ہندی میڈیا گروپس بھارت سماچار اور دینِک بھاسکر کے دفاتر پر انکم ٹیکس کے چھاپے؛ اپوزیشن نے اسے ملک میں ترمیم شدہ ایمرجنسی سے کیا تعبیر

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 22nd July 2021, 6:50 PM | ملکی خبریں |

نئی دہلی 22 جولائی (ایس او نیوز)  ملک کامعروف ہندی  میڈیا دینک بھاسکر کے ملک کے مختلف شہروں کے دفاتر پر محکمہ انکم ٹیکس نے  ایک ساتھ چھاپہ ماری کے ساتھ ساتھ اُترپردیش کے ایک  مقامی نیوز چینل  بھارت سماچار پر بھی  چھاپے مارے جانے کی خبر موصول ہوئی ہے۔ بتایا جارہا ہے کہ جمعرات صبح  دیش بھر کے میڈیا گروپ دینک بھاسکر کے  دفاتر میں  چھاپے مارے گئے ہیں جس میں  دہلی، مدھیہ پردیش، راجستھان، گجرات اور مہاراشٹرا کے  آفسوں کی تلاشی لی گئی ہے ۔ نیوز ایجنسیوں نے اپنے ذرائع سے خبر دی ہے کہ  انکم ٹیکس آفسران نے بھاسکر گروپ پر  ٹیکس چوری کا الزام لگایا ہے۔

این ڈی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق  دینک بھاسکر کے سنئیر ایڈیٹر نے بتایا ہے کہ  بھاسکر گروپ کے جئے پور، احمد آباد، بھوپال اور اندور آفسوں پر چھاپے مارے گئے ہیں۔

ذرائع کے مطابق ، یوپی کے ایک ٹی وی چینل  بھارت سماچار  کے ٹھکانوں پر بھی  چھاپے مارے گئے ہیں۔ میڈیا رپورٹوں کے مطابق  انکم ٹیکس آفسران  کی ٹیم نے اس کے لکھنو میں قائم  آفس اور ایڈیٹر کے  گھر کی بھی  تلاشی لی ہے۔  بتایا جارہا ہے کہ  بھارت سماچار کی حالیہ رپورٹنگ میں  اُترپردیش حکومت پر تنقید کی  گئی تھی۔

اس دوران اپوزیشن نے الزام لگایا ہے کہ  بھاسکر گروپ نے سرکار  پر  کووِڈ   کو لے کر صورتحال کو سنبھالنے  میں ناکامی ( mismanagement )  کی  رپورٹنگ کی تھی،اسی بنیاد پر یہ چھاپے مارے گئے ہیں۔ کانگریس لیڈر جئے رام رمیش نے ٹویٹ کرتے ہوئے لکھا کہ  اپنی رپورٹنگ کے ذریعے دینک بھاسکر نے مودی سرکار کے کووڈ 19 مہاماری کے   حالات کو اُجاگر کیا تھا جس کی قیمت اُسے چکانے پڑرہی ہے۔ انہوں نے اسے غیر اعلانیہ ایمرجنسی قرار دیتے ہوئے کہا کہ جیسا کہ آرون شور ی نے کہا ہے، یہ  ترمیم شدہ ایمرجنسی ہے۔

ذرائع کی مانیں تو  ملک کے سب سے بڑے اخباری گروپوں میں سے ایک ، دینک بھاسکر نے اپریل - مئی میں کوویڈ ۔19 کی دوسری لہر میں بڑے پیمانے پر تباہی پھیلانے کی  رپورٹنگ کی تھی۔ بھاسکر نے کورونا مہاماری کے دوران  سرکاری دعوؤں پر تنقیدی رُخ والی رپورٹنگ کی ایک سیریز  چھاپی تھی جس میں  آکسیجن ، اسپتال کے بستر اور ویکسین کی کمی کی وجہ سے لوگوں کو ہوئی بھاری پریشانی کو ہائی لائٹ کیا گیا تھا۔ اس کی کوریج نے یوپی اور بہار کے قصبوں میں  گنگا ندی  میں تیرتے کوویڈ متاثرہ افراد کی لاشوں کی بھیانک حالت کو بے نقاب کردیا تھا اور  لاشوں  کی آخری رسومات  کے لئے ممکنہ طور پر  وسائل کی کمی  کو ذمہ دار ٹہرایا تھا  رپورٹنگ میں یوپی میں  گنگا ندی کے کنارے  پر   دفن کی گئی  لاشوں کابھی انکشاف کیا گیا  تھا۔

