انڈونیشیا میں دہلی فسادات اور سی اے اے کے خلاف احتجاج، ہندوستانی سفیر سے تشویش کا اظہار

Source: S.O. News Service | Published on 17th March 2020, 7:31 PM | ملکی خبریں | عالمی خبریں |

جکارتہ،17؍مارچ (ایس او نیوز؍ایجنسی) دہلی میں ہونے والے مسلم مخالف فسادات اور متنازع شہریت ترمیمی قانون کے خلاف انڈونیشیا میں شدید احتجاج کا سلسلہ جاری ہے۔ انڈونیشیائی سول سوسائٹی کی جانب سے دار الحکومت جکارتہ میں واقع ہندوستانی سفارت خانہ کے باہر نعرے بازی کی اطلاعات ہیں۔ دریں اثنا، انڈونیشیائی حکومت نے انڈونیشیا میں موجود ہندوستانی سفیر کو طلب کر کے اپنی تشویش کا اظہار کیا۔ ادھر ہندوستان نے جکارتہ میں واقع ہندوستانی سفارت خانہ اور میدان میں واقع ہندوستانی قونصل خانہ کی حفاظت کو یقینی بنانے کا مطالبہ کیا ہے۔

واضح رہے کہ دہلی تشدد میں 53 افراد جان بحق ہو گئے تھے جن میں اکثریت مسلمانوں کی ہے۔ ساتھ ہی کروڑوں روپے کی املاک، جن میں مکانات اور دکانیں شامل ہیں، کو بھی جلا دیا گیا۔ اس تشدد کے بعد سے دنیا کے دیگر ممالک کے ساتھ مسلم دنیا سے بھی تشویش کا اظہار کیا گیا۔ جبکہ بنگلہ دیش، افغانستان اور انڈونیشیا سمیت کئی ممالک میں سڑکوں پر اتر کر لوگوں نے دہلی میں مسلم مخالف فسادات پر صدائے احتجاج بلند کی۔

انڈونیشیائی صدر جوکو ویدودو حکومت کی طرف سے ایک طرف جہاں ہندوستانی سفارتخانہ اور قونصل خانہ کی حفاظت کے عزم کا اظہار کیا گیا ہے وہیں دوسری طرف ہندوستانی حکومت سے کہا ہے کہ انڈونیشیائی عوام میں پائے جا رہے غصہ پر توجہ دی جائے۔

انگریزی اخبار ’دی ہندو‘ نے ذرائع کے حوالہ سے خبر دی ہے ’’انڈونیشیا میں 80 فیصد مسلمان ہیں، پھر بھی یہاں بدھ اور ہندو مت کے پیروکاران موجود ہیں اور یہ اسلامی ملک نہیں ہے۔ سول سوسائٹی اور متعدد تنظیمات نے احجاج کر کے ہندوستانی حکومت کو پیغام دیا ہے۔ لوگوں میں تشویش ہے لیکن انڈنیشیائی حکومت کو یقین ہے کہ دونوں ممالک میں جمہوریت ہے اور دونوں ہی کثیر جہتی ثقافت کے حامل ہیں۔‘‘

ذرائع نے مزید کہا کہ ’’انڈونیشیا ہندوستان کے اندرونی معاملات میں دخل نہیں دینا چاہتا لیکن ہندوستان میں جو کچھ ہو رہا ہے اس سے یہاں کے عوام میں تشویش ہے اور یہ حکومت کے لئے بھی ایک مسئلہ ہے۔‘‘

قبل ازیں، یکم مارچ کو بھی انڈونیشیائی وزارت خارجہ کی طرف سے ہندوستانی سفیر پردیپ کمار راوت کو طلب کیا تھا اور اپنی تشویش کا اظہار کیا تھا۔ وہیں دوسری طرف ہندوستان میں انڈونیشیا کے سفیر سدھارتھو سوریودیپورو کے ساتھ ہندوستانی وزارت خارجہ نے ایک سے زیادہ مرتبہ میٹنگ کر کے ہندوستانی سفارت خانہ کی حافظت پر تشویش ظاہر کی تھی۔ ہندوستانی سفیر پردیپ راوت اس ہفتہ کے اواخر میں انڈونیشیا کے نائب صدر اور عالم معروف امین سے بھی ملاقات کرنے والے ہیں۔

