی اطلاع دی گئی، جن میں سے بیشتر کو پر امن بتایا گیا۔

انڈونیشیا میں پل گرنے سے9 افراد دریا میں ڈوب کرہلاک؛ 17 کو بچالیا گیا

انڈونیشی جزیرے سماٹرا میں پیدل چلنے والے افراد کے لیے بنائے گئے پل کے گرنے سے نو افراد دریا میں ڈوب گئے ہیں۔ کسی حد تک کمزور پل دریا میں آنے والے زوردار سیلابی ریلے کو برداشت نہ کر سکا۔ اس سیلاب کی وجہ اتوار انیس جنوری کو ہونے والی زور دار بارش تھی۔

آسٹریلیا میں شدید ژالہ باری اور طوفان باد و باراں 

مختلف آسٹریلوی علاقوں کو آج زوردار طوفانِ باد و باراں کے ساتھ ساتھ شدید ژالہ باری کا سامنا رہا۔ انتہائی تیز ہوا، شدید بارش اور ژالہ باری نے لوگوں کو مالی نقصان پہنچایا ہے۔ کم از کم دو افراد ژالے لگنے سے زخمی ہوئے ہیں اور انہیں ہسپتال پہنچا دیا گیا ہے۔

روسی شہر پرم میں گرم پانی کی پائپ لائن پھٹنے سے پانچ افراد ہلاک

روسی شہر پَرم میں شدید گرم پانی کی پائپ لائن پھٹنے سے کم از کم پانچ افراد کے ہلاک ہونے کی تصدیق کر دی گئی ہے۔ کھولتا گرم پانی ایک ہوٹل کی بیسمنٹ کے کمروں میں داخل ہو گیا اور ان کمروں میں ٹھہرے افراد گرم پانی کی لپیٹ میں آ گئے۔ تین دوسرے افراد گرم پانی سے جھلس گئے ہیں اور انہیں ...