ریفرنڈم 2020 بیکار کا مسئلہ ہے: ہندوستانی سفیر ہرش وردھن شررنگلا

Source: S.O. News Service | Published on 14th October 2019, 7:36 PM | ملکی خبریں | عالمی خبریں |

واشنگٹن،14اکتوبر(ایس او نیوز/آئی این ایس انڈیا)  امریکہ میں ہندوستان کے سفیر ہرش وردھن شررنگلا نے کہا کہ مٹھی بھر سکھوں کی طرف سے حمایت یافتہ ریفرنڈم 2020 ایک بیکار کا مسئلہ ہے جسے ہندوستان مخالف ایک پڑوسی ملک حمایت دے رہا ہے۔شررنگلا نے اتوار کو کہا کہ اسے وہ مٹھی بھر لوگ حمایت دے رہے ہیں جنہیں کمیونٹی کی بہت ہی کم حمایت حاصل ہے۔انہوں نے کہا کہ اس قسم کے گروپ دہشت گرد ایکٹ  ہیں۔ایسا پہلی بار ہے جب کسی چوٹی کے ہندوستانی سفیر نے ریفرنڈم 2020 کے خلاف کھلے عام کچھ کہا ہے۔خالصتان کی تشکیل کو لے کر علیحدگی پسند سکھ ریفرنڈم 2020 کو حمایت دے رہے ہیں۔انہوں نے بالٹیمور میں ایک گرودوارہ میں درشن کے بعد نامہ نگاروں سے کہاکہ (ریفرنڈم کے) اسپانسر مٹھی بھر لوگ ہیں،نام نہاد ریفرنڈم 2020 بیکار کا مسئلہ ہے۔ شررنگلا نے کہاکہ وہ مایوس ہو رہے ہیں اور دہشت گردی اور عسکریت پسند انہ کارروائیوں کو انجام دے رہے ہیں،مجھے لگتا ہے کہ یہ ماضی کی بات ہو جائے گی۔ انہوں نے ایک سوال کا جواب دیتے ہوئے ریفرنڈم کا معاملہ اٹھانے والوں کو پاکستان کے ایجنٹ بتایا۔شررنگلا نے کہاکہ جیسا کہ ہم جانتے ہیں کہ ان لوگوں کو ہمارا وہ پڑوسی ملک حمایت دے رہا ہے، جو مسلسل ہمارا مخالف رہا ہے،وہ اس ملک کے ایجنٹ ہیں۔انہوں نے جھوٹی افواہیں پھیلائی ہیں اور پروپیگنڈہ کیا ہے۔ انہوں نے امریکہ اور ہندوستان کے درمیان تعلقات کو مضبوط کرنے میں سکھوں کے کردار کی تعریف کرتے ہوئے کہاکہ ہم بڑی کمیونٹی کے ساتھ کام جاری رکھیں گے اور چھوٹے اور سکڑ رہی کمیونٹی کو نظر انداز کریں گے۔ سکھوں کی روایتی پگڑی اور سفید کرتا اور پتلون پہنے سفیر نے ’سکھ ایسوسی ایشن آف بالٹیمور گرودوارہ‘ اور ’سکھس آف امریکہ‘ دو منعقد پروگرام میں سکھ کمیونٹی کے ارکان سے بات چیت کی۔انہوں نے کہا کہ مودی حکومت نے کمیونٹی کے مسائل کو دور کرنے کے لئے اقدامات کئے ہیں۔

ایک نظر اس پر بھی

افغانستان میں طالبان کے حملہ میں 14 افغان فوجی ہلاک،متعدد زخمی

مشرقی افغانستان میں طالبان کے حملے میں 14 افغان فوجی ہلاک ہو گئے جبکہ افغان حکام کا کہنا ہے کہ وہ اب بھی سیز فائر کے سلسلے میں طالبان سے بات چیت کر رہے ہیں۔ طالبان نے پکتیا صوبے میں کیے گئے اس حملے کی ذمے داری قبول کر لی ہے اور اسے ایک دفاعی حملہ قرار دیا ہے البتہ انہوں نے اس کی ...