میڈیا دفاتر پر چھاپے ماری کو لے کر ایک طرف  کہا جارہا ہے کہ ٹیکس چوری کی وجہ سے یہ چھاپے مارے گئے ہیں وہیں  معاملے کو لے کر  آر جے ڈی لیڈر اور بہار کے سابق نائب وزیر اعلیٰ تیجسوی یادو نے ٹوئٹر پر لکھا ہے کہ ’’گنگا میں بہتی لاشوں، علاج کی کمی میں مرتے لوگوں، بے روزگاری، مہنگائی، ٹیکہ کاری، حکومت کی تقسیم کرنے والی پالیسیوں، تاناشاہی، جھوٹ اور لوٹ پر سوال کرنے والے صحافیوں، اپوزیشن لیڈروں، سماجی کارکنان، غیر جانبدار بے خوف میڈیا اداروں پر چھاپہ ماری ظاہر کرتی ہے کہ مرکزی حکومت سچ سے ڈرتی ہے۔‘‘

ایک نظر اس پر بھی

مانسون اجلاس: پیگاسس اور کسانوں کے مسئلہ پر حزب اختلاف کا ہنگامہ جاری، راجیہ سبھا کی کارروائی تک ملتوی

راجیہ سبھا میں اپوزیشن جماعتوں کے ارکان نے پیگاسس جاسوسی کیس، کسانوں کے مسائل اور مہنگائی پر راجیہ سبھا میں شور و غل اور ہنگامہ کیا، جس کی وجہ سے ایوان کو دوپہر 2 بجے تک ملتوی کر دیا گیا۔ صبح ضروری دستاویزات میز پر رکھے جانے کے بعد چیئرمین ایم وینکیا نائیڈو نے کہا کہ ضابطہ 267 کے ...

دہلی: ریپ کے بعد قتل کی گئی بچی کے اہل خانہ سے راہل گاندھی کی ملاقات، ’انصاف کے راستہ پر میں ساتھ ہوں‘

  کانگریس کے سابق صدر راہل گاندھی نے بدھ کی صبح راجدھانی دہلی میں عصمت دری اور قتل کی شکار ہونے والی بچی کے اہل خانہ سے ملاقات کی۔ ملک کو شرمسار کر دینے والے اس واقعہ کا المناک پہلو یہ ہے کہ متاثرہ بچی کی لاش کو اہل خانہ کی مرضی کے بغیر نذر آتش کر دیا گیا۔ راہل گاندھی صبح کے وقت ...

دہلی سنبھال نہیں پا رہے ہیں، وزیر داخلہ یو پی کو دے رہے ہیں سرٹیفکیٹ: پرینکا گاندھی

کانگریس کی جنرل سکریٹری پرینکا گاندھی نے دہلی میں ایک بچی کے ساتھ ہوئے حادثے کی مذمت کرتے ہوئے وزیرداخلہ امت شاہ کو ہدف تنقید بنایا اور کہا کہ وہ دہلی کا لاء اینڈ آرڈر سنبھال نہیں پا رہے ہیں اور اترپردیش میں بہتر نظم و نسق کا سرٹیفکیٹ بانٹ رہے ہیں۔

راہل گاندھی کی ’ناشتہ پارٹی‘ کے بعد کانگریس نے کہا ’یہ آنے والے 2024 کی تصویر ہے‘

 کانگریس کے سابق صدر راہل گاندھی کی دعوت پر آج صبح 9.30 بجے 17 اپوزیشن پارٹیوں کے لیڈران کانسٹی ٹیوشن کلب پہنچے اور چائے و ناشتہ کی دعوت میں شرکت کی۔ اس سلسلے میں کانگریس ترجمان ابھشیک منو سنگھوی نے ایک پریس کانفرنس کر ان سبھی اپوزیشن پارٹی لیڈران کا شکریہ ادا کیا جنھوں نے راہل ...

دہلی میں 9 سالہ دلت بچی کی عصمت دری اور قتل کے خلاف کانگریس سراپا احتجاج

دہلی میں 9 سالہ دلت بچی کی عصمت دری اور قتل معاملہ کو لے کر کانگریس نے سخت ناراضگی کا اظہار کرتے ہوئے دہلی کی کیجریوال حکومت اور دہلی پولیس کے ساتھ ساتھ مرکز کی مودی حکومت کو بھی تنقید کا نشانہ بنایا ہے۔