اندرا جے سنگھ کے بیان پر کنگنا کا نازیبا تبصرہ؛ ایسی خواتین کی کوکھ سے عصمت دری کرنے والے پیدا ہوتے ہیں

Source: S.O. News Service | By INS India | Published on 23rd January 2020, 4:31 PM | ملکی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

نئی دہلی 23/جنوری (ایس او نیوز/ ایجنسی)   نربھیا عصمت دری معاملہ مستقل خبروں میں بنا ہوا تھا جس کے بعد مجرموں کو پھانسی دینے کا معاملہ بھی سرخیوں میں ہے۔

نربھیا کے والدین ذرائع ابلاغ کے لئے سیلیبریٹی سے کم نہیں ہیں اور اسی وجہ سے حال ہی میں دہلی اسمبلی انتخابات میں یہ بات بہت تیزی کے ساتھ پھیلی کہ نربھیا کی والدہ اسمبلی چناؤ لڑ سکتی ہیں اور اس خبر کے پھیلنے کے بعد ان کو اس بات سے انکار کرتے ہوئے صفائی بھی دینی پڑی۔ حال ہی میں ملک کی معروف وکیل اندرا جے سنگھ نے نربھیا کے والدین کو مشورہ دیتے ہوئے بیان دیا تھا کہ انھیں اپنی بیٹی کے مجرموں کو معاف کر دینا چاہئے جیسے سونیا گاندھی نے راجیو گاندھی کے قاتلوں کو معاف کر د یا۔ یہ خبر بھی سرخیوں میں رہی تھی۔

اندرا جے سنگھ کے اس بیان کے بعد نربھیا کے والدین کا انتہائی سخت رد عمل سامنے آیا تھا۔ نربھیا کی والدہ نےکہا تھا کہ اندرا جے سنگھ ہوتی کون ہیں اس معاملہ میں دخل اندازی کرنے والی اور ایسے ہی لوگوں کی وجہ سے ملک میں عصمت دری کے واقعات میں اضافہ ہو رہا ہے۔ اب بالی ووڈ اداکارہ کنگنا راناوت نے بھی اندرا جے سنگھ کے بیان پر اپنا رد عمل دیا ہے، جو انتہائی نازیبا ہے۔ میڈیامیں آئی خبروں کے مطابق کنگنا نےکہا ہے کہ ’’اندرا جے سنگھ جیسی خواتین کی کوکھ سے عصمت دری کرنے والے پیدا ہوتے ہیں اور ایسی خواتین کو عصمت دری کرنے والوں کے ساتھ چار دن جیل میں رکھنا چاہئے۔‘‘

واضح رہے کہ بدھ کی شام کو کنگنا کی آنے والی فلم’پنگا ‘ کی خصوصی اسکریننگ تھی جس کے بعد ان سے کسی نے نربھیا معاملے پر رد عمل پوچھ لیا۔ سوال کے جواب میں کنگنا نے کہا کہ ’’مجرموں کو سب کے سامنے پھانسی دینی چاہئے‘‘۔کنگنا نے مزید کہا کہ ’’اس معاملہ میں مجرم نابالغ تھا جو عصمت دری کرسکتا تھا۔ عصمت دری کرنے کے قابل ہے تو اسے کس حساب سے نابالغ کہا جاسکتا ہے۔ ایسے لوگوں کو چوراہے پر پھانسی دے دینی چاہئے۔‘‘

قابل غور ہے کہ معروف وکیل اندرا جے سنگھ اکیلی نہیں ہیں جو پھانسی کی سزا کے خلاف ہیں۔پوری دنیا میں پھانسی کی سزا کی مخالفت ہوتی ہے اور کئی ممالک میں تو پھانسی کی سزا قانون میں ہی نہیں ہے اور اس پر پابندی ہے۔ جس طرح اندرا جے سنگھ نے اپنی رائے رکھی ایسے کوئی بھی اپنی رائے رکھ سکتا ہے لیکن جس زبان کا استعمال کنگنا رنوت نے کیا اس کو غصہ نہیں کہا جا سکتا بلکہ یہ انتہائی غیر ذمہ دارانہ بیان کے زمرے میں آتا ہے۔ کنگنا ویسے بھی ایسے متنازعہ بیانات دینے کے لئے جانی جاتی ہیں۔ انہوں نے ریتک روشن کے خلاف بھی کافی ایسے بیان دیئے تھے جن سے پرہیز کیا جا سکتا تھا۔

ایک نظر اس پر بھی

ملک میں کورونا سے پہلے ڈاکٹر کی موت ،مدھیہ پردیش میں دو آئی اے ایس کے بعد دو آئی پی ایس آفسران بھی کورونا سے متاثر

  مدھیہ پردیش کے اندور ضلع میں کورونا   وائرس کے انفیکشن کا شکار ایک ڈاکٹر کی جمعرات کے روز موت واقع ہوگئی جس کے ساتھ ہی ملک میں کورونا سے متاثر ہوکر پہلے ڈاکٹر کی موت واقع ہوئی ہے۔ خبر ملی ہے کہ ریاست مدھیہ پردیش میں ڈاکٹر کی موت کے ساتھ ہی یہاں  دو آئی پی ایس آفسران بھی ...

بیدر میں مسجد کے مؤذن کی بے رحمی سے پٹائی؛ شدید زخمی مؤذن اسپتال میں داخل، حملہ آور اسسٹنٹ سب انسپکٹر معطل 

ایسے وقت میں جب کرناٹک میں کورونا وائر س کی روک تھام کے لیے لاک ڈاؤن جاری ہے، اس دوران ریاست کے مختلف حصوں میں فرقہ پرستوں کی جانب سے مسلمانوں پر حملوں کی وارداتیں پیش آرہی ہیں۔