وزیر داخلہ امت شاہ کی پراسرار ’تسلی‘ کہا؛   ہندوستانی مسلمان، ہندوستانی تھے اور آئندہ بھی رہیں گے

Source: S.O. News Service | By INS India | Published on 12th December 2019, 5:36 AM | ملکی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

نئی دہلی، 11 دسمبر (آئی این ایس انڈیا)وزیر داخلہ امت شاہ نے بدھ کو متنازعہ شہریت ترمیمی بل کو راجیہ سبھا میں بحث کے لیے پیش کرتے ہوئے کہا کہ بھارت کے مسلمان ہندوستانی شہری تھے، ہیں اورآئندہ بھی رہیں گے۔پاکستان، بنگلہ دیش اور افغانستان کے غیر مسلم تارکین وطن کو بھارتی شہریت فراہم کرنے کی فراہمی والے اس بل کو پیش کرتے ہوئے ایوان بالا میں وزیر داخلہ نے کہا کہ ان تینوں ممالک میں اقلیتوں کے پاس ”مساوی حقوق“ نہیں ہیں۔انہوں نے کہا کہ ان ممالک میں اقلیتوں کی آبادی کم از کم 20 فیصد کم ہوئی ہے۔ اس کی وجہ مبینہ طور پر ’ان کا خاتمہ، بھارت میں قیام اور دیگر وجوہ‘شامل ہیں۔ امت شاہ نے کہا کہ ان مہاجرین کے پاس روزگار اور تعلیم کے حق نہیں تھے۔ امت شاہ نے کہا کہ بل میں تشدد کا شکار ہوئے غیر مسلم اقلیتوں کو شہریت فراہم کرنے کی تجویز ہے۔اس بل میں افغانستان، بنگلہ دیش اور پاکستان سے آئے ہندو، سکھ، بدھ مت، جین، پارسی اور عیسائی پناہ گزینوں کو شہریت دینے کا قانون ہے۔واضح ہو کہ اس بل نام نہاد متنازعہ بل کو لو ک سبھا سے پاس کرالیا گیا ہے۔ ایوان بالا میں کئی اپوزیشن ارکان نے اس بل کو پرور کمیٹی میں بھیجنے کے لئے کی پیشکش کی ہے۔بل پر بحث کے بعد اس کے پاس وقت ان کی پیشکش کے بارے میں فیصلہ کیا جائے گا۔شاہ نے اس بل کے مقصدوں کو لے کر ووٹ بینک کی سیاست کے اپوزیشن کے الزامات کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ بی جے پی نے 2019 کے عام انتخابات کے لئے اپنے منشور میں اس کا اعلان کیا تھا اور پارٹی کو اسی پر کامیابی ملی تھی۔تاہم امت شاہ نے مسلمانوں کو پر اسرار تسلی دیتے ہوئے کہا کہ:’مسلمانوں کو فکر کرنے کی کوئی ’ضرورت‘ نہیں ہے کیونکہ وہ بھارت کے شہری ہیں اور آئندہ بھی رہیں گے‘۔امت شاہ نے یہ بھی کہا کہ بی جے پی آسام کے لوگوں کے ’مفادات‘ کو تحفظ فراہم کرے گی۔وزیر داخلہ جب آسامی لوگوں کے مفادات کے تحفظ کی بات کر رہے تھے تو راجیہ سبھا کا ٹی وی نشریہ کچھ وقت کے لئے روک دیا گیا،کیونکہ اپوزیشن ارکان نے درمیان میں نوک جھونک شروع ہوگئی۔واضح ہو کہ یہ بل متنازعہ بل کئی آئینی امور کے معارض ہے، اس لیے ملک کے مختلف حصوں میں زبردست احتجاج ہو رہا ہے۔ نو سواسکالروں او ردانشورا ن نے ایک مشترکہ بیان جاری کر کہا ہے کہ ہندوستانی شہریت کے تعین کے لئے مذہب کو قانونی بنیاد بنایا جانا پریشان کن ہے اور ملکی دستور کے خلاف ہے۔شہریت ترمیمی بل اس سال جنوری میں بھی لایا گیا تھا اور لوک سبھا میں منظور کیا گیا تھا۔ مگر 16 ویں لوک سبھا کی مدت ختم ہو جانے کی وجہ سے یہ راجیہ سبھا میں منظور نہیں ہو پایا تھا۔ مودی حکومت اپنی دوسری اننگ میں اس متنازعہ بل کو پھر لائی ہے۔  