جکارتہ میں 13 مارچ کو ملی تنظیموں اور سول سوسائٹی کی جانب سے سی اے اے اور دہلی فسادات کے خلاف زبردست احجاج کیا گیا تھا۔ یہاں ہر جمعہ کو اسی طرح کا احتجاج کیا جاتا ہے اور یہ سلسلہ تین ہفتوں سے بدستور جاری ہے۔ وسیع پیمانے پر احتجاج کے پیش نظر ہندوستانی سفارتخانہ کی حفاظت کے پیش نظر 1100 پولیس اہلکاروں کو مامور کیا گیا تھا۔

قبل ازیں، جمعرات کے روز انڈونیشیا علما کونسل کی ایک میٹنگ سے مطالبہ کیا گیا ہے کہ اقوام متحدہ کو چاہیے کہ وہ ایک فیکٹ فائنڈنگ ٹیم ہندوستان کے لئے بھیجے جو سی اے اے، دہلی فسادات اور جموں و کشمیر میں ہوئی کارروائی کی تحقیقات کرے۔ میٹنگ کے دوران کہا گیا کہ ’ہندو شدت پسندوں کی طرف سے ہندوستانی مسلمانوں پر حملہ کیا گیا۔ علاوہ ازیں انڈونیشیائی حکومت سے مطالبہ کیا گیا کہ ہندوستانی مصنوعات کا بائیکاٹ کیا جائے۔

واضح رہے کہ ملائشیا اور ترکی کی جانب سے سی اے اے اور جموں و کشمیر پر کیے تبصرہ کو ہندوستان حکومت نے انہیں اندرونی معاملات قرار دے کر چپ کرا چکی ہے جبکہ ایران کو بھی ہندوستان نے یہی جواب دیا تھا۔ اقوام متحدہ کے کمیشن برائے انسانی حقوق کی سربراہ نے جب سی اے اے کے معاملہ پر ہندوستانی سپریم کورٹ سے رجوع کیا، اس وقت بھی ہندوستانی کی حکومت نے یہی کہا کہ یہ ’ہمارا اندرونی معاملہ ہے‘۔

ایک نظر اس پر بھی

ہوائی سفر کرنے والے 800 افراد کورونا متاثر پائے گئے

گھریلو پروازیں دوبارہ شروع ہونے کے بعد تقریباً ڈیڑھ ماہ میں 800 افراد سے زیادہ ہوائی سفر کے بعد کووڈ۔19 سے متاثر پائے گئے ہیں لیکن راحت کی بات یہ ہے کہ طیارے کے اندر وائرس کے پھیلنے کا اب تک کوئی ثبوت نہیں ملا ہے۔

لاء اینڈ آرڈر: یوپی حکومت پر کانگریس کے حملے میں مزید شدت

اترپردیش میں جرائم کے بڑھتے واقعات اور ریاست میں نظم ونسق کے معاملے میں یوگی آدتیہ ناتھ کی قیادت والی بی جے پی حکومت کی سخت تنقید کرتے ہوئےیوپی کانگریس نے بدھ کو ریاست سے بی جے پی حکومت کو برخاست کرنے کا مطالبہ کیا۔

چین کی انتقامی کارروائی،امریکی شہریوں پر ویزا سے متعلق پابندی عائد کرے گا چین

چین نے ہانگ کانگ سے وابستہ امور پر کھل کر اپنے خیالات کااظہار کرنے والے امریکی شہریوں پر ویزا سے متعلق پابندی عائد کرنے کا اعلان کیا ہے،چین کے اس اقدام کو امریکہ کے خلاف انتقامی کارروائی کے طور پر دیکھا جا رہا ہے۔

کورونا: عراق میں ریکارڈ معاملے آئے سامنے، 24 گھنٹے میں 2741 کیسز درج

عراق میں کورونا وائرس کے ایک دن میں2741 نئے کیسز درج ہوئے ہیں۔ عراق کے ایک افسر نے اس تعلق سے اطلاع فراہم کی ۔ پارلیمانی ہیلتھ کمیٹی کے رکن حسن خلاطی نے بیان جاری کر کے کہا ’’اس وبا کے خلاف جنگ ایک طویل عرصے تک جاری رہے گی۔ اس دوران عراق کو اس سے لڑنے کے لئے تمام ضروری اقدامات کرنا ...

خطرے میں اسپین، 95 فیصد آبادی ہو سکتی ہے کورونا کا شکار: تحقیق

کورونا وائرس یعنی کووڈ-19 کے حوالہ سے اسپین میں کی گئی اسٹڈی میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ اسپین کی آبادی کا صرف 5فیصد ہی اینٹی باڈیز تیار کرسکا ہے، جس سے یہ بات ثابت ہوتی ہے کہ کورونا سے بچاؤ کے لیے ’ہرڈ امیونٹی‘ حاصل نہیں کی جاسکتی۔