پاکستان کی گیدڑ بھپکی، کشمیرپرنیوکلیئرجنگ کا خطرہ پاک کی اعلیٰ سطحی میٹنگ بھی بے نتیجہ،پاکستانی سفارتخانوں میں کشمیر ڈیسک بنانے کا اعلان

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 18th August 2019, 12:11 PM | ملکی خبریں |

نئی دہلی،18اگست(ایس او نیوز؍ایجنسی)مرکزی وزیردفاع راجناتھ سنگھ کی جانب سے ہندوستان اپنی ”نوفرسٹ یوز“ (پہلے استعمال نہ کرنے) کی نیوکلیئرپالیسی کا جائزہ لے سکتا ہے، سخت بیان پرردعمل ظاہرکرتے ہوئے پاکستانی فوج کے ترجمان جنرل آصف غفورنے کہا کہ کشمیرپریقینی طورپرنیوکلیئر جنگ کا خطرہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستانی سکیورٹی اہلکار ہندوستان کے کسی بھی حملے کا جواب دینے کیلئے پوری طرح سے تیارہے۔وہیں ہر طرف سے ملی شکست سے بوکھلائی پاکستانی حکومت نے آج کشمیر ایشو پر ایک اعلیٰ سطحی میٹنگ طلب کی۔ ایسے میں ہندوستان کے لیے یہ میٹنگ سیاسی اور سفارتی نظریہ سے کافی اہم تھی۔ ہندوستان سمیت دنیا کے دیگر ملک اس پر نظر بنائے ہوئے تھے کہ آخر اب کشمیر معاملے میں پاکستان کا کیا اسٹینڈ ہوگا؟۔میٹنگ تو ختم ہوگئی لیکن صحیح صورتحال سامنے نہیں آسکی۔پاکستان کے وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی نے ہفتہ کوکہا کہ پاکستان اپنے بیرون ممالک دفاترمیں ایک”کشمیرسیل“ بنائے گا۔ انہوں نے کہا کہ اہم دارالحکومتوں کی شناخت کی جائے گی اورسبھی سفارت خانوں میں ایک کشمیرڈیسک بنائی جائے گی۔پاکستان کا یہ بیان وزیردفاع راجناتھ سنگھ کے بعد آیا ہے۔ واضح رہے کہ جمعہ کووزیردفاع راجناتھ سنگھ نے پوکھرن میں کہا تھا کہ نیوکلیئرہتھیاروں کے استعمال کولے کراب تک ہماری پالیسی”پہلے استعمال نہ کرنے“ کی رہی ہے۔ اب مستقبل میں کیا ہوتا ہے، یہ اس وقت کے حالات پرمنحصرکرتا ہے۔ راجناتھ سنگھ کے اس بیان کے بعد پاکستان کی بوکھلاہٹ میں مزید اضافہ ہوگیا ہے، جس کے بعد اس نے کہا ہے کہ کشمیرپرنیوکلیئرجنگ کا خطرہ ہے۔ واضح رہے کہ ملک کی مودی حکومت کے جموں وکشمیرسے دفعہ 370 کی بیشترشقوں کو ہٹانے اورریاست کی تقسیم کرنے سے پاکستان بری طرح سے بوکھلایا ہوا ہے۔ اپنی اس بوکھلاہٹ کے سبب وہ پوری دنیا سے اس معاملے میں مداخلت کا مطالبہ کررہا ہے، لیکن اسے ہرطرف سے مایوسی کے علاوہ اورکچھ ہاتھ نہیں لگ رہاہے۔ دنیا کے بڑے ملک امریکہ، چین اورروس بھی اس کی کوئی مدد نہیں کررہے ہیں۔ اسی کے سبب پاکستان اپنے ناپاک منصوبوں کومسلسل اپنے بیانات سے ظاہرکررہا ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

ہندوؤں کو اقلیتی درجہ دینے کا مطالبہ کرنے والی عرضی سپریم کورٹ سے خارج

سپریم کورٹ نے لفظ اقلیت کی تعریف کرنے اور ملک کی 9 ریاستوں میں اقلیتوں کی شناخت کےلئے ہدایت جاری کرنے سے متعلق عرضی جمعرات کو خارج کر دی۔ عرضی میں مطالبہ کیا گیا تھا کہ جن ریاستوں میں ہندوؤں کی تعداد کم ہے وہاں انہیں اقلیتی درجہ فراہم کیا جائے۔

اپہار آتشزدگی سانحہ: متاثرین کی ’كيوریٹو عرضی‘ خارج، انسل برادران نہیں جائیں گے جیل

سپریم کورٹ نے اپہار سینما آتشزدگی سانحہ میں لاپروائی کے مجرم اورملک کے جانےمانے بلڈر انسل برادران کو بڑی راحت دیتے ہوئے آتشزدگی شکار کی ایسوسی ایشن کی كيوریٹو عرضی خارج کردی ہے۔ اب سشیل انسل اور گوپال انسل کو جیل نہیں جانا پڑے گا۔

دہلی: ڈاکٹر کفیل کی رہائی کے لئے یوپی بھون پر مظاہرہ، جامعہ کے متعدد طلبا پولیس حراست میں

اتر پردیش میں سیاسی اور سماجی کارکنان کے خلاف استعمال کیے جانے والے سخت قوانین کے خلاف جامعہ ملیہ اسلامیہ کے طلبہ نے جمعرات کو یہاں اتر پردیش بھون کا گھیراؤ کرنے کی کوشش کی لیکن پولیس نے انھیں حراست میں لے لیا۔

کیرالہ: وزیر اعلیٰ وجین کا سڑک حادثے میں 20 افراد کی موت پر تعزیت کا اظہار

 کیرالہ کے وزیراعلی پنارائی وجین نے جمعرات کو تمل ناڈو کے تروپور ضلع کے اویناشی کے نزدیک قومی شاہراہ پرایک لاری کے کیرالہ ریاستی ٹرانسپورٹ کارپوریشن (کے ایس آرٹی سی) کی بس سے ٹکرانے کی وجہ سے ہوئے حادثے میں 20 افراد کی موت پر گہرے دکھ کا اظہار کیا ہے۔

نربھیا کیس: مجرم ونے شرما نے خود کو بتایا شدید ذہنی مریض، عدالت میں داخل کی عرضی

نربھیا عصمت دری اور قتل کیس کے قصورواروں میں سے ایک ونے تہاڑ جیل میں اپنے کمرے کی دیوار میں سر مار کر خود کو زخمی کر لیا اور اب عدالت میں عرضی دائر کی ہے کہ اس کی ذہنی حالت ٹھیک نہیں ہے لہٰذا اس کا علاج کروایا جائے۔