ایک نظر اس پر بھی

شہریت ترمیمی قانون: سپریم کورٹ نے قانون کے نفاذپرعارضی روک لگانے سے کیاانکار، 4 ہفتوں میں مرکز سے مانگا جواب

چیف جسٹس نے سی اے اے ، این پی آر پرعارضی پابندی سے انکار کردیا ہے ۔اٹارنی جنرل سی اے اے کے تمام معاملات میں حلف نامے داخل کرنے کے لئے چھ ہفتوں دینے کا مطالبہ کیاہے۔ تاہم ، سینئر ایڈوکیٹ کپل سبل اور دیگر افراد اس تجویز کی مخالفت کرتے ہیں۔

شہریت قانون سے متعلق امت شاہ کے بیان پر اکھلیش یادو نے دیا سخت رد عمل

شہریت ترمیمی قانون (سی اےاے) کے سلسلے میں مرکزی وزیر داخلہ امت شاہ کے بیان پر سخت رد عمل کا اظہار کرتے ہوئے سماج وادی پارٹی (ایس پی) صدر اکھلیش یادو نے منگل کو کہا کہ جمہوریت میں صرف اکثریت نہیں عوام کی رائے کا بھی اہم کردار ہوتا ہے۔

حکومت اسپیکر کے اختیارات پر دوبارہ غور و خوض کرے : سپریم کورٹ

سپریم کورٹ نے پارلیمنٹ کو منگل کے روز مشورہ دیا کہ وہ اراکین پارلیمنٹ اور اراکین اسمبلی کو نااہل قرار دینے کے معاملے میں پارلیمنٹ کے اسپیکر کے اختیارات پر دوبارہ غوروخوض کرے۔سپریم کورٹ نے صلاح دی ہے کہ سبکدوش ججوں کی کمیٹی کو رکنیت رد کرنے یا برقرار رکھنے کا حق دیا جائے۔ یہ ...

شہریت ترمیمی قانون کے خلاف ملک گیر مظاہرہ، ہرش مندر کی کاغذ نہ دکھانےکی اپیل

قومی شہریت ترمیمی قانون، این آر سی اور این پی آر کے خلاف شاہین باغ طرز پر احتجاج کرنے والی خوریجی کی خاتون مظاہرین کو سلام کرتے ہوئے مشہور مصنف اور سابق آئی اے ایس افسر ہرش مندر نے کہاکہ ہمیں متحد ہوکر یہ طے کرنا ہوگا کہ ہم کسی بھی صورت میں کاغذ نہیں دکھائیں گے انہوں نے خوریجی ...

نصابی کتابوں سے ٹیپوسلطان کا سبق ہٹایا نہیں جائے گا: ریاستی وزیر تعلیم سریش کمار

وزیر اعلیٰ ایڈی یورپا کے اعلان کے بعد اب ریاستی وزیر برائے پرائمری و سکینڈری تعلیم سریش کمار نے بھی آج باقاعدہ اعلان کردیا ہے کہ میسور کے حکمران ٹیپو سلطان کا سبق نصابی کتابوں سے ہٹایا نہیں جائے گا۔

بھٹکل کے بیلکے میں ہوئی چوری کا ملزم گرفتار؛ 38.54گرام سونے کے زیورات برآمد

گزشتہ 4جنوری کو دن دہاڑے تعلقہ کے بیلکے کنچی کیری کےمکین ناگراج گنپتی ہیگڈے کے گھر کا دروازہ توڑ کر نقد رقم اور زیورات چراکر فرار ہونے کے الزام میں پولس نے ایک شخص کو گرفتارکرلیا ہے اور اُس کے پاس موجود 38.54گرام  سونے کے زیورات برآمد کرنے میں  پولس کامیاب ہوگئی ہے